کرپشن پر روک لگانے میں حکومتیں ناکام:ایچ ایس دورے سوامی 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th September 2018, 9:57 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،7؍ستمبر(ایس او نیوز) بزرگ مجاہد آزادی ایچ ایس دورے سوامی نے کہا ہے کہ کرپشن کی روک تھام کے معاملے میں مرکزی اور ریاستی حکومتیں پوری طرح ناکام رہی ہیں۔ آج لیجسلیٹر س ہوم میں ریاست میں کرپشن کے خاتمے کے متعلق منعقدہ مذاکرے میں حصہ لیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ مرکزی حکومت کرپشن پر روک لگانے میں سنجیدہ نہیں ، یہ بات اس سے ثابت ہوتی ہے کہ حکومت نے اپنے اقتدار کی مدت کے پانچ سال کی تکمیل کے قریب بھی لوک پال کا تقرر نہیں کیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ مودی کابینہ کے بعض وزراء لوک پال کے تقرر کی تحریک سے جڑے رہے، لیکن اس کے باوجود بھی مرکزی حکومت کو یہ لوگ باور کروانے میں ناکام ہیں کہ لوک پال کا تقرر حسب وعدہ ہونا چاہئے۔

کانگریس کو بھی آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ لوک پال کے تقرر کے سلسلے میں مرکزی حکومت کی طرف سے کی جانے والی میٹنگوں میں کانگریس رہنما ملکارجن کھرگے صرف اس لئے شرکت نہیں کررہے ہیں کیونکہ انہیں بحیثیت اپوزیشن لیڈر مدعو نہیں کیاجارہاہے ۔ انہوں نے کہاکہ مرکزی حکومت کو ہٹ دھرمی ترک کردینی چاہئے اور تمام کو اعتماد میں لے کر لوک پال کے قیام کی پہل کی جانی چاہئے۔

ریاست کے لوک آیوکتہ کے متعلق انہوں نے کہاکہ لوک آیوکتہ کا عہدہ کوئی سیاسی نہیں ہے، جو لوگ لوک آیوکتہ کے تقرر کو سیاسی فیصلہ تصور کرتے ہیں دراصل وہ لوک آیوکتہ کو کمزور کرنا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ لوک آیوکتہ کو کمزور کرنے کے واحد مقصد سے انسداد کرپشن بیورو کا قیام عمل میں لایا ہے۔ ریاستی حکومت نے انسداد کرپشن بیورو پر یہ پابندی لگائی ہے کہ جس کے خلاف بھی اسے کارروائی کرنی ہے اس کے لئے بیورو کو حکومت سے منظوری لینی ہوگی۔اس وجہ سے کرپشن کے ہزاروں معاملے ریاستی حکومت کی منظوری کے بغیر التواء میں پڑے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ریاستی حکومت کی طرف سے اپنے آپ پر یہ ضابطہ لاگو کرنا ہوگا کہ انسداد کرپشن بیورو کی طرف سے جو بھی فائل کارروائی کے لئے موصول ہوتی ہے اسے مقررہ مدت کے اندر نپٹاکر خاطی افسروں کے خلاف سخت کارروائی یقینی بنائے۔

اس موقع پر سماجی کارکن ایس آر ہیرے مٹھ نے کہاکہ لوک آیوکتہ کا تقرر سیاسی وفاداریوں کی بنیاد پر اگر کیاگیا تو اس ادارے کی معتبریت مجروح ہوگی، لیکن بدقسمتی سے یکے بعد دیگرے حکومتوں نے اس عہدے کو سیاسی بنالیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ لوک آیوکتہ کے عہدے پر بھلے ہی کسی فاضل جج کا تقرر ہوتا ہے لیکن اس مرحلے میں جس قدر سیاست کی جاتی ہے وہ منظر عام آچکی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ملک کا سیاسی ، سماجی اور عدلیہ کا نظام کرپشن آلود ہوچکا ہے، ایسے منظر بھی دیکھنے کو مل رہے ہیں کہ ملک کے وزیراعظم ایک ملزم کے ساتھ نظر آرہے ہیں۔

ریاست میں غیر قانونی کانکنی کرکے کھلے عام لوٹ مچانے والے ریڈی برادران کی آؤبھگت برسر اقتدار طبقہ کرنے پر مصر ہے۔ انہیں ریڈی برادران میں سے ایک سو م شیکھر ریڈی پر الزام ہے کہ انہوں نے ایک جج کو 60کروڑ روپے کی رشوت دی۔ جبکہ وزیر اعظم مودی بلاری پہنچتے ہیں تو انہیں مجرموں کے ساتھ اسٹیج پر نظر آتے ہیں۔ اس موقع پر ریاستی اسمبلی کے سابق اسپیکر کے آر کرشنا ، وظیفہ یاب ڈی جی پی سری کمار ، سابق وزیر پروفیسر بی کے چندر شیکھر، سابق رکن کونسل رمیش بابو، سابق لوک آیوکتہ جسٹس سنتوش ہیگڈے اور دیگر موجود تھے۔

جسٹس سنتوش ہیگڈے نے اس موقع پر اپنے خیالات ظاہر کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی پر وعدہ فراموشی کا الزام لگایا۔ انہوں نے کہاکہ کمار سوامی نے انتخابات کے دوران ریاستی عوام سے وعدہ کیاتھاکہ وہ اگر اقتدار پر آئیں گے تو لوک آیوکتہ کو مضبوط کیا جائے اور انسداد کرپشن بیورو بند کیا جائے گا ، لیکن ایسا کچھ نہیں ہوا۔انہوں نے کہاکہ اس وعدے کو مکمل طور پر فراموش کرتے ہوئے کمار سوامی آج یہ کہہ رہے ہیں کہ لوک آیوکتہ برقرار رہے گا مگر ساتھ ہی انسداد کرپشن بیورو بھی اپنا کام کرتا رہے گا۔پچھلی حکومت نے جو کیا کمار سوامی اسی کو دہرارہے ہیں۔

جے ڈی ایس لیڈر رمیش بابو نے اعتراف کیا کہ پارٹی نے وعدہ کیاتھاکہ انسداد کرپشن بیورو کو بند کرکے لوک آیوکتہ کو مضبوط کیاجائے گا۔ انہوں نے کہاکہ اس کے باوجود بھی ریاستی حکومت کی طرف سے عدالت میں یہ حلف نامہ دائر کیاگیا ہے کہ لوک آیوکتہ کو مضبوط کیا جائے اور ساتھ ہی انسداد کرپشن بیورو کو بھی بند نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ عنقریب اس سلسلے میں وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمارسوامی سے ملاقات کرکے مانگ رکھی جائے گی کہ لوک آیوکتہ کے اختیارات کو مزید وسعت دی جائے۔ 
 

ایک نظر اس پر بھی