مینگلور کے قریبی تعلقہ بیلتنگڈی اور پُتور میں زبردست بارش؛ راستے جھیل اور تالاب میں تبدیل؛ اسکولوں میں چھٹی کا اعلان؛ وزیردیشپانڈے کا متاثرہ علاقوں کا دورہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th June 2018, 5:50 PM | ساحلی خبریں |

مینگلور 14/جون (ایس او نیوز) ضلع دکشن کنڑا کے  بیلتنگڈی، سولیا اور پُتور میں آج جمعرات کو  ہوئی زبردست بارش سے  کئی راستے جھیل اور تالاب میں تبدیل ہوگئے ہیں اور کئی علاقوں میں سیلاب کی سی صورتحال پیداہوگئی ہے۔  بارش نے عام زندگی کو درہم برہم کردیا ہے، جبکہ اکثر سڑکیں پانی میں ڈوب جانے کی وجہ سے سواریوں کی آمد ورفت  میں زبردست رکائوٹ پیدا ہوگئی ہے۔

زبردست بارش اور سیلابی صورتحال کو دیکھتے ہوئے اسکولوں اور کالجوں میں چھٹی کا اعلان کیا گیا ہے ۔جبکہ شدید بارش سے کھیت کلیان کو زبردست نقصان پہنچا ہے۔

 بارش سے ہوئے نقصانات کا جائزہ لینے اور بارش سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کرنے  ریاست کے  مالگذاری  وزیرآر وی دیش پانڈے مینگلور پہنچ گئے ہیں اور متاثرین کو امدادی چیک فراہم کی ہے۔

بارش متاثرین کو امدادی چیک تقسیم:  مینگلور میں گذشتہ کچھ دنوں سے جاری بھاری بارش کے نتیجے میں جن مکانات کو نقصان ہوا تھا اور جن لوگوں کے مکانات مکمل طور پر منہدم ہوگئے تھے ، اُن متاثرین کو آر وی دیش پانڈے نے امدادی چیک تقسیم کئے  انہوں نے کہا کہ ضلع   دکشن کنڑا  میں کئی مکانوں کو نقصان پہنچا ہے، ہر ایک کو سرکار کی طرف سے امداد دی جائے گی، اسی طرح  بارش سے دیگر اضلاع کے متاثرین کو بھی امداد فراہم کی جائے گی۔ دیش پانڈے نے کہا کہ جو لوگ کرائے کے مکانوں پر رہتے ہیں اُن متاثرین کو بھی سہولیات فراہم کی جائے گی۔ دیش پانڈے نے مزید کہا کہ  ضلع جنوبی کینرا اور اُڈپی میں اب تک تین کروڑ روپیوں کی امداد ریلیز کی گئی ہے۔

دیش پانڈے نے بتایا کہ چارماڑی گھاٹ پر متعدد مقامات پر چٹانیں کھسکنے کی وجہ سے سڑک فی الحال بندکردی گئی ہے اور  راستوں کو صاف کرنے کا کام جاری ہے۔کام مکمل ہونے کے بعد راستوں کو سواریوں کے لئے دوبارہ کھولا جائے گا۔

 

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کے بیلنی علاقے میں قربانی روکنے کا مطالبہ ۔پولس کو سونپا گیا میمورنڈم

بیلنی علاقے کے کچھ ہندوؤں نے بھٹکل ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ آف پولیس کو ایک میمورنڈم دیتے ہوئے مطالبہ کیاہے ہندوؤں کے مندروں اور مقدس مقامات سے گھرے ہوئے اس علاقے میں جانوروں کی قربانی کرنے پر روک لگائی جائے۔

منگلورو: بھاری برسات کا سلسلہ جاری۔ کئی مقامات پر چٹانیں کھسکنے کے واقعات۔ ڈی سی نے عوام کودی تعلقہ لیول کنٹرول روم سے رابطہ رکھنے کی ہدایت

ساحلی علاقوں میں تیز اورموسلا دھار برسات کا سلسلہ ابھی جاری ہے۔ خاص کر منگلورو اور اڈپی کے بعض علاقوں میں لگاتار بارش برسنے کی خبریں موصول ہورہی ہیں۔

بھٹکل   تعلقہ میں مسلسل بارش سے ندی کنارے پر خطرہ :163ملی میٹر بارش

بھٹکل تعلقہ میں پچھلے دو تین دنوں سے مسلسل برستی بارش سے ندی نالے  پوری تاب سے بہنے کے نتیجےمیں عام زندگی مفلوج ہوگئی ہےاور نشیبی علاقوں میں پانی بھر جانے سے عوام پریشانی میں مبتلا ہونےکی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

بھاری بارش کے بعد لنگن مکّی ڈیم سے کیا گیا پانی کا اخراج؛ ہوناور کے شراوتی بیلٹ پرکئی دیہاتوں میں داخل ہوا پانی؛ عوام نہایت چوکس

  گذشتہ تین چار دنوں سے جاری بھاری بارش کے بعدپڑوسی تعلقہ ہوناور کے شراوتی بیلٹ سے بہنے والی شراوتی ندی میں طغیانی آگئی ہے اور ندی خطرے کے نشان سے اوپر  بہہ رہی ہے، ایسے میں اُدھر لنگن مکّی ڈیم سے 21,223کیوسک پانی کو بھی باہر چھوڑا جارہا ہے، اگر بارش پھر اپنی رفتار سے شروع ہوتی ...

منگلورو : مسلسل بارش سے کافی جانی ومالی نقصان : حالات سے نمٹنے ضلع انتظامیہ تیار : ڈپٹی کمشنر سینتھل کی پریس کانفرنس

کیرلا سمیت کرناٹکا کے ساحلی علاقوں  میں طوفانی ہواؤں اور موسلا دھار بارش جاری رہنے سے دکشن کنڑا اور اُڈپی اضلاع زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔ لگاتار بارش برسنے سے منگلورو اور بنگلورو قومی شاہراہ  پر پہاڑ کھسک گیا ہے ، جس کی  وجہ سے سواریوں کی  نقل وحمل روک دئیے جانے کے علاوہ بعض ...

کاروار میں مسلسل بارش کے نتیجےمیں ماہی گیری ٹھپ : ماہی گیر بری طرح متاثر

ہرسال اگست کے مہینےمیں ماہی گیر سمندر میں مچھلی شکار کے لئے نکلتےہیں، لیکن امسال اگست کے دوسرے ہفتےسے جاری طوفانی ہواؤں کے ساتھ موسلا دھار بارش  نےجہاں رہائشی علاقوں ، زراعت وغیرہ کو متاثر کیا ہے وہیں ماہی گیر پر بھی اس کے کافی اثرات نظر آرہے ہیں۔ دوتین کی بارش کو دیکھتے ہوئے ...