کاروار میں زوردار بارش کے نتیجے میں دو سرکاری عمارتوں اور نو دیگر مکانوں کو نقصان؛ اُترکنڑا میں بارش کا زور ہوا کم

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 11th June 2018, 6:34 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

کاروار 11/جون (ایس او نیوز) ضلع اُترکنڑا کے مختلف تعلقہ جات میں  اتوار کو ہوئی زوردار بارش کے نتیجے میں  کئی علاقوں میں مکانوں  پر درختوں کے گرنے سے نقصانات کی اطلاعات ملی ہیں۔ ضلع بھر میں سب سے زیادہ کاروار میں بارش ریکارڈ کی گئی ہے جہاں 140.4 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ، جبکہ ہلیال میں سب سے کم 18.8 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔ تین دنوں تک مسلسل بارش کے بعد آج پیر کو بارش کا  زور کم ہوگیا ہے، جس سے عید کی خریداری کرنے والوں اور عید کا کاروبار کرنے والوں کو بھی راحت مل گئی ہے۔

کاروار کے سداشیوگڑھ سے ملی اطلاع کے مطابق اتوار کو  ناخدا محلہ اور بیرے گرام میں مکانوں پر  درختوں کے گرنے سے لاکھوں مالیت کا نقصان ہوا ہے۔ ضلع بھر میں تین دنوں سے جاری موسلادھار بارش کے نتیجے میں  تالاب، ندیاں، نالے اور کنویں سب بھر گئے ہیں، کاروار کے کچھ علاقوں  میں کنوئوں کا پانی اتنا اوپر آچکا  ہے  کہ ہاتھ سے ہی پانی نکالاجاسکتا ہے۔

بتایا جارہا ہے کہ کاروار میں اتوار کو صبح ہوئی زوردار بارش کو دیکھتے ہوئے محکمہ الیکٹری سٹی نے  احتیاط کے طور پر بجلی بند کردی تھی، جس کی بنا پر الیکٹرک کھمبوں کے گرنے سے   زیادہ نقصان نہیں ہو پایا۔ خبر ہے کہ  کئی علاقوں میں الیکٹرک کھمبوں پر  درختوں کے محکمہ ہیسکام کو کافی نقصان ہوا ہے۔

کاروار ڈپٹی کمشنر دفتر کے عقب میں کمپائونڈ  کی دیوار پر درخت گرنے سے دیوار کو نقصان ہوا، اسی طرح الیکٹرک  لائن پر بھی درخت گرنے سے بجلی سپلائی متاثر ہوئی۔ یہاں نقصان کا تخمینہ قریب 30 ہزار روپیہ لگایا گیا ہے۔ کاروار ایس پی کے مکان کے کمپائونڈ میں واقع ایک مکان پر گھنا درخت گرنے سے مکان منہدم ہوگیا جس سے قریب 50 ہزار روپیوں کا نقصان ہوا ہے۔کاروار کے دیگر کئی علاقوں میں  بھی درختوں کے گرنے سے مکانات کو نقصانات ہوئے ہیں اور محکمہ روینو کے آفسران نقصانات کا تخمینہ لگانے میں جٹے ہوئے ہیں۔

آج پیر کو پورے ضلع میں بارش کا زور کافی کم ہوگیا ہے،جس سے عوام نے تھوڑی بہت راحت کی سانس لی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہوناور:پریش میستاکی پراسرار موت کے معاملے میں نیا خلاصہ۔ واردات سے پہلے بند کردیا گیا تھا سی سی کیمرہ !

ہوناور میں فرقہ وارانہ کشیدگی کے دوران پریش میستانامی نوجوان کی پراسرار موت کو سنگھ پریوار کی طرف سے فرقہ وارانہ قتل قرار دیا جارہا تھا۔لیکن سی بی آئی کی تحقیقات دوران اس معاملے نے اب ایک نیا رخ لے لیا ہے۔

بھٹکل میں تنظیم میڈیا ورکشاپ کا شاندار اختتامی اجلاس۔ میڈیا کی معتبر شخصیات اور علماء کا خطاب۔ ورکشاپ کے شرکاء کو انعامات اور اسناد کی تقسیم

صحافت کے پیشے میں دلچسپی رکھنے والوں کے لئے مجلس اصلاح وتنظیم کی میڈیا واچ کمیٹی کی نگرانی میں منعقد ہونے والے ہونے پانچ روزہ ورکشاپ کے اختتام پر ایک شاندار اختتامی اجلاس بندر روڈ سیکنڈ کراس پر واقع المدینہ ہال میں منعقد ہوا۔

بھٹکل میں گھر کی چھت سے گرنے والا بچہ علاج کارگر نہ ہونے سے ہلاک۔ڈاکٹر پر غفلت برتنے کا الزام۔ ڈاکٹر نے طلب کی معذرت

بھٹکل سرکاری اسپتال میں بدھ کو  عوام نے بچے کی ایک نعش لے کر ایک ڈاکٹر کا گھیراو کیا اور اُس پر غفلت  برتنے کا الزام عائد کرتے ہوئے  اُسے  آڑے ہاتھوں لیا۔ عوام کا الزام تھا کہ ڈاکٹر کی لاپرواہی سے اس بچے کی جان گئی ہے۔

حج 2019 : بحری جہاز سے سفر ممکن : مختار عباس نقوی

مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور او رحج مختار عباس نقوی نے حج 2019 کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ سیزن میں بحری جہاز سے بھی سفر ممکن ہوگا ۔انہوں نے اس موقع پر حج ہاؤس کے صدر دفتر کی فلک بوس عمارت پر قومی پرچم لہرایا جو کہ زمین سے 350فٹ کی بلندی پر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حج کمیٹی جی ایس ٹی ...

اجودھیا تنازع : عدالت کے باہر اگر کوئی قانون بنے گا تو اس کو مسلمان نہیں کرے گا تسلیم : اقبال انصاری

ناگپور میں آر ایس ایس سربراہ موہن بھاگوت کے جمعرات کو رام مندر کے معاملہ پر دئے گئے بیان پر مختلف فریقوں کا رد عمل سامنے آرہا ہے ۔ جہاں آل انڈیا مسلم پرسنل بورڈ کے رکن مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے موہن بھاگوت کے بیان کو سیاسی قرار دیا ہے ،

بیلتھنگڈی: گاڑی میں غیر قانونی دھماکہ خیز مادہ لے جانے والے سے رشوت لینے کے الزام میں 2پولیس اہلکار معطل

پونجلا کٹّے پولیس اسٹیشن سے وابستہ ایک اے ایس آئی لکشمن اور ہیڈکانسٹیبل ابراہیم کو اس الزام کے تحت معطل کردیا گیا ہے کہ انہوں نے غیر قانونی طور پر موٹر بائک میں دھماکہ خیز اشیاء لے جانے والے چنّا سوامی سے 24ستمبر کو رشوت لی تھی۔

اُترکنڑا میں زائد پرائمری ٹیچروں کا تبادلہ؛ اردو اسکولوں کے ساتھ ناانصافی۔نارتھ کینرا مسلم یونائیٹد فورم کو تشویش

محکمہ تعلیمات کی طرف سے پرائمری اسکولوں میں جہاں طلبہ کی تعداد مقررہ معیارسے کم ہے وہاں سے زائد ٹیچروں کا تبادلہ کرنے کی جو پالیسی اپنائی ہے اس پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے نارتھ کینرا مسلم یونائٹیڈ فورم کے جنرل سکریٹری جناب محسن قاضی نے کہا ہے اس سے اردو اسکولوں کے ساتھ بڑی ...