’حکومت کا 2017 سے 2019 تک ‘ 3.79 لاکھ سے زائد روزگار فراہم کرنے کا ’دعویٰ ‘ 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th February 2019, 1:50 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی10فروری ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا ) ملک میں بے روزگاری بڑھنے پر چل رہی بحث کے درمیان مودی حکومت نے مختلف اداروں میں سال 2017 اور 2019 کے درمیان 3.79 لاکھ سے زیادہ روزگار فراہم کئے جانے کا ’دعوئ بے داد‘ کیا ہے ۔

وزیر خزانہ پیوش گوئل کی طرف سے ایک فروری کو پیش کئے عبوری بجٹ دستاویزات کے تجزیہ سے پتہ چلتا ہے کہ 1 مارچ 2019 تک حکومت کی طرف سے فراہم کردہ روزگار 3,79,544سے بڑھ کر 36,15,770پر پہنچ جائیں گی۔ یہ اعداد و شمار اس لئے بھی اہم ہے کہ کانگریس اور دیگر اپوزیشن پارٹی بے روزگاری بڑھنے کو لے کر وزیر اعظم نریندر مودی کی سخت تنقید کرر ہی ہیں۔ اگرچہ حکومت نے ان الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔

پارلیمنٹ میں صدر کے خطاب پر شکریہ تجویز پر بحث کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعظم مودی نے کہا کہ نقل و حمل، ہوٹلوں اور بنیادی ڈھانچہ سمیت رسمی اور غیر منظم شعبہ میں 6 کروڑ نئی نوکریاں پیدا کی گئی۔ زیادہ تر بھرتیاں، ریل کی وزارت، پولیس فورسز اور بالواسطہ اور بلا واسطہ انکم ٹیکس محکموں نے کی۔بجٹ کے دستاویزات میں شعبہ جاتی تفصیل پیش کی گئی ہے کہ کس طرح مرکزی حکومت کے اداروں میں ملازمتوں فراہم کی گئیں ۔ دستاویزات کے مطابق بھارتی ریلوے ایک مارچ 2019 تک سب سے زیادہ 98,999 ملازمتیں فراہم کی گئیں ۔ پولیس محکموں میں ایک مارچ 2019 تک 79,353اضافی روزگار کے مواقع فراہم کئے گئے ۔ اسی طرح محکمہ ڈاک میں ایک مارچ 2019 تک4,21,068 روزگار فراہم کئے گئے ہیں ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

اکھلیش یادو ’ٹائیگر بام‘ کی طرح ہیں : مایاوتی 

اتر پردیش کی سیاست کے دو بڑے قد آور ملائم سنگھ یادو اور مایاوتی جب دہائیوں پرانی دشمنی بھلا کر مین پوری کی ریلی میں ایک ہی مشترکہ اسٹیج پر آئے تو ان کی تصاویر خوب وائرل ہوئیں دیکھی گئیں۔ دشمنی بھلا کر دونوں رہنماؤں نے اب اتر پردیش میں بی جے پی کو روکنے کی کوشش کرنے کی ایک طرح سے ...

نریندر مودی کی سیکورٹی کے پیش نظر وارانسی سیٹ پر بدلی گئی امیدواروں کی نامزدگی کی جگہ

وزیر اعظم نریندر مودی کی سیکوریٹی کے پیش نظر وارانسی پارلیمانی سیٹ کے انتخابات کیلئے نامزدگی مقام میں تبدیلی کی گئی ہے۔پہلے ضلع انتظامیہ نے ایڈمرل کورٹ میں نامزدگی کا اہتمام کیا تھا، لیکن اتوار کو نامزدگی مقام بدل کر کلکٹریٹ واقع رائفل کر دیا گیا۔انتظامیہ کے فیصلے کے بعد اب ...

ایس پی ۔ بی ایس پی کے پاس کانگریس کے ساتھ اتحاد کے علاوہ کوئی چارہ نہیں:سلمان خورشید

کانگریس کے سینئر لیڈر سلمان خورشید نے لوک سبھا انتخابات کے بعد اپنی پارٹی کے ایس پی۔بی ایس پی۔آر ایل ڈی کے ساتھ اتحاد ہونے کو ناگزیر قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابی نتائج آنے کے بعد اتر پردیش کے اس اتحاد کے پاس کوئی اور چارہ نہیں ہوگا۔اتر پردیش کی کانگریس یونٹ کے دو بار چیف رہ ...

آئی این ایل ڈی کے سابق ممبر اسمبلی راؤ بہادر نے تھاما کانگریس کا دامن، دپیندر ہڈا کی نامزدگی میں ہوں گے شامل

جنوبی ہریانہ کے قدآور لیڈر اور انیلو کے سابق ممبر اسمبلی راؤ بہادر سنگھ نے اتوار کو کانگریس پارٹی کا دامن تھام لیا۔راؤ بہادر سنگھ نے آج بتایا کہ 22 اپریل کو روہتک میں ایم پی دپیندر ہڈا کی نامزدگی کے موقع پر وہ اپنے 5000 حامیوں کے ساتھ موجود رہیں گے۔کانگریس صدر راہل گاندھی اور ...