میڈیاکی آزادی پر شکنجہ کسناجمہوریت کے لیے خطرناک:مولانااسرارالحق قاسمی

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 5th August 2018, 12:54 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

پورنیہ:4/ اگست (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) مودی حکومت میں ہرطبقہ کویاتولالچ دے کر اپنے قابومیں کیاجارہاہے یاڈرادھمکاکراسے اپنے کنٹرول میں کرنے کی کوشش کی جارہی ہے،خاص طورپرمیڈیاکی طاقت کو دیکھتے ہوئے بی جے پی حکومت میں آنے کے بعد سے ہی میڈیاکو پوری طرح اپنے قبضے میں کرنے کی پالیسی پر عمل کررہی ہے۔ان خیالات کا اظہار ممبر پارلیمنٹ مولانااسرارالحق قاسمی نے حالیہ دنوں میں اے بی پی نیوز چینل کے سرکردہ صحافی پرسون واجپئی،ابھیسارشرمااور ملند کھانڈیکر کے معاملے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا۔انہوں نے کہاکہ اس وقت ہندوستان میں سیکڑوں نیوزچینل ہیں اور لگ بھگ سبھی چینل پر مودی حکومت اور بی جے پی کی جھوٹی تعریفوں کی مہم چل رہی ہے،ملک کے عوام کے درمیان فرقہ وارانہ زہر گھولنے کی کوشش ہورہی ہے اور لوگوں کا دھیان اہم اور بنیادی مسائل سے بھٹکاکر غیر ضروری مسائل میں الجھایاجارہاہے،کچھ ہی چینل اوران میں بھی چندہی صحافی ہیں جو حقائق کی روشنی میں حکومت کی عوام مخالف پالیسیوں کا جائزہ لیتے ہیں اور حکومت کے جھوٹے دعووں کی پول کھولنے کی ہمت کرتے ہیں مگر افسوس کی بات ہے کہ دنیاکے سب سے بڑے جمہوری ملک کی حکومت کو یہ بھی گوارہ نہیں اور وہ حق گو صحافیوں پر لگام کسنے کی منصوبہ بندی کررہی ہے۔کشن گنج حلقہ کے ایم پی نے کہاکہ شروع سے ہی بی جے پی کی پالیسی رہی ہے کہ میڈیاکو اپنے قبضے میں لے کر عوام کو بھی پوری طرح بے وقوف بنایاجاسکتاہے،چنانچہ آج کئی چینل ایسے ہیں جو رات دن بی جے پی اور مودی حکومت کی قصیدہ خوانی میں مصروف رہتے ہیں اوریاتو ملک کی ترقی و خوشحالی کی جھوٹی رپورٹیں دکھاتے ہیںیا پھر مذہبی منافرت پھیلانے والے شوز اور مباحثوں کے ذریعے لوگوں کے ذہنوں کو خراب کرتے ہیں اور جو چینل یا صحافی حق اور سچ بولنے اور دکھانے کی جرات کرتاہے اسے طرح طرح سے پریشان کیا جاتا ہے۔ مولانا اسرارالحق نے کہاکہ آزاداور غیر جانبدار میڈیاکسی بھی جمہوری ملک کی بنیادی ضرورت ہے بلکہ یہ تو جمہوریت کا چوتھاستون ہے اوراس کے بغیرجمہوریت کا وجود خطرے میں پڑجاتاہے،مگربدقسمتی سے اس وقت ہمارے ملک میں میڈیاکو شدید پابندیوں اور حکومت کے دباؤ کا سامناہے جو یقیناً ہندوستان کی جمہوری روح کے لئے سخت خطرے کی گھنٹی ہے۔انہوں نے کہاکہ ایسے نازک وقت میں تمام انصاف پسند طبقات خاص کر صحافی برادری کو ہمت و جرأت کا مظاہرہ کرنے کی ضرورت ہے،یہ معاملہ دوتین صحافیوں کانہیں ہے،اس سے پہلے این ڈی ٹی وی اوراس کے اینکر رویش کمار کو بھی پابند کرنے کی کوشش کی گئی تھی،اسی طرح ان کے علاوہ بھی ایسے حادثات رونما ہوتے رہے ہیں جب حکومت نے حق گو صحافیوں کی آواز کو دبانے کی کوشش کی ہے ،لہذا اہل صحافت کو صورت حال کا سنجیدگی سے جائزہ لے کر اپنے حقوق کے لئے آگے آناہوگا،ورنہ آج کسی ایک چینل یا صحافی کو نشانہ بنایاجارہاہے اور آئندہ حکومت کے اس غیر جمہوری اقدام کا شکار کوئی اور صحافی بھی ہوسکتاہے۔واضح رہے کہ ان دنوں اے بی پی نیوزچینل کے مینجنگ ایڈیٹرملندکھانڈیکراور اینکر پرسون واجپئی کوہٹائے جانے جبکہ اسی چینل کے ایک تیسرے صحافی ابھیسارشرماکو لمبی چھٹی پر بھیجے جانے کامعاملہ چرچامیں ہے اورمختلف ذرائع سے خبریں آرہی ہیں کہ ان لوگوں کوکہاگیاتھاکہ بی جے پی اور مودی کے خلاف رپورٹنگ نہ کی جائے مگر جب انہوں نے نہیں ماناتوبی جے پی کے صدر امیت شاہ کے دباؤ کی وجہ سے ان لوگوں کو چینل سے الگ کردیاگیا ہے۔مولاناقاسمی نے کہاکہ صحافت کی آزادی کو حکومت کے ذریعہ دبایاجاناملک کے انتہائی خطرناک اورجمہوریت کے لیے نقصان دہ ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

