بابابڈھن گری پہاڑی پر درگاہ کا تنازعہ۔سنگھ پریوار کے رضاکاروں نے لہرایا زعفرانی پرچم۔ پولیس نے کیا لاٹھی چارج

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 4th December 2017, 7:56 PM | ریاستی خبریں |

چکمگلورو 4؍دسمبر (ایس او نیوز) بابابڈھن گری پہاڑی پر واقع درگاہ کے احاطے کو ہندو انتہاپسندوں کی طرف سے دتاتریہ مندر قرار دئے جانے کا مطالبہ اور ہر سال دتاتریہ جینتی کے نام پر کشیدگی پیدا کرنا ابمعمول بن گیا ہے۔

تازہ واقعہ اتوار کو اُس وقت پیش آیا جب  بجرنگ دل اور دیگر ہندتووادی تنظیموں کی طرف سے منائی جارہی تین روزہ دتاتریہ جینتی کے لئے ریاست بھر سے سینکڑوں ہندو بھکت بابا بڈھن گری کی پہاڑی پر جمع ہونے کے بعدکچھ شدت پسند ہندوؤں کے ایک گروپ نے حفاظتی بندوبست کو طاق پر رکھتے ہوئے متنازعہ علاقے میں لگائی گئی باڑھ کو پھلانگ کر اندرگھس گئے اور دھاندلی مچائی ۔ بتایا گیا ہے کہ ان کارکنوں نے درگاہ پر زعفرانی جھنڈا لہرایا اور وہاں پر موجود قبروں کو نقصان پہنچانے کی بھی کوشش کی جس کے بعد پولیس نے لاٹھی چارج کرتے ہوئے انہیں وہاں سے منتشر کردیا۔

جمعہ سے جاری تین روزہ دتاتریہ جینتی کے لئے کافی بڑی تعداد میں لوگ یہاں جمع ہوئے تھے،  دھاندلیوں اور پولس لاٹھی چارج کے بعد یہاں   ماحول بے حد کشیدہ ہوگیا ہے۔اس موقع پر تقریباً2000پولیس افسران اور عملے کے ساتھ سپرنٹنڈنٹ آف پولیس اناملائی بذات خود حفاظتی انتظامات کی نگرانی کررہے ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ بعد میں شرپسندوں کی طرف سے شہر کے اندر بھی پرائیویٹ بسوں پر پتھراؤ کیا گیا اور دو بائک سواروں پر بھی حملے کی اطلاعات موصول ہوئی اور  تناؤ کو دیکھتے ہوئے مقامی لوگوں نے اپنی  دکانیں اور بازار بند کردئے۔

ایس پی اناملائی نے بتایا کہ حالات کو دیکھتے ہوئے پولس کا نہایت سخت بندوبست کیا گیا ہے اور حالات پر مکمل طور پر قابو پالیا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس چھتیس گڑھ میں طویل عرصے کے بعد اقتدار میں لوٹے گی: ویرپا موئلی 

سینئر کانگریس لیڈر ویرپا موئلی کہا کہ چھتیس گڑھ میں 15 سال بعد ان کی پارٹی اقتدار مخالف لہر پر سوار ہوکر اقتدار میں لوٹے گی۔ انہوں نے یہ بھی دعوی کیا کہ کانگریس ریاست کے نکسل متاثرہ علاقوں میں 18 سیٹوں میں اپنی سیٹیں12 سے بڑھا کر 15 کرے گی۔سابق مرکزی وزیر نے یہاں کہاکہ چھتیس گڑھ میں ...

گوا میں بیرونی مچھلیوں کی درآمد پر لگی پابندی سے کاروار، ملپے میں مچھلیاں سستی تو منگلورو میں ہوگئیں مہنگی !

جب سے گوا کی حکومت نے فارمولین کے مسئلے پر بیرونی ریاستوں سے مچھلیوں کی درآمد پر پابندی رکھی ہے اور کچھ قانونی شرائط لاگو کی ہیں، تب سے ساحلی کرناٹکا کے شہروں میں اس کا کچھ ملا جلا اثر دکھائی دے رہا ہے۔

بیلگاوی میں احتجاج کے دوران کسان سورنا سودھا میں گھس گئے، وزیر اعلیٰ کی مداخلت کے بعد گرفتار شدہ افراد کی رہائی ، 20؍نومبر کو بنگلورو میں میٹنگ

شمالی کرناٹک کے بیلگاوی ضلع میں  گناہ اگانے والے کسانوں نے احتجاج کیا اور سوورنا سودھا کے احاطہ میں گنا سے لدی لاریوں کو زبردستی گھسا کر حکومت کے خلاف نعرے لگائے ۔ پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے 10؍ کسان لیڈروں کو گرفتار کر لیا ہے اور ان کےخلاف ایف آئی آر درج کردیا ۔

سنجے دت کے ہاتھوں19نومبرکواڈاپٹ فٹنس کا افتتاح، بنگلورو کا بین الاقوامی معیار پر مشتمل سب سے بڑا فٹنس سنٹر عوام کے لئے دستیاب

شہر کے فریزر ٹاؤن میں صحت اور فٹنس کو عام کرنے کے لئے عالمی معیار کی سہولتوں سے لیس ہندوستان کی سب سے بڑی اور خوبصورت جم اڈاپٹ فٹنس کا افتتاح 19نومبر کی شام منعقد کیا گیا ہے۔