کمار سوامی کی راہل گاندھی سے ملاقات ،کابینہ میں توسیع جلد کرنے کی خواہش کا اظہار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 30th August 2018, 11:00 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

بنگلورو،30؍اگست(ایس او نیوز) ریاست میں کانگریس جنتادل (ایس) مخلوط حکومت کے سو دن کی تکمیل پر آج وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے دہلی میں صدر کانگریس راہل گاندھی سے ملاقات کی اور ان کا شکریہ ادا کیا اور ساتھ ہی ان سے گز ارش کی کہ ریاست میں حکومت کے استحکام کو نقصان پہنچانے والے بیانات دینے سے گریز کرنے ریاست کے کانگریس قائدین کو ہدایت دی جائے۔

آج دہلی کے تغلق روڈ پر واقع راہل گاندھی کی رہائش گاہ پر کمار سوامی نے اے آئی سی سی جنرل سکریٹری کے سی وینو گوپال اور جنتادل (ایس) کے جنرل سکریٹری دانش علی کے ہمراہ راہل گاندھی سے ملاقات کی۔ اس ملاقات کے دوران بتایاجاتا ہے کہ کمار سوامی نے ریاستی حکومت کی طرف سے کسانوں کے قرضوں کی معافی کے لئے لئے گئے فیصلے سے راہل گاندھی کو آگاہ کرایا اور کہاکہ ان قرضوں کی معافی کی وجہ سے ریاستی خزانے پر جو بوجھ پڑے گا اس کے لئے حکومت ٹیکسوں کے ذریعے متبادل مالی وسائل یکجا کرنے پر فکر مند ہے۔

انہوں نے کہاکہ ریاستی حکومت کو اگر ٹھیک طرح سے کام کرنے دیا جائے تو آنے والے دنوں میں حکومت اور بھی فلاحی اقدامات اٹھا سکتی ہے۔ حالانکہ یہ قیاس کیا جارہاتھا کہ کمار سوامی رابطہ کمیٹی کے چیرمین اور سابق وزیراعلیٰ سدرامیا کے خلاف راست شکایت کریں گے ،اور حکومت کے استحکام کو متاثر کرتے ہوئے ان کی طرف سے دئے جارہے بیانات پر روک لگانے کی مانگ کریں گے، لیکن کمار سوامی نے ایسا نہیں کیا۔ انہوں نے کہاکہ ریاستی حکومت مستحکم ہے اور سدرامیا کی رہنمائی میں عوام کی فلاح کے لئے شب وروز متحرک ہے، جہاں تک وزیر اعلیٰ بننے کے متعلق سدرامیا نے بیان دیا اس سلسلے میں وہ وضاحت کرچکے ہیں۔ دوبارہ وزیراعلیٰ بننے کی خواہش جمہوری نظام کے تحت کوئی بھی کرسکتا ہے، اگر ریاستی عوام نے سدرامیا کی قیادت پر اعتماد ظاہر کیا تو وہ وزیراعلیٰ بن جائیں تو کسی کو اس پر اعتراض کیوں ہو۔اسی طرح سدرامیا کی مانند ایک اور سینئر لیڈر آر وی دیش پانڈے بھی وزیر اعلیٰ بننے کی خواہش رکھتے ہیں ، بارہا اس معاملے کو موضوع بحث نہیں بنانا چاہئے۔

