بنگلور میں سو سے زائد عازمین حج کا پیسہ لے کرفرار ہونے والا ایجنٹ گرفتار؛ 4 کروڑ روپئے ہڑپنے کا الزام

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 9th August 2018, 9:19 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو 9/اگست (ایس او نیوز) عازمین حج کو دھوکہ دے کر فرار ہونے والے   بنگلور کے حریم ٹورس کے مالک صبغت اللہ شریف سمیت 6 افرادکو پولس نے بالاخر گرفتار کرلیا ہے جن پر عازمین حج کو حج کے نام پر لوٹنے کا الزام ہے۔

ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق  حریم ٹورس نامی ایجنسی پر 100 سے زائد عازمین حج کو دھوکہ دینے کا الزام  ہے۔ بتایاجارہا تھا  کہ یکم اگست سے حریم ٹورس کا دفتر بندہے اور اس کا مالک صبغت اللہ شریف عازمین حج کی رقم اور پاسپورٹ لے کر فرار ہوگیا ہے ، مگر آج جمعرات کو بنگلوروکی تِلک نگر پولیس نے صبغت اللہ شریف سمیت   اُن کے فرزند عبدالرحمن،عبدالرضوان،عبدالذیشان سمیت6 ملزمین کو سلاخوں کے پیچھے پہنچادیا ہے۔

اطلاع کے مطابق حریم ٹورس نے فی عازم ڈھائی سے تین لاکھ روپئے کی رقم حاصل کی تھی ۔ خیال رہے کہ گزشتہ کئی سالوں سے صبغت اللہ شریف اوراس کا بیٹا حج اور عمرہ کے سفرسے وابستہ تھے۔کم لاگت پر لوگوں کو حج کرانے کے پمفلٹ دیکھنے کے بعد لوگوں نے حج جانے کے مقصد سے رقومات اور پاسپورٹ ان کے حوالے کئے تھے۔ مگر اچانک دفتر بند ہوجانے اور فون پر بھی رابطہ نہ ہونے پر عازمین نے تلک نگر پولس تھانہ میں شکایت درج کی۔ اس پورے معاملے  کے بعد اب  حج اورعمرہ کے نجی ٹور آپریٹرس بھی سوالات کے گھیرے میں آگئے ہیں۔

بتایا گیا ہے کہ حریم ٹورس اینڈ ٹراویلس پر113عازمین حج سے تقریبا4 کروڑروپئے وصول کرنے کا الزام ہے۔ پولیس تمام ملزمین کوعدالت میں پیش کرتے ہوئے معاملے کی مزید تحقیقات میں جٹی ہوئی ہے۔

 متاثر عازمین حج کا کہنا ہے کہ نجی ٹور آپریٹر نے ان کےجذبات کےساتھ کھلواڑکیا ہے۔ کئی دنوں پہلے ہی اُنہوں نے مقدس سفر کی تیاریاں مکمل کرلی تھیں۔ اپنے دوستوں اور رشتہ داروں سے ملاقاتیں، دعوتیں، سب پوری ہو گئی تھیں ۔ لیکن 2/ اگست کو جب پتہ چلا کہ صبغت اللہ شریف فرار ہوگئےہیں تو ایسا لگا کہ پیروں تلے زمین کھسک گئی۔

ایک نظر اس پر بھی