ہوناور میں بھٹکل کے دو لوگوں پر حملہ کا معاملہ؛ دھرم رکشھنا ویدیکے کی پولس کو دھمکی؛ گرفتاریاں نہیں روکی گئیں تو ہوگا زبردست احتجاج

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 13th March 2018, 9:09 PM | ساحلی خبریں |

ہوناور 13؍مارچ (ایس او نیوز)کچھ روز قبل ہوناور کے کرکی ناکہ پر نام نہاد گؤ رکھشکوں کی بھیڑ نے بھٹکل کے دو نوجوانوں پر حملہ کیا تھا اور دونوں کو بری طرح زخمی کردیا تھا، جس پر کاروائی کرتے ہوئے پولس نے 150 لوگوں کے خلاف معاملات درج کئے تھے اور چار لوگوں کو گرفتار کیا تھا، اس ضمن میں پولیس کی کارروائیوں کے خلاف دھرم رکھشنا ویدیکے نے آواز اٹھائی ہے اور حملہ کے ملزمین کو گرفتار نہ کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر گرفتاریوں کا سلسلہ نہیں رُکا تو  عوام کی طرف سے زبردست احتجاج کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ مذکورہ قاتلانہ حملے کے تعلق سے  پولیس مزید ملزمین کو تلاش کررہی ہے جو پولس کی گرفتاریوں سے بچنے کے لئے ہوناور سے فرار ہوگئے ہیں۔ مگر دھرم رکھشنا ویدیکے نامی تنظیم نے تحصیلدار کو میمورنڈم دیتے ہوئے  انتباہ دیا ہے کہ اگر اس حملے کے ملزمین کو گرفتار کرنے کا سلسلہ نہیں روکا گیا تو پھر زبردست عوامی احتجاج کیا جائے گا۔
میمورنڈم میں کہا گیا ہے کہ مادنگیری اور شیرالی میں چیک پوسٹ ہونے کے باوجودغیر قانونی طور پر یہاں سے گائیں اسمگل کی جارہی ہیں، جس سے شکوک و شبہات پیدا ہورہے ہیں۔ گائیں اسمگل کرنے والے شرپسندوں کے خلاف کارروائی کرنے کے بجائے اس واقعے سے تعلق نہ رکھنے والے بے قصور ہندو نوجوانوں پر سنگین الزامات کے ساتھ کیس داخل کرکے جیل میں بند کردیا گیا ہے۔اب اس کے خلاف عوام کے احتجاج کی طاقت کا مظاہرہ کرنا ضروری ہوگیا ہے۔

میمورنڈم میں یہ بھی درج ہے کہ گزشتہ کئی برسوں سے چلنے والا گائیں اسمگل کرنے کے   کاروبار  میں پچھلے کچھ عرصے سے ہندوؤں کی مخالفت کی وجہ سے  کچھ کمی آئی ہے۔ لیکن اب اس غیر قانونی سرگرمیوں  میں دوبارہ تیزی نظر آرہی ہے۔اس کے خلاف متعلقہ محکمہ جات کی طرف سے ان دیکھی کرنے پرکچھ نوجوان گائے کی رکھشا کے لئے آگے آتے ہیں۔ میمورنڈم میں ویدیکے کا کہنا ہے کہ عوام کی حفاظت پر مامور پولیس نے اپنا اعتبار کھو دیا ہے۔گزشتہ تین مہینوں سے معصوم لوگوں پر اس طرح کے مقدمات درج کرنا واقعی دہشت کا سبب بن گیا ہے۔جس کی پر زور مذمت کی جاتی ہے۔میمورنڈم میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ گرفتار معصوموں کو فوراً رہا کردینا چاہیے۔غیر قانونی  گایوں کی اسمگلنگ روکنے کے لئے پولیس کو سخت قدم اٹھانے چاہئیں۔

اس موقع پرہندوحامی تنظیموں کے قائدین جے ٹی پائی، ایم ایس ہیگڈے، رگھو پائی، وینکٹ رمن ہیگڈے، شری کلا شاستری(ضلع پنچایت رکن)، سبرامنیا شاستری، شیوراج میستا، ایس ٹی نائک، سنجیو شیٹھ، امیش سارنگ،لوکیش میستا، امیش میستا،گؤ پریوار کے کرشنا مورتی بھٹ شیوانی، وشویشورا بھٹ وغیرہ موجود تھے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

شرورمٹھ کے سوامی کی موت کثرت شراب نوشی اور ناجائز تعلقات کا نتیجہ ؟معاملہ کی تحقیقات اور جانچ کیلئے 7ٹیمیں تشکیل 

اڈپی شرورمٹھ کے سوامی لکشمی ورتیرتھ سوامی جی کی مشتبہ حالات میں ہوئی موت پر انہیں قتل کیے جانے کاشبہ ظاہر کیاگیاتھا جس کے نتیجہ میں اڈپی ضلع ایس پی نے اس معاملہ کی ہر زاویہ سے جانچ کے لیے پولیس کی 7ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں ۔ شرور علاقہ میں یہ افواہیں بھی اڑائی جارہی ہیں کہ سوامی ...

مینگلور: میڈیکل کالج میں سنی مسلم طلبا کو سیٹ محفوظ کرنے کامطالبہ،ریاستی ہائی کورٹ نے عرضی پر فیصلہ محفوظ کرلیا

منگلورو کی کنچور انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنس میں سنی مسلم طالبات کے لئے سیٹوں کے ریزرویشن کے بارے میں ریاستی ہائی کورٹ میں دائر ایک عرضی پر ہائی کورٹ نے اپنا فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔

مچھلیوں کے شوقین ہوشیار؛ مچھلیوں میں ڈالا جارہا ہے موت کی دعوت دینے والا کیمکل : گوا میں پابندی عائد کرتے ہی ساحلی کرناٹکا میں بھی جانچ شروع

 بیرونی ریاستوں سے کیمکل استعمال کردہ مچھلیوں کو روکنے کے لئے ریاست گوا کے وزیر اعلیٰ منوہر پاریکر حکم صادر کرتےہی متحرک ہوئی گوا پولس بدھ کی رات سے  ہی لاریوں کی جانچ پڑتال شروع کی۔ کرناٹکا سمیت ریاست گوا میں داخل ہونےوالی دیگر ریاستوں کی مچھلی لاریوں کو سرحد پر روک کر واپس ...