ملاقات کے بعداخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کمار سوامی نے کہاکہ راہل گاندھی سے یہ ملاقات صرف خیر سگالی کے لئے تھی۔ حکومت کے سو دن کی تکمیل پر صدر کانگریس کا شکریہ ادا کرنے کے ساتھ انہوں نے آنے والے دنوں میں کانگریس اور جنتادل (ایس) کی طرف سے مل کر ریاست کو ترقی کی جانب لے جانے کے لئے منصوبہ سازی کے عزم کا اس موقع پر اظہار کیا۔ بتایاجاتاہے کہ کمار سوامی نے اس ملاقات کے دوران راہل گاندھی سے گزارش کی کہ ریاستی کابینہ کی توسیع کو جلد از جلد انجام دینے کے لئے کانگریس کے وزراء کی فہرست کو وہ منظوری دیں ، اس کے علاوہ حکومت کے استحکام کو یقینی بنانے کے لئے اراکین اسمبلی کو سرکاری بورڈز اور کارپوریشنوں کی چیرمین شپ دینے کی تجویز کو بھی منظور ی دیں۔ وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی کی طرف سے ریاستی کانگریس قائدین کو نظر انداز کرتے ہوئے راست طور پر راہل گاندھی سے ملاقات کرنے پر ریاست کے بعض کانگریس قائدین چراغپا ہوگئے ہیں۔

حالانکہ اس وقت دہلی میں نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور ، وزیر مالگزاری آر وی دیش پانڈے وغیرہ موجود ہیں، لیکن وزیراعلیٰ کمار سوامی نے ان میں سے کسی کو بھی راہل گاندھی سے ملاقات کے دوران اپنے ساتھ نہیں رکھا، اس کے بعد کمار سوامی کی قیادت میں ان وزراء نے وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ سے ملاقات کی۔راہل گاندھی سے ملاقات کے بعد کمار سوامی نے سدرامیا کی تعریفوں کے پل باندھتے ہوئے کہاکہ ریاست میں حکومت سدرامیا کی ہی رہنمائی میں چل رہی ہے اور سدرامیا ہی اس حکومت کے استحکام کی ضمانت ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مخلوط حکومت بغیر کسی پریشانی کے سودن پوری کرسکی ہے تو سدرامیا سمیت تمام کانگریس قائدین کے تعاون کی بدولت ہی ممکن ہوپایا ہے۔اسی طرح کا تعاون آنے والے دنوں میں بھی برقرار رہے گا اور مخلوط حکومت ریاستی عوام کی فلاح وبہبود کے لئے کام کرے گی۔ 

ایک نظر اس پر بھی

گوا میں بیرونی مچھلیوں کی درآمد پر لگی پابندی سے کاروار، ملپے میں مچھلیاں سستی تو منگلورو میں ہوگئیں مہنگی !

جب سے گوا کی حکومت نے فارمولین کے مسئلے پر بیرونی ریاستوں سے مچھلیوں کی درآمد پر پابندی رکھی ہے اور کچھ قانونی شرائط لاگو کی ہیں، تب سے ساحلی کرناٹکا کے شہروں میں اس کا کچھ ملا جلا اثر دکھائی دے رہا ہے۔

بیلگاوی میں احتجاج کے دوران کسان سورنا سودھا میں گھس گئے، وزیر اعلیٰ کی مداخلت کے بعد گرفتار شدہ افراد کی رہائی ، 20؍نومبر کو بنگلورو میں میٹنگ

شمالی کرناٹک کے بیلگاوی ضلع میں  گناہ اگانے والے کسانوں نے احتجاج کیا اور سوورنا سودھا کے احاطہ میں گنا سے لدی لاریوں کو زبردستی گھسا کر حکومت کے خلاف نعرے لگائے ۔ پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے 10؍ کسان لیڈروں کو گرفتار کر لیا ہے اور ان کےخلاف ایف آئی آر درج کردیا ۔

سنجے دت کے ہاتھوں19نومبرکواڈاپٹ فٹنس کا افتتاح، بنگلورو کا بین الاقوامی معیار پر مشتمل سب سے بڑا فٹنس سنٹر عوام کے لئے دستیاب

شہر کے فریزر ٹاؤن میں صحت اور فٹنس کو عام کرنے کے لئے عالمی معیار کی سہولتوں سے لیس ہندوستان کی سب سے بڑی اور خوبصورت جم اڈاپٹ فٹنس کا افتتاح 19نومبر کی شام منعقد کیا گیا ہے۔

جموں وکشمیرکے گورنرنے کہا "گولی کے جواب میں گولی ملے گی، گلدستہ نہیں"

جموں وکشمیرحکومت نے دہشت گردی کے خلاف سخت رخ اپناتے ہوئے واضح کردیا ہے کہ گولی کا جواب گولی سے ملے گا۔ دہلی میں جموں وکشمیرکے گورنرستیہ پال ملک نے ایک کتاب کے اجرا تقریب کے موقع پرنیوز18 سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کشمیرمیں روزایک دو دہشت گرد مارے جاتے ہیں، لیکن اگرآپ گولی چلائیں ...

