گوگل رازداری سے دیکھ رہا ہے آپ کا مستقبل؛ گوگل صرف آپ کا لوکیشن ہی نہیں آپ کے ڈیٹا سےآپ کے مستقبل کا بھی اندازہ لگاتا ہے

Source: S O News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 29th August 2018, 7:12 PM | عالمی خبریں | سائنس و ٹیکنالوجی | ملکی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

ان دنوں، یورپ کے  ایک ملک میں اجتماعی  عصمت دری کی وارداتیں بڑھ گئی تھیں. حکومت فکر مند تھی. حکومت نے ایسے لوگوں کی جانکاری  Google سے مانگی  جو لگاتار اجتماعی  عصمت دری سے متعلق مواد تلاش کررہے تھے. دراصل، حکومت اس طرح ایسے لوگوں کی پہچان  کرنے کی کوشش کر رہی تھی. ایسا اصل میں مستقبل میں ہونے والے جرم کو روکنے کے لئے تھا. حکومت کو  ایسے ممکنہ مجرموں کے بارے میں Google سے کئی  اہم معلومات حاصل ہوئی. اُس وقت سرکار کے پاس اس کام میں جٹے اطلاعاتی اور سائبر سیکیورٹی کنسلٹنٹ ابھیشک دابھائی کہتے ہیں کہ یہ تو ایک واقعہ ہے  زیادہ چونکانے والی بات  یہ ہے کہ اگر گوگل آپ کے انٹرنیٹ سے متعلق سرگرمیوں کو ٹریک کرتا ہے، تو وہ مستقبل بھی بتا سکتا ہے. وہ بھی چند منٹوں میں.

حال ہی میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ  لوکیشن آف ہونے کے باوجود گوگل  صارفین کو ٹریک کرتا ہے. لیکن یہ تو صرف ایک لوکیشن کی بات  ہے. گوگل ہمارے ہرقدم ، ہر  حرکت اور ہر کام کو ٹریک کرتا ہے. جیسا اگر کوئی  صارف سنیچر کو  ممبئی کا ٹکٹ  کراتا ہے، وہاں پر کسی  جاپانی ریستوراں میں کھانا کھاتا ہے، تو گوگل کو مستقبل کے لئے اُس کا ٹرینڈ یعنی اُس کے رحجان کا پتہ چل جاتا ہے. ہم جو ای میل بھیجتے ہیں، نئی ملازمتوں کے لئے درخواست بھیجتے ہیں، آن لائن سامان منگواتے ہیں تو گوگل بھی ان چیزوں سے واقف ہوجاتا ہے۔

آپ کے بارے میں گوگل کو پتہ ہے یہ باتیں :
1. نام 2. جنم دن  3. صنف (مرد ہے یا عورت)  4. موبائل نمبر 5. آپ کے گوگل سرچ 6. جن ویب سائٹ پر آپ گئے . 7. آپ ابھی  کہاں کھڑے ہیں 8. پچھلے  کچھ  سالوں میں آپ کہا ں گئے/ کہاں رہے ہیں . 9. کونسا کھیل، کونسے گانے، کونسی فلمیں وغیرہ آپ کو پسند ہیں  10. کہاں کام کرتے ہیں 11. کہاں رہتے ہیں. 12. میل 13. وائس ریکارڈنگ 14. کونسے معاملات میں دلچسپی رکھتے ہیں.15 تصویر 16. فون بُک / رابطے. آپ کونسے ایپس استعمال کرتے ہیں 18.آپ کی  پسند  اور ناپسند کرتے ہیں. 20. کیا زیادہ خریدتے ہیں 20.ان دنوں آپ کس کام میں  مصروف ہیں 

ایسے چیک کرسکتے ہیں آپ اپنا ڈیٹا:
آج تک گوگل نے آپ کا کیا کیا ڈیٹا لیا ہے، اور کسے شیئر کیا ہے وہ آپ اس لنک پر جاکر چیک کرسکتے ہیں اور اسے ڈاون لوڈ بھی کرسکتے ہیں۔ https://takeout.google.com/settings/takeout

کیسے گوگل کرتا ہے آپ کی نگرانی :

1. گوگل کے ایپلیکیشن سرور پر بھیجتے ہیں لوکیشن :
گوگل کی مشینی سطح کی پروگرامنگ ایسی ہے ، جو کمپنی میں کسی بھی ایپ  کے  استعمال کرنے پر  صارف کے مقام (لوکیشن ) کو ٹریک کرتی   ہے اور اسے سرور پر بھیجتی رہتی ہے. گوگل نقشہ جات (یعنی گوگل میپس)، وائس، جی میل، کروم وغیرہ سبھی ایپس لوکیشن کو ٹریک کرتے ہیں  انہیں   Google سرور کے ساتھ  اشتراک کرتے ہیں ، اسے تاریخ (ہسٹری ) کہا جاتا ہے. لہذا اگر آپ مقام (موبائل کا لوکیشن )  بند بھی کرتے  ہیں، تب بھی   Google کو پتہ ہے کہ  آپ کہاں ہیں. ایک رپورٹ کے مطابق، Android فون ،  لوکیشن کے متعلق تفصیلات  فی گھنٹہ تقریبا 40 ان پٹ  اور آئی فون تقریبا چار ان پٹ فی گھنٹہ گوگل کو بھیجتا ہے.

2. کوکیز  پتہ کرتی ہے کہ ہم کیا سرچ کررہے ہیں:
Google کو پتہ  ہے کہ آپ انٹرنیