مہادائی پروجیکٹ پر عمل نہ ہونے سے ناراض عوام کا حزب اختلاف کے قائد شیٹر کی رہائش گاہ پر دھرنا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th November 2017, 8:29 PM | ریاستی خبریں |

ہبلی13؍نومبر(ایس او نیوز)مہادائی ندی کے سلسلے میں ریاست کرناٹکا اور گوا کے بیچ جو تنازعہ ہے اس کو حل کرنے کے لئے مرکز کی جانب سے مداخلت نہ کرنے اورارکان پارلیمان و ارکان اسمبلی کی طرف سے مہادائی پروجیکٹ کے سلسلے میں دلچسپی نہ لینے کے خلاف نولگند اور نرگند علاقے کے کسانوں نے ریاستی اسمبلی میں حزب اختلاف کے لیڈر جگدیش شیٹر کے گھر پر غیر معینہ مدت کا دھرنا شروع کردیا ہے۔

ہبلی کے مدھورا ایسٹیٹ میں واقع جگدیش شیٹر کے سامنے 100سے زائد کسانوں نے دھرنا دے رکھا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ کچھ دن پہلے احتجاجیوں نے شرط رکھی تھی کہ 15دنوں کے اندر گوا کے وزیر اعلیٰ کے ساتھ گفتگو کی جائے اور اس مسئلے پر اپوزیشن اپنا موقف واضح کرے۔ جگدیش شیٹر نے یقین دلایا تھا کہ اسمبلی سیشن کے دوران اس ضمن میں خوشخبری سنائی جائے گی۔ لیکن اس سلسلے میں اب تک کوئی اقدام نہیں کیا گیا ہے۔لہٰذا بطور احتجاج جگدیش شیٹر کے گھر پر ہی دھرنا دیا گیا ہے۔

کنڑا حمایتی تنظیم کے قائد واٹال ناگراج نے آئندہ 9دسمبر کو گوا کا محاصرہ کرنے کے لئے احتجاجی مورچہ نکالنے کی بات کہی ہے۔ انہوں نے پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ ریاستی اراکین پارلیمان نے ریاستی عوام کے مفاد کے لئے اپنا فرض پورا نہیں کیا ہے۔ گزشتہ دو سال سے شمالی کرناٹکا میں پانی کے لئے جدوجہد جاری ہے، مگر مہادائی کے مسئلے میں مداخلت کے لئے ان اراکین پارلیمان نے وزیر اعظم نریندر مودی پر کوئی دباؤ نہیں بنایا اورنہ ہی گوا کے وزیر اعلیٰ اپنی ضد چھوڑنے کے لئے تیارہیں۔اگر اب بھی اس پر توجہ نہیں دی گئی تو کنڑا حمایتی تنظیموں کی طرف سے 2018کے اسمبلی انتخابات میں اسی موضوع پر سخت موقف اور احتجاج کا مظاہرہ کیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

انتخابات کے پیش نظر پارٹی لیڈروں کے باہمی تبادلہ خیالات کاسلسلہ سی ایم ابراہیم کی جے ڈی ایس سربراہ دیوے گوڈا سے ملاقات

ریاستی اسمبلی انتخابات جیسے جیسے قریب آنے لگے ہیں ، سیاسی قائدین سے ملاقاتیں اور ان سے تبادلہ خیالات کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے جوکافی اہم اور دلچسپ ہوا کرتا ہے ۔

کانگریس نے لوک سبھا میں بھی طلاق ثلاثہ بل کی مخالفت کی تھی کرناٹک وقف بورڈ کے انتخابات میں تاخیر افسوسناک :ڈاکٹر کے رحمٰن خان

لوک سبھا میں طلاق ثلاثہ بل کے خلاف کانگریس نے کوئی آواز نہیں اٹھائی یہ ایک غلط خبر ہے اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی پیداوار ہے جس کو اسی کی ایماء پر میڈیا نے پھیلایاہے۔

اگلا وزیراعلیٰ بنانے ہائی کمان کے اعلان سے سدارامیاکا حوصلہ بلند راہل گاندھی کے بیان سے وزیراعلیٰ کی کرسی پر نظر رکھے لیڈروں کو مایوسی۔ بغاوت کے آثار

ریاست کرناٹک میں ہونے و الے اگلے اسمبلی انتخابات میں کانگریس پارٹی اگر اکثریت حاصل کرکے دوبارہ اقتدار حاصل کرلے گی تو سدارامیا ہی اگلے وزیراعلیٰ ہوں گے ۔

مودی ، یوگی اور ونود سب نے کرناٹک کی توہین کی ،گالی گلوچ بی جے پی کا مزاج ؛گوا کے وزیر آبپاشی ونود پالیکر نے کیا کنڑیگا س کو ذلیل

منہ پھٹ بی جے پی لیڈرز ہر دن کوئی نہ کوئی متنازعہ اور اشتعال انگیز بیان دیتے ہوئے عوامی غیض وغضب کا شکار ہورہے ہیں، بیلگاوی ضلع کے خانہ پور تعلقہ میں چل رہے کلسا نالا تعمیراتی کاموں کا معائنہ کرنے کے بعد گوا کے وزیر برائے آبپاشی ونود پالیکر نے کرناٹک کے باشندوں کو حرامی کہہ ...

اُترکنڑا کے سُودّی ٹی وی نیوز چینل کے رپورٹرکی بائک درخت سے ٹکراگئی؛ رپورٹر کی موقع پر موت

سرسی سے ہانگل جانے کے دوران ایک کنڑا نیوز چینل کے رپورٹر کی بائک تیز رفتاری کے ساتھ  ایک درخت سے ٹکرانے کے نتیجے میں موقع پر ہی اُس کی موت واقع ہوگئی۔ یہ حادثہ اتوار کو ضلع ہاویری کے ہانگل کے قریب گُنڈورو نامی دیہات میں علی الصباح پیش آیا۔