مراٹھا ریزرویشن کا راستہ صاف ، منائیں جشن  ،دیویندر فڑنویس کابینہ نے بل کو دی منظوری

مہاراشٹر میں مراٹھا ریزرویشن کو لے کر ریاست کی دیویندر فڑنویس حکومت نے بڑا قدم اٹھایا ہے۔ فڑنویس کابینہ نے مراٹھا ریزرویشن کے لئے بل کو منظوری دے دی ہے۔ اس کے ساتھ ہی ریاست میں مراٹھا ریزرویشن کا راستہ صاف ہو گیا ہے۔ اس سے پہلے وزیر اعلی فڑنویس نے احمد نگر میں مراٹھا ریزرویشن ...

وکاس کے لیے اور وقت کی ضرورت : مزید دس پندرہ سال مل جائیں تو چھتیس گڑھ ہندوستان کی تین پہلی ریاستوں میں شامل ہوگا: مودی

وزیر اعظم نریندر مودی نے نوجوانوں کو ملک کی بڑی طاقت بتاتے ہوئے آج کہا کہ ملک کا نوجوان روزگار دینے کی طاقت کے ساتھ کھڑا ہونا چاہتا ہے اور یہی وجہ ہے کہ وزیر اعظم کرنسی منصوبہ سے ملک میں 14 کروڑ لوگوں کے لئے قرض منظور کئے گئے ہیں۔وزیر اعظم مودی نے چھتیس گڑھ میں دوسرے مرحلے کے ...

نہرو اور امبیڈکر سے بھی بڑے دانشور ہوتے بھگت سنگھ: چمن لال

نجی ٹی وی آج تک ایک پروگرام میں شرکت کرنے پہنچے محب وطن کے مصنف سدھیر ودیارتھی اور کھلے خیالات کے لئے پہچانے جانے والے مصنف پروفیسر چمن لال نے شہید بھگت سنگھ پر ڈھیر سارا کام کیا ہے اور جے این یو میں تعلیم کر چکے ہیں۔بھگت سنگھ کی زندگی پر خطاب کرتے ہوئے چمن لال نے بتایا کہ بھگت ...

دلتوں کے مسائل پرحکومت کوگھیرے گی کانگریس، 26نومبرکو’یوم آئین‘ پروگرام 

ملک کی کئی ریاستوں میں چل رہے اسمبلی انتخابات کے پس منظر میں کانگریس دلتوں کے معاملے پر نریندر مودی حکومت کو گھیرنے کی تیاری میں ہے اور اسی کے تحت وہ آئندہ 26نومبر کو دہلی میں ایک بڑا پروگرام کرنے جا رہی ہے جس میں پارٹی کے سینئر لیڈران کے ساتھ دلت سوسائٹی کے نمائندے اورتجزیہ ...

بی جے پی پچھڑوں کے خلاف ،کشواہا کو الگ ہوجانا چاہئے:بہارکانگریس صدر

لوک سبھا انتخابات میں سیٹوں کی تقسیم کو لے کرراشٹریہ لوک سمتا پارٹی (رالوسپا)کی بی جے پی کے ساتھ کشیدگی بڑھنے کے درمیان کانگریس کے بہار انچارج شکتی سنگھ گوہل نے اتوار کو کہا کہ بی جے پی پچھڑوں اور بہت پچھڑوں کے خلاف ہے اور ایسے میں ایسے فرقوں کی سیاست کرنے والے لیڈر ...