ساحلی کرناٹکا میں مانسون کی دھماکے دار آمد؛ پورے خطہ میں طوفانی ہوائوں کے ساتھ زور دار بارش؛ کارگیدے میں روڈ بہہ گیا؛ مینگلور میں مندر پر درخت گرنے سے چار زخمی

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 9th June 2018, 2:32 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 9/جون (ایس او نیوز) ساحلی کرناٹکا کے اضلاع  اُترکنڑا،اُڈپی اور دکشن کنڑا میں اس بار  مانسون  کی دھماکے دار آمد ہوئی ہے جس کے ساتھ ہی  تینوں ساحلی اضلاع میں طوفانی ہوائوں کے ساتھ زور دار بارش کا سلسلہ جاری ہے جس سے عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ہے۔ موسلادھار بارش سے لوگوں کو   گھروں سے نکلنے میں دشواری ہورہی ہے تو وہیں دوسری طرف  بارش کی وجہ سے دکانوں میں گاہک بھی نہیں آرہے ہیں، جس سے کاروبار بھی کافی متاثر ہوا ہے۔

بھٹکل میں روڈ بارش کی نذر:   دو دنوں کی مسلسل بارش سے بھٹکل کے کارگیدے مسجد مزمل کے سامنے والی پوری سڑک بارش کی نذر ہوگئی ہے۔ زوردار بارش یہاں کی پوری سڑک کو اپنے ساتھ بہالے گئی ہے، جس کے نتیجے میں  اس سڑک پر عوام کا چلنا پھرنا دوبھر ہوگیا ہے۔  راستہ بے حد خراب ہونے کی وجہ سے مسجد میں نمازیوں کی تعداد پر بھی کافی اثر پڑا ہے، جبکہ روڈ پر سواریوں کا  گذر بند ہوگیاہے۔ عوام نے  مقامی تحصیلدار پر زور دیا ہے کہ وہ فوری طور پر سڑک کی مرمت کرکے سڑک کو استعمال کے قابل بنائیں۔ عوام نے مقامی سماجی اداہ مجلس اصلاح وتنظیم بھٹکل سے بھی درخواست کی ہے کہ وہ علاقہ کے پنچایت ممبر پر زور ڈالیں کہ وہ  یہاں پر منظور کئے گئے کانکریٹ روڈ  کی فوری تعمیر کو یقینی بنائیں، جس کے  لئے  چھ ماہ قبل ہی  اُس وقت کے وزیراعلیٰ سدارامیا نے فنڈ ریلیز کئے جانے کا عوامی اجلاس میں اعلان کیا تھا، مگر اتنا عرصہ گذرنے کے بائوجود سڑک کی تعمیر کا کام رُکا ہوا ہے۔

مکان پر درخت گرنے سے گھر کو نقصان:  طوفانی بارش کے نتیجے میں آج سنیچر کوبھٹکل تعلقہ کے مُٹھلی گرام پنچایت حدود کے تلاند میں ایک مکان پر کاجو کا درخت  گرنے سے گھر کی چھت کو نقصان پہنچا ہے۔ نقصان کا تخمینہ قریب بیس ہزار روپیہ لگایا گیا ہے۔ محکمہ روینو کے آفسران نے موقع پر پہنچ کر نقصانات کا جائزہ لیا ہے۔

بھٹکل میں ایک رمضان باکڑہ کی چھت اُڑگئی: یہاں بھٹکل ماری کٹہ میں ایک رمضان باکڑا کی چھت  طوفانی ہوائوں سے اُڑگئی، البتہ کسی کو نقصان نہیں پہنچا۔  بتایا گیا ہے کہ جمعہ کی شام کو جیسے ہی طوفانی ہواوں کےساتھ بارش شروع ہوئی،  ایک باکڑا کی چھت کے لئے استعمال کئے گئے شیٹ اپنی جگہ سے اُکھڑ گئی اور نیچے جاگری، یہ تو اچھا ہوا کہ اُس وقت قریب میں کوئی  گاہک نہیں تھے، ورنہ  شیٹ کا اس طرح گرنا خطرناک ثابت ہوسکتا تھا۔

مینگلور میں  گھنا درخت گرنے سے مندر کو نقصان ، چار زخمی:  مینگلور میں جمعہ کی شام کو ہوئی طوفانی بارش کے نتیجے میں مینگلور کے تاریخی  منگلادیوی مندر پر پیپل کا گھنا درخت گرنے سے نہ صرف مندر کو نقصان پہنچاہے بلکہ اس کی زد میں آکر چار لوگ بھی زخمی ہوئے ہیں، جن کی شناخت سُریکھا (63)، پروین سورنا (49) ، نوین (45) اور تیجسوینی (20) کی حیثیت سے کی گئی ہے۔ چاروں کو کافی چوٹیں آنے کی وجہ سے مختلف اسپتالوں میں داخل کیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق  مندر کے باہر رکھی ہوئی ایک کار کو بھی درخت گرنے سے نقصان ہوا ہے۔ موسلادھار بارش کو دیکھتے ہوئے آج سنیچر کو مینگلور کے اکثر  اسکولوں اور کالجوں میں چھٹی کا اعلان کیا گیا ہے۔

