یہ اسلام کی حقانیت ہے کہ تمام مشکلات برداشت کرلی گئیں ، مسلمان کے طور پر زندگی بسر کرناچاہتی تھی اس لیے سپریم کورٹ گئی: ہادیہ 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th March 2018, 11:45 AM | ملکی خبریں |

تراوندپرم 12مارچ(ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا )مبینہ لو جہاد معاملے میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد اپنے آبائی ریاست کیرالہ پہنچی ہادیہ شافعین نے پیر کو ایک پریس کانفرنس میں کورٹ کے فیصلے پر خوشی کا اظہار کیا اور دعوی کیا کہ ان کے خاندان والوں نے انہیں گھر میں بند کر دیا تھا۔ اس دوران انہیں کافی تشدد سے بھی گزرنا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ وہ مسلمان کے طور پر زندگی بسر کرنا چاہتی تھیں، اسی لیے وہ سپریم کورٹ گئیں۔ ہادیہ نے کہا کہ وہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے بے حد خوش ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مجھے گھر میں بند کر دیا گیا تھا، تو مجھے کچھ بھی معلوم نہیں تھا، باہر نکلی تو پتہ چلا کہ کتنے لوگ میرے لئے کام کر رہے ہیں۔ میں ان تمام لوگوں کا شکریہ ادا کرنا چاہتی ہوں جنہوں نے میری آزادی کے لئے اپنا تعاون پیش کیا، میں اپنی آزادی کے لئے جنگ لڑ رہی تھی، اسی لیے سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا۔ انہوں نے کہاکہ میں کسی کے اوپر الزام نہیں لگانا چاہتی ہوں، میرے دو سال صرف قانونی جنگ لڑنے میں گزر گئے۔ اس کے بعد سپریم کورٹ نے مجھے اپنے شوہر سے ملنے کی اجازت دی۔ آخرکار مجھے انصاف ملا ۔ انہوں نے کہاکہ آئین انہیں اپنا شوہر منتخب کرنے کی اجازت دیتا ہے لیکن مجھے اپنے گھر میں بند کر دیا گیا۔ ہادیہ نے کہاکہ مجھے 100 فیصد یقین ہے کہ میں نے کوئی غلطی نہیں کی لیکن مجھے گھر میں قید کر دیا گیا جو اس ملک میں نہیں ہونا چاہئے۔ ہادیہ نے کہا کہ وہ دو وجوہات سے سپریم کورٹ گئیں۔ پہلی وجہ یہ تھی کہ وہ ایک مسلمان کے طور پر زندگی گزارناچاہتی ہیں اور دوسری وجہ یہ تھی کہ وہ اپنے شریک حیات کے ساتھ رہنا چاہتی تھیں۔ ہادیہ نے کہا کہ اب جب بھی میں گھر میں رکتی ہوں اچھا لگتا ہے۔ میں کورٹ کے فیصلے کے بہت خوش ہوں، میری جدوجہد اس وقت شروع ہوئی جب میں نے شادی کی، پھر میں کورٹ پہنچی۔ مجھے کافی تشدد سے گزرنا پڑا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ڈیزل-پیٹرول کی قیمتیں اب تک کی سب سے زیادہ

ڈیزل اور پیٹرول کی لگاتار قیمتیں بڑھ رہی ہیں اور اب وہ اب تک کی سب سے زیادہ ہو چکی ہیں۔ کانگریس نے ڈیزل اور پٹرول کی قیمت پانچ سال میں سب سے اونچی سطح تک پہنچنے پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت کو ایندھن سے ہونے والی کمائی کا استعمال الیکشن جیتنے اور حکومتیں بنانے کے ...

2019 کے لیے اپوزیشن کی ورزش شروع، بہار میں بہار لیکن یوپی ڈالے گا پی ایم مودی کی راہ میں روڑا

کرناٹک میں55گھنٹے سے بھی زیادہ چلے سیاسی ڈرامہ کے بعد آخر کار یدورپا کو وزیر اعلیٰ کے عہدے سے استعفیٰ دیناپڑا۔اب کانگریس کی حمایت سے جے ڈی ایس کی حکومت بنے گی اور کمارسوامی وزیر اعلی کی کرسی پر بیٹھیں گے۔

راجناتھ کا ہیلی کاپٹر اتارنے کے لیے پہلے 26گھنٹے کے لیے کاٹی گئی بجلی، ہنگامے کے بعدسپلائی بحال

مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کے ہیلی کاپٹر کی لینڈنگ کرنے کے لیے ستنا کے مقامی انتظامیہ نے تقریباََ20دیہات کی بجلی 26گھنٹے کے لیے کاٹ دی۔ستنا میں اس وقت شدید گرمی پڑ رہی ہے اور وہاں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت42ڈگری سینٹی گریڈ ہے۔

اداکار پرکاش راج نے پی ایم مودی پر کسا طنز،56 انچ بھول جائیے، 55گھنٹے بھی نہیں سنبھالاجاسکا کرناٹک 

کرناٹک میں محض ڈھائی دن پرانی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)کی حکومت ہفتہ (19 مئی)کی شام گر گئی۔وزیر اعلی بی ایس یدی یورپا نے یقین نہ کا سامنا کئے بغیر ہی اسمبلی ٹیبل پر اپنے استعفی کا اعلان کر دیا۔