سادھوی کا کرکرے پر نازیبا تبصرہ؛ کانگریس نے بی جےپی پر سادھا نشانہ ؛ بری طرح پھنسی بی جےپی نے پلہ جھاڑا تو سادھوی بیان واپس لینے پر ہوئی مجبور

کانگریس نے بھوپال لوک سبھا سیٹ سے بی جے پی کی امیدوار سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کی طرف سے شہید ہیمنت کرکرے پر کئے گئے نازیبا تبصرے کو لے کر بی جے پی پر سخت نشانہ سادھا ہے اور  کہا ہے کہ وزیر اعظم مودی کو چاہئے کہ وہ ملک سے معافی مانگیں اور پرگیہ کے خلاف کارروائی کریں۔

سادھوی پرگیہ پر عدالت کو گمراہ کرکے ضمانت حاصل کرنے کا الزام؛ جمعیۃ العلما نے داخل کی عدالت میں عرضداشت

مالیگاؤں 2008بم دھماکہ معاملے کی کلیدی ملزمہ سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کے الیکشن لڑنے کے خلاف ممبئی کی خصوصی این آئی اے عدالت میں جمعرات کو  بم دھماکہ متاثرین کی نمائندگی کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) کے وکیل شاہد ندیم نے پانچ صفحات پر مشتمل عرضداشت داخل کی جسے ...

سادھوی پرگیہ کا شہید ہیمنت کرکرے پر نازیبا تبصرہ، کہا ؛ میری ’بددعا‘ سے ہوا تھا کرکرے کا خاتمہ

بی جےپی نے بھوپال پارلیمانی حلقہ سے جس  سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کو  اپنا اُمیدوار بناکر میدان میں اُتارا ہے ، اُس نے  دہشت گردوں کے ساتھ مقابلہ کرتے ہوئے  شہید ہونے والے  مہاراشٹرا اے ٹی ایس کے سربراہ ہیمنت کرکرے کے خلاف نازیبا تبصرہ کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ  اس کی بددُعا سے ...

لوک سبھا انتخابات ؛ کیا اُترپردیش میں پہلے مرحلے کی طرح دوسرے مرحلے میں بھی مسلم-دلت اتحاد سے بی جے پی کا قلعہ ڈانواڈول ہوگا ؟

لوک سبھا انتخابت کے پہلے مرحلے کی طرح اب دوسرے مرحلے میں بھی دلت مسلم اتحاد سے  بی جے پی کا قلعہ ڈانواڈول ہوتا نظر آرہا ہے۔ سمجھا جارہا ہے کہ اُترپردیش میں  جمعرات کو ہوئی پولنگ کے بعد رائے دہندگان کا جو رحجان سامنے آیا ہے، اسے دیکھتے ہوئے  بی جے پی کے لئے واپسی کی اُمیدیں دم ...

لوک سبھا انتخابات: کیا اُترکنڑا میں انکم ٹیکس کے مزید چھاپے پڑنے والے ہیں؟

پارلیمانی الیکشن کے پس منظر میں محکمہ انکم ٹیکس اور انتخابی نگراں اسکواڈ کی طرف سے مختلف ٹھکانوں پر جو چھاپے مارے جارہے ہیں، اس تعلق سے خبر ملی ہے کہ ضلع شمالی کینرا میں مزیدکئی سیاسی لیڈروں اورتاجروں کے ٹھکانوں پر چھاپے پڑنے والے ہیں۔

مودی نوجوان نسل کو گمراہ کرنے میں ملوث ہیں : اشوک گہلوت

راجستھان کے وزیراعلیٰ اشوک گہلوت نے جمعرات کو کہا کہ آزادی کے بعد ملک کے عوام اور کانگریسی حکومتوں کی طرف سے کئے گئے کاموں کے باعث بھارت آج سپر پاور بننے کی جانب بڑھا ہے۔ اس کے ساتھ ہی گہلوت نے سابقہ کانگریسی حکومتوں کے کاموں پر سوال اٹھانے کو لے کر وزیر اعظم نریندر مودی پر ...

ضلع شمالی کینرا میں محکمہ انکم ٹیکس کے چھاپے۔ بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے کے قریبی افراد پر۔87.70لاکھ روپے ہوئے ضبط

ضلع ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر ہریش کمار کی طرف سے جاری کی گئی رپورٹ کے مطابق مصدقہ اطلاعات کی بنیا د پر انتخابی ضابطہ اخلاق لاگو کرنے پر تعینات فلائی اسکواڈ اور محکمہ انکم ٹیکس نے سرسی اور سداپور میں بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے کے شناسا افراد پر چھاپہ ماری کی اوراس کے نتیجے میں ...

بی جے پی کا حصہ بن چکی ہیں سرکاری ایجنسیاں:کنی موجھی

گزشتہ چند دنوں میں محکمہ انکم ٹیکس نے ملک کے مختلف حصوں میں چھاپہ ماری کی ہے۔حکام نے منگل کو ڈی ایم کے لیڈر کنی موجھی کے گھر پر چھاپہ ماری کی تھی۔رپورٹوں کے مطابق ان کے پاس سے بڑی مقدار میں نقد رقم جمع ہونے کی اطلاع ملی تھی،اسے لے کر کنی موجھی نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر ...