آر بی آئی بنام حکومت: مودی حکومت نے مانگے تھے3.6لاکھ کروڑ روپے ، آر بی آئی نے ردکرڈالا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th November 2018, 12:30 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی8نومبر(ایس او نیوز؍ایجنسی) مرکز کی مودی حکومت اور ریزرو بینک آف انڈیا(آر بی آئی) کے بیچ چل رہے معاملے کے بیچ انکشاف ہوا ہے کہ حکومت کی جانب سے 3.6 لاکھ کروڑ روپے کی سر پلس (اضافی) رقم مانگی گئی تھی ، جس کو سینٹرل بینک نے ٹھکرا دیا تھا۔ انڈین ایکسپریس میں شائع سنی ورما کی ایک رپورٹ کے مطابق وزارت خزانہ کی جانب سے یہ تجویز ریزرو بینک کو دی گئی تھی۔ تجویز میں ریزرو بینک کے پاس جمع کل رقم یا پونجی 9.59 لاکھ کروڑ میں سے 3.6 لاکھ کروڑ روپے کی افزود رقم مرکزی حکومت کو دینے کی بات کہی گئی تھی۔وزارت خزانہ کی جانب سے دی گئی تجویز میں کہا گیا تھا کہ اس رقم کی دیکھ ریکھ مرکزی حکومت اور ریزرو بینک مل کر کر سکتے ہیں۔ انڈین ایکسپریس نے بینک سے جڑے اپنے ذرائع کے حوالے سے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ حکومت کو بینک کے خزانے سے اتنی بڑی رقم دینے کے بعد معیشت پر برا اثر پڑے گا۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ اسی وجہ سے حکومت کی اس تجویز کو بینک کی جانب سے نامنظور کر دیا گیا۔رپورٹ کے مطابق ، اس بارے میں وزارت خزانہ نے دلیل دی تھی کی سر پلس ٹرانسفر سے جڑے موجودہ سسٹم کو بینک نے گزشتہ سال جولائی میں ‘ ایک طرفہ منظوری ‘ دے دی ، جبکہ جس میٹنگ میں یہ منظوری دی گئی اس میں بینک کے بورڈ میں حکومت کی جانب سے نامزد دو نمائندے شامل ہی نہیں تھے۔حکومت کی رائے ہے کہ کل پونجی کو لے کر سینٹرل بینک کا اندازہ ضرورت سے زیادہ ہے۔ اس وجہ سے اس کے پاس 3.6 لاکھ کروڑ روپے کی اضافی رقم ہے۔ ذرائع کے مطابق ، وزارت خزانہ نے آر بی آئی کو یہ تجویز پیش کی ہے کہ مالی سال 2017سے 2018سے اپنی سر پلس پونجی کی کل رقم حکومت کو ٹرانسفر کردے۔رپورٹ کے مطابق ، آر بی آئی نے مالی سال 2017 سے 2018 میں حکومت کو 30659کروڑ روپے کی سر پلس رقم حکومت کو ٹرانسفر کی تھی۔ وہیں 2017 ۔ 2018میں 50ہزار کروڑ روپے کی سر پلس رقم حکومت کو دی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