بی جے پی دردناک واقعہ کی ذمہ داری لے،ناکامی کی ذمہ داری طے کی جائے,راہل گاندھی کے نشانہ پرمودی اوریوگی سرکار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th August 2017, 1:35 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،12/اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) گورکھپورکے سرکاری اسپتال میں آکسیجن کی کمی سے ہوئی 33 بچوں کی موت پر اب سیاست شروع ہو گئی ہے۔ کانگریس   کے دورے کے بعد سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو اور بی ایس پی سربراہ مایاوتی کے حملے کے بعد کانگریس نائب صدرراہل گاندھی نے کہا کہ مرنے والوں کے اہل خانہ کے ساتھ میری تعزیت ہے۔ بی جے پی حکومت کو اس واقعہ کی ذمہ داری لینی چاہئے۔ جن لوگوں کی لاپرواہی کی وجہ سے واقعہ ہوا ہے۔ انہیں سزا دی جانی چاہئے۔ یوپی میں 70 سے زیادہ بچوں کی اموات ہوئی میں نے انہیں تعزیت کرتاہوں۔کانگریس پارٹی اور ہم سب ان کے خاندان کے ساتھ کھڑے ہیں۔ تو وہیں مایاوتی نے کہا کہ اس ایونٹ کے لئے بی جے پی حکومت کی جتنی مذمت کی جائے اتنی ہی کم ہے۔اکھلیش نے یوگی حکومت پر الزام لگایا کہ مرنے والوں کے اہل خانہ کو زومبی دے کر بھگا دیا گیا، مقتول بچوں کا پوسٹ مارٹم تک نہیں ہواہے۔ انہوں نے کہاکہ یوگی حکومت نے یہ سب حقیقت کو چھپانے کے لیے کیا۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے مرنے والوں کے اہل خانہ کو20-20 لاکھ روپے معاوضہ دینے کا مطالبہ کیا۔اس سے پہلے کانگریس صدر سونیا گاندھی کی ہدایت پر چار کانگریسی لیڈر غلام نبی آزاد، راج ببر، سنجے سنگھ اور پرمود تیواری اتوار کی صبح گورکھپور پہنچے۔ کانگریس نے واقعہ کے لیے حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔ غلام نبی آزاد نے کہا کہ یہ بہت افسوسناک واقعہ ہے۔ یہ ریاستی حکومت کی ناکامی کا نتیجہ ہے۔ وزیراعلی کومعافی مانگنی چاہئے۔ تحقیقات کے لیے ممبران پارلیمنٹ کی ٹیم بنے۔ وزیرصحت استعفیٰ دیں۔

ایک نظر اس پر بھی

سنیمامیں لوگ تفریح کے لیے جاتے ہیں،قومی گیت کولازمی نہیں کیاجاسکتا؛قومی ترانہ پرسپریم کورٹ نے کہا، ہمیں اپنے ہاتھوں میں حب الوطنی نہیں رکھنی چاہیے

سنیماگھروں میں قومی گیت لازمی بنانے کے فیصلہ کے ایک سال بعد ایک موڑ آیاہے۔اب سپریم کورٹ نے سینٹرکوبتایاہے کہ وہ اس معاملے میں خودفیصلہ کرتے ہیں، ہر کام کو عدالت میں داخل نہیں کیاجاسکتاہے۔