ہردیپ سنگھ پوری نے پاکستان کی پالیسیوں کی تنقیدکی

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 3rd December 2018, 2:31 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی: 2/دسمبر (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)مرکزی وزیراور بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی )کے لیڈر ہردیپ سنگھ پوری نے اتوار کو پاکستان متنبہ کیاہے کہ اگروہ اپنی پرانی پالیسیوں پر کاربندرہا تو کرتارپور کوریڈور کے بعد قائم ہوئی ہم آہنگی ختم ہوجائے گی۔مسٹر پوری نے ٹوئیٹ کر کے کہا،’’میں وزیراعظم نریندرمودی کی کرتار پور کوریڈور کے تعلق سے برلن کی دیوار گرنے جیسی امید افزابات سے متفق ہوں۔اس سے ہم آہنگی قائم ہوسکتی ہے ،لیکن اگرہمارے دوست اپنی پرانی پالیسیوں پر ہی قائم رہتے ہیں ، جس سے انکی سوچ کا پتہ چلتا ہے،توہمارے لیے اس ہم آہنگی کو قائم رکھنا مشکل ہوجائے گا۔ہمارے وزیراعظم امن قائم کرنا چاہتے ہیں ،لیکن اسکی پہل دونوں طرف سے ہونی چاہئے۔‘‘واضح رہے کہ مسٹر پوری کا یہ بیان وزیرخارجہ سشما سوراج کے کرتارپور کوریڈور کے تعلق سے پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کے گگلی والے تبصرے کا جواب دیے جانے کے ایک دن بعد آیاہے۔محترمہ سوراج نے مسٹر قریشی کے تبصرے کا جواب دیتے ہوئے ہفتہ کے روز ٹوئیٹ کیاتھا،’’پاکستان کے وزیرخارجہ جی آپکی گگلی والی بات نے آپ کا منشا ظاہر کردیاہے۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

شہیدوں کے گھر ’درد کے دریا کا سیلاب‘ تھا اور مودی دریا میں شوٹنگ کر رہے تھے: راہل گاندھی

کانگریس صدر راہل گاندھی نے پلوامہ دہشت گردانہ حملے والے دن وزیر اعظم نریندر مودی کے ایک چینل کے لئے فلم کی شوٹنگ کرنے سے متعلق خبروں کو لے کر جمعہ کو ان پر حملہ بولا اور الزام لگایا کہ جب شہیدوں کے گھر دردکے دریا کا سیلاب تھا تو پرائم ٹائم منسٹر 'ہنستے ہوئے دریا میں شوٹنگ کر رہے ...

عظیم اتحادملک کے لیے اچھانہیں،اپوزیشن کے پاس کوئی نظریہ اورکوئی لیڈرنہیں ہے، امت شاہ کوپھرمہاگٹھ بندھن سے شکایت،کانگریس اورلیفٹ کونشانہ بنایا

جھک کرلوجپا،شیوسینا،جدیواورڈی ایم کے کے ساتھ اتحادکرنے والی بی جے پی صدر امت شاہ نے جمعہ کو اپوزیشن پارٹیوں کے مجوزہ مہاگٹھ بندھن پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملک کے لیے اچھا نہیں ہے۔

بہار کے سابق وزیرالیاس حسین کو 22 سال پرانے کول تار گھوٹالے میں 5 سال کی سزا

مرکزی تفتیشی بیورو(سی بی آئی) کی خصوصی عدالت نے جمعہ کو کول تار گھوٹالے میں بہارکے سابق وزیرالیاس حسین اورچاردیگر کو پانچ سال قید کی سزا سنائی اور ایک ٹھیکیدار کو اس معاملے میں سات سال کی سزا سنائی۔