گجرات فسادات: مودی کو کلین چٹ دینے کے خلاف ذکیہ جعفری کی عرضی پر جنوری میں ہوگی سماعت

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 3rd December 2018, 11:44 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی،03؍ دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) سپریم کورٹ نے سال 2002 کے گجرات فسادات کے سلسلے میں ریاست کے سابق وزیر اعلی نریندر مودی کو خصوصی تفتیشی ٹیم (ایس آئی ٹی) کی طرف سے دی گئی کلین چٹ کو چیلنج دینے والی ذکیہ جعفری کی درخواست جنوری کے تیسرے ہفتے میں سماعت کے لئے درج کی۔

ذکیہ جعفری کے شوہر سابق ایم پی احسان جعفری فسادات کے دوران ایک واقعہ میں مارے گئے تھے۔ذکیہ نے ایس آئی ٹی کے فیصلے کے خلاف ان کی عرضی کو مسترد کئے جانے کے گجرات ہائی کورٹ کے پانچ اکتوبر، 2017 کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہے۔

جسٹس اے ایم کھانولکر اور جسٹس ہیمنت گپتا کی بنچ نے معاملے کو اگلے سال جنوری کے تیسرے ہفتے میں سماعت کے لئے درج کیا۔عدالت نے پہلے کہا تھا کہ وہ اہم معاملے میں سماعت سے پہلے ذکیہ کی عرضی میں شریک درخواست گزار بننے کے سماجی کارکن تیستا سیتلواڈ کی درخواست پر بھی غور کریں گے۔گزشتہ سماعت میں ایس آئی ٹی کی جانب سے سینئر وکیل مکل روہتگی نے کہا تھا کہ ذکیہ کی عرضی قابل غور نہیں ہے۔انہوں نے معاملے میں سیتلواڈ کے دوسری عرضی بننے پر بھی اعتراض ظاہر کی تھی۔

انہوں نے کہا تھا کہ جعفری نے ایک بھی حلف نامہ جمع نہیں کیا ہے اور سارے حلف نامے سیتلواڈ نے جمع کئے ہیں جو خود کو صحافی بتاتی ہیں۔ذکیہ کی جانب سے سینئر وکیل سی یو سنگھ نے کہا تھا کہ اہم درخواست گزار 80 سال کی ہیں لہٰذا سیتلواڈ کو ان کی مدد کے لئے درخواست گزار نمبر 2 بنایا گیا ہے۔اس پر عدالت نے کہا تھا کہ درخواست گزار کی مدد کے لئے کسی کو شریک درخواست گزار بننے کی ضرورت نہیں ہے اور وہ سیتلواڈ کے دوسری عرضی بننے کی درخواست پر غور کریں گے۔

جعفری کے وکیل نے کہا تھا کہ درخواست میں نوٹس جاری کئے جانے کی ضرورت ہے کیونکہ یہ 27 فروری، 2002 سے مئی 2002 کی مدت کے دوران مبینہ بڑی سازش کے پہلو سے متعلق ہے۔ایس آئی ٹی نے اس معاملے میں آٹھ فروری 2012 کو کلوزر رپورٹ داخل کی تھی۔اس نے مودی کو اور سینئر سرکاری حکام سمیت 63 دیگر کو کلین چٹ دی تھی۔تب ایس آئی ٹی نے کہا تھا کہ ان کے خلاف استغاثہ کے قابل کوئی ثبوت نہیں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔

بھٹکل کے مرڈیشور میں دو لوگوں پر حملے کی پولس تھانہ میں دو الگ الگ شکایتیں

تعلقہ کے مرڈیشور میں کل جمعرات کو  دو لوگوں پر حملہ اور پھر جوابی حملہ کے تعلق سے آج مرڈیشور تھانہ میں دو الگ الگ شکایتیں درج کی گئی ہیں اور پولس نے دونوں پارٹیوں کی شکایت درج کرتے ہوئے چھان بین شروع کردی ہے۔

مرڈیشور میں غیر ضروری بات کو لے کر ماحول خراب کرنے کی کوشش؛ سری رام سینا لیڈر اسپتال میں داخل

تعلقہ کے مرڈیشور میں  سری رام سینا  ضلعی صدر مسلم نوجوانوں سے اُلجھنے کے بعد زخمی ہو کر سرکاری اسپتال میں داخل ہونے کی واردات پیش آئی ہے، جس کے بعد سوشیل میڈیا پر زخمی شخص  کے فوٹو کے ساتھ مسیجس پھیلاکر عوام میں انتشار پیدا کرنے کی کوشش ہورہی ہے۔

گوا کے افسران نے10لاکھ روپے مالیت کی مچھلیاں برباد کردیں۔کاروار کے مچھلی فروش کا الزام

ضلع شمالی کینرا کے ماہی گیروں کے لیڈر نے الزام لگایا ہے کہ گواحکومت انتقامی کارروائی کی راہ اپناتے ہوئے تمام قانونی تقاضے پورے کرنے کے بعدبھی کرناٹکا سے گوا میں لے جائی مچھلیوں کوتباہ کررہی ہے۔

منگلورومیں نوجوان کو اغوا کرکے تاوان وصول کرنے والے نکلے منشیات فروش۔ 2.89لاکھ روپے مالیت کی اشیاء ضبط

چند دن پہلے فالنیر علاقے سے شماق نامی نوجوان کو اغوا کرنے اور بعد میں 50ہزار روپے تاوان وصول کرکے چھوڑنے والے کے الزام میں گرفتار کیے گئے گوتم(۲۸سال) اور لوئی ویگس (۲۶سال)کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ منشیات فروشی کے دھندے میں ملوث ہیں۔