’حکومت کا 2017 سے 2019 تک ‘ 3.79 لاکھ سے زائد روزگار فراہم کرنے کا ’دعویٰ ‘ 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th February 2019, 1:50 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی10فروری ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) ملک میں بے روزگاری بڑھنے پر چل رہی بحث کے درمیان مودی حکومت نے مختلف اداروں میں سال 2017 اور 2019 کے درمیان 3.79 لاکھ سے زیادہ روزگار فراہم کئے جانے کا ’دعوئ بے داد‘ کیا ہے ۔

وزیر خزانہ پیوش گوئل کی طرف سے ایک فروری کو پیش کئے عبوری بجٹ دستاویزات کے تجزیہ سے پتہ چلتا ہے کہ 1 مارچ 2019 تک حکومت کی طرف سے فراہم کردہ روزگار 3,79,544سے بڑھ کر 36,15,770پر پہنچ جائیں گی۔ یہ اعداد و شمار اس لئے بھی اہم ہے کہ کانگریس اور دیگر اپوزیشن پارٹی بے روزگاری بڑھنے کو لے کر وزیر اعظم نریندر مودی کی سخت تنقید کرر ہی ہیں۔ اگرچہ حکومت نے ان الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔

پارلیمنٹ میں صدر کے خطاب پر شکریہ تجویز پر بحث کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعظم مودی نے کہا کہ نقل و حمل، ہوٹلوں اور بنیادی ڈھانچہ سمیت رسمی اور غیر منظم شعبہ میں 6 کروڑ نئی نوکریاں پیدا کی گئی۔ زیادہ تر بھرتیاں، ریل کی وزارت، پولیس فورسز اور بالواسطہ اور بلا واسطہ انکم ٹیکس محکموں نے کی۔بجٹ کے دستاویزات میں شعبہ جاتی تفصیل پیش کی گئی ہے کہ کس طرح مرکزی حکومت کے اداروں میں ملازمتوں فراہم کی گئیں ۔ دستاویزات کے مطابق بھارتی ریلوے ایک مارچ 2019 تک سب سے زیادہ 98,999 ملازمتیں فراہم کی گئیں ۔ پولیس محکموں میں ایک مارچ 2019 تک 79,353اضافی روزگار کے مواقع فراہم کئے گئے ۔ اسی طرح محکمہ ڈاک میں ایک مارچ 2019 تک4,21,068 روزگار فراہم کئے گئے ہیں ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

سیلاب اور بارش سے کیرالہ، کرناٹک، مہاراشٹر وغیرہ بے حال، اَب دہلی پر منڈلایا خطرہ

ہریانہ کے ہتھنی كنڈ بیراج سے گزشتہ 40 برسوں میں سب سے زیادہ آٹھ لاکھ سے زیادہ کیوسک پانی جمنا میں چھوڑے جانے کے بعد دہلی اور ہریانہ میں دریاکے کنارے کے آس پاس کے علاقوں میں سیلاب کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے اور اگلے 24 گھنٹے انتہائی سنگین بتائے جا رہے ہیں۔