کل سے جاری موسلادھار بارش سے آج سنیچر کو مینگلور میں کئی علاقوں میں درخت اُکھڑنےکی واردات پیش آئی ہیں،سورتکل میں ایک قدم مکان پر درخت گرنے سے پورا مکان منہدم ہوگیا ہے، اسی طرح  مینگلور کے بھوانی اسٹریٹ اور نہرو میدان میں بھی درختوں کے گرنے سے نقصانات ہوئے ہیں۔

 

اُڈپی میں بھی موسلادھار بارش:  پڑوسی ضلع اُڈپی میں بھی طوفانی ہوائوں کےساتھ زوردار بارش کا سلسلہ جاری رہا، جس کو دیکھتے ہوئے آج سنیچر کو اسکولوں میں چھٹی کا اعلان کیا گیا ہے۔ موسلادھار بارش سے عام زندگی درہم برہم ہوگئی ہے اور لوگ گھروں کے اندر ہی دبک گئے ہیں۔ بارش سے کئی نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہوجانے کی اطلاعات ہیں، البتہ کسی بھی طرح کے نقصانات کی کوئی خبر نہیں ہے۔

انکولہ میں  الیکٹرک وائر گرنے سے تین گائے ہلاک: موسلادھار بارش کے دوران ضلع اُترکنڑا کے انکولہ تعلقہ کے الگیری دیہات میں الیکٹرک وائر ٹوٹ کر گرنے کے نتیجے میں تین گائے ہلاک ہونے کی واردات پیش آئی ہے۔ بتایا گیا ہے کہ سنیچر صبح طوفانی ہواوں کے ساتھ بارش جاری تھی کہ اچانک بجلی دوڑنے والی الیکٹرک وائر کھمبے سے الگ ہوکر نیچے گری۔ بتایا گیا ہے کہ اُس وقت کافی جانور چررہے تھے، جس میں سے تین گائیوں پر وائر گرنے سے تینوں گائے موقع پر ہی ہلاک ہوگئیں۔ ذرائع نے بتایا کہ کافی چہل پہل والے علاقے میں یہ واردات پیش آئی ہے، یہ تو اچھا ہوا کہ یہ وائر کسی راہگیر پر نہیں گری، ورنہ  انسانی جان بھی جاسکتی تھی ۔

کاروار ، کمٹہ، ہوناور  میں بھی بارش:   اُدھر ضلع اُترکنڑا کے کاروار، انکولہ، کمٹہ، ہوناور ، یلاپور، ہلیال اور سرسی میں بھی دو روز سے موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری ہے،  کئی علاقوں میں بارش سے درختوں کے مکانوں پر گرنے  اور الیکٹرک سروس متاثر ہونے کی اطلاعات ہیں، البتہ دیگر کسی نقصان کی کوئی خبر نہیں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن کی سدراہ بنے ماحولیاتی این جی اوز کو ملنے والی مالی امداد کی جانچ کریں : رکن اسمبلی روپالی نائک کامرکزی ریلوے وزیر سے مطالبہ

ریاست کے ساحلی علاقے سے شمالی کرناٹک  کو جوڑنے والی ’قسمت کی ریکھا‘ انکولہ ۔ ہبلی ریلوے لائن کی تعمیرمیں جو ماحولیاتی اداروں ، این جی اوزاور ماہرین سدراہ بنے ہوئے ہیں دراصل یہ تمام  بیرونی ممالک کی  کروڑوں دولت کے تعاون سے بےبنیاد چیخ وپکار کررہے ہیں کاروار انکولہ کی رکن ...

کاروار میں انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن منصوبےکو جاری کرنےعوامی احتجاج : قومی شاہراہ بند کرنے پر احتجاجی پولس کی تحویل میں

انکولہ۔ ہبلی ریلوے لائن منصوبہ، سرحد علاقہ کاروار میں صنعتوں کا قیام سمیت مختلف مانگوں کو لے کر لندن برج پر قومی شاہراہ کو بند کرتے ہوئے احتجاج کی تیاری میں مصروف کنڑا چلولی واٹال پارٹی کے واٹال ناگراج سمیت 21جہدکاروں کو پولس نے گرفتار کرنے کے بعد رہاکردیا۔

لوک سبھاانتخابات کی تیاری میں مصروف الیکشن کمشن :اتراکنڑا  ضلع میں 11.40 لاکھ رائے دہندگان : 14ہزار ووٹرس آؤٹ تو 12ہزار ووٹرس اِن

الیکشن کمیشن  آئندہ ہونےو الے لوک سبھا انتخابات کی تیاری میں مصروف ہے۔اندراج و اخراج   اور ترمیم کے بعد تشکیل دی گئی  رائے دہندگان کی  فہرست کے مطابق ضلع کے 6ودھان سبھا حلقہ جات میں کل 11،40،316 ووٹر ہیں۔ چونکہ انتخابات کے قریب تک ووٹروں کے اندراج کے لئے موقع دیا گیا ہے تو رائے ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...