سیکولر جماعتیں سبق لیں،اتحادبہت ضروری ہے، سی پی آ ئی نے کہا،الیکشن اب ایک چھلاوابن کررہ گیاہے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th May 2018, 12:31 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی15مئی(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) ہندوستانی کمیونسٹ پارٹی(سی پی آئی)نے کہاہے کہ کرناٹک اسمبلی انتخابات کے نتائج سے واضح ہوگیاہے کہ بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی)کو شکست دینے کے لیے تمام سیکولر سیاسی جماعتوں میں باہمی اتحادبہت ضروری ہے۔پارٹی کے جنرل سکریٹری سدھاکر ریڈی نے کرناٹک انتخابات کے نتائج کے بعداپنے ردعمل میں کہاہے کہ ان کی پارٹی بہت پہلے سے ہی کہتی رہی ہے کہ سیکولر جماعتوں کے درمیان اتحاد ضروری ہے اور کرناٹک کے نتائج سے اس کی ایک بار پھر تصدیق ہو گئی ہے۔انہوں نے یہاں ایک بیان میں کہا کہ کرناٹک میں ذات پات پر مبنی صف بندی کی وجہ سے ہی بی جے پی ابھری ہے اورانتخابات کے بعد سب سے بڑی پارٹی بنی ہے لیکن ریاست میں انتخابات میں کافی دولت کو بھی بہایا گیا ہے اور انتخاب اب چھلاوا بن کر رہ گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مرکزی حکومت کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک کے لئے ٹی ڈی پی غیربی جے پی جماعتوں کے رابطے میں

آندھراپردیش کو خصوصی درجہ نہیں دےئے جانے اور دیگر مطالبات کو پورا نہیں کرنے سے ناخوش تیلگو دیشم پارٹی (ٹی ڈی پی) نے آئندہ مانسون اجلاس میں مرکزی حکومت کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک پیش کرنے کے معاملہ میں غیربی جے پی اور غیرکانگریسی جماعتوں سے حمایت حاصل کرنے کیلئے رابطہ کرنا ...

ائیر ہوسٹس انیشیا بترا کی موت : دو سال پہلے ہوئی تھی شادی ، اکثر ہوتی تھی شوہر سے لڑائی

ہلی کے حوض خاص علاقہ میں 39 سالہ ایئر ہوسٹس انیشیا بترا کی موت کے معاملہ میں اس کے بھائی کرن بترا نے اپنے بہنوئی مینک پر سنگین الزامات عائد کئے ہیں۔ اس نے کہا کہ مینک اس کی بہن کے ساتھ مار پیٹ کرتا تھا اور اس کا استحصال کرتا تھا۔ انیشیا کے فیس بک پیج کے مطابق دونوں کی شادی فروری 2016 ...

اترپردیش میں بیٹی پیدا ہونے پر ناراض شوہر نے بیوی کو دیا تین طلاق

یم کورٹ کے تین طلاق کو غیر قانونی قرار دینے کے باوجود تین طلاق کے معاملات رک نہیں رہے ہیں۔ تازہ ترین معاملہ اتر پردیش کے شاملی کا ہے جہاں ایک مسلم عورت کو اس کے شوہر نے صرف اس وجہ سے تین طلاق دے دی کیونکہ اس نے بیٹی کو جنم دیا تھا۔

مودی کو اس بار صفر کر دے گی عوام: اکھلیش

وزیر اعظم نریندر مودی اترپردیش میں ہیں، اس دوران وہ عوامی جلسوں سے خطاب کر کے حزب اختلاف کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ دریں اثنا ریاست کے سابق وزیر اعلیٰ اور سماجوادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو نے بغیر نام لئے ان پر حملہ کیا ہے۔