آدھار کا سافٹ ویئر ہیک، یو آئی ڈی اے آئی خاموش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th September 2018, 11:05 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 12؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ 5 ماہرین کی مدد سے تین مہینے کی جانچ کے بعد اس کی اشاعت کی گئی ہے اور آدھار سافٹ ویئر ہیک کرنے والے سافٹ ویئر کی قیمت محض 2500 روپے ہے۔

آدھار کارڈ کی سیکورٹی پر انگلیاں اکثر اٹھتی رہی ہیں اور اس پر یو آئی ڈی اے آئی کو بارہا صفائی بھی پیش کرنی پڑی ہے۔ لیکن تازہ خبروں کے مطابق آدھار کا سافٹ ویئر ہیک کر لیا گیا ہے اور آدھار اتھارٹی اس سلسلے میں ہنوز کچھ بھی بولنے سے پرہیز کرتی ہوئی نظر آ رہی ہے۔ دراصل ’ہفنگٹن پوسٹ ڈاٹ اِن‘ نے اپنی ایک رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ آدھار کارڈ کا سافٹ ویئر ہیک کیا جا چکا ہے اور ہندوستان کے تقریباً ایک ارب لوگوں کی ذاتی جانکاری خطرے میں ہے۔

ہفنگٹن پوسٹ کی اس رپورٹ کو کانگریس کے ٹوئٹر ہینڈل سے شیئر بھی کیا گیا ہے اور لکھا گیا ہے کہ ’’آدھار انرولمنٹ سافٹ ویئر کا ہیک ہونا آدھار ڈاٹا بیس کی سیکورٹی کے لیے خطرناک ہے۔ ہم امید کرتے ہیں کہ اتھارٹی اس سلسلے میں بہتر قدم اٹھائے گی اور مشتبہ کی شناخت کر آدھار ڈاٹابیس کی حفاظت کو یقینی بنائے گی۔‘‘ کانگریس پہلے بھی کئی بار سیکورٹی کے معاملے میں آدھار کو مضبوط بنانے کے لیے متعلقہ محکمہ سے گزارش کر چکی ہے۔

جہاں تک ہفنگٹن پوسٹ کی رپورٹ کا سوال ہے، اس میں کہا گیا ہے کہ آدھار کارڈ کے سافٹ ویئر میں خامی ہے جس کی مدد سے ایک سافٹ ویئر کے ذریعہ دنیا کے کسی بھی گوشے میں بیٹھا شخص کسی بھی نام سے حقیقی آدھار کارڈ بنا سکتا ہے۔ اس سافٹ ویئر کی قیمت محض 2500 روپے ہے۔ رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ تین مہینے کی جانچ کے بعد اس رپورٹ کو شائع کیا گیا ہے۔ اس رپورٹ کو تیار کرنے میں دنیا بھر کے 5 ماہرین کی مدد لی گئی۔ ہفنگٹن پوسٹ نے یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ اب بھی اس سافٹ ویئر کا استعمال بہت تیزی کے ساتھ ہو رہا ہے۔ دراصل اس سافٹ ویئر کی مدد سے آدھار سیکورٹی فیچر کو بند کیا جا سکتا ہے اور نیا آدھار تیار کیا جا سکتا ہے۔

غور کرنے والی بات یہ ہے کہ آدھار کارڈ ہیک کرنے والا یہ سافٹ ویئر 2500 روپے میں وہاٹس ایپ پر فروخت کیا جا رہا ہے۔ ساتھ ہی یو ٹیوب پر بھی کئی ویڈیو موجود ہیں جن میں ایک کوڈ کے ذریعہ کسی کے بھی آدھار کارڈ سے چھیڑ چھاڑ ہو سکتی ہے اور نیا آدھار کار ڈ تیار کیا جا سکتا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ آدھار اتھارٹی نے جب ٹیلی کام کمپنیوں اور دیگر پرائیویٹ کمپنیوں کو آدھار کا ایکسس دیا تھا اسی دوران سیکورٹی سے متعلق یہ خامی سامنے آئی اور اب دنیا کے کسی بھی گوشے میں بیٹھا شخص اس کا غلط فائدہ اٹھا سکتا ہے۔ حیرانی کی بات یہ ہے کہ ہفنگٹن پوسٹ ڈاٹ اِن کی اس رپورٹ کے بعد آدھار اتھارٹی کی جانب سے کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا ہے۔ انھوں نے پوری طرح سے خاموشی اختیار کر رکھی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مالیگاؤں 2008ء بم دھماکہ معاملہ، بم دھماکوں میں زخمی ہونے والے دو افراد نے گواہی دی، دفاعی وکلاء عدالت سے غیر حاضر ، جرح اگلے ہفتہ متوقع

مالیگاؤں ۲۰۰۸ء بم دھماکہ معاملے میں سماعت روز بہ روز جاری ہے ، آج اس معاملے میں بم دھماکوں میں زخمی ہونے والے دو افراد کی گواہی عمل میں آئی

مثبت فکر اورتوانائی سے ملک کی ترقی ہوتی ہے:ارون جیٹلی 

مودی حکومت کے ناقدین کو بات بات پر احتجاج کرنے والا بتاتے ہوئے وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے جمعرات کو ان پر جھوٹ گھڑنے اور ایک منتخب حکومت کو کمزور کرکے جمہوریت کو برباد کرنے کا الزام لگایا۔ طبی معائنہ کے لیے امریکہ دورہ پر گئے ارون جیٹلی نے ایک فیس بک پوسٹ میں کہا کہ اظہار رائے کی ...

عد لیہ نے مہاراشٹر میں ڈانس بار پر پابندی لگانے والی کئی تجاویزمستردکیں 

سپریم کورٹ نے مہاراشٹر میں ڈانس بار کے لئے لائسنس اور اس کاروبار پر پابندی لگانے والے کچھ تجاویز جمعرات کومنسوخ کردیئے۔ جسٹس اے کے سیکری کی صدارت والے بنچ نے مہاراشٹر کے ہوٹل، ریستوران اور بار ہاؤس میں فحش رقص پر پابندی اورعورتوں کے وقار کی حفاظت سے متعلق قانون 2016 کے کچھ دفعات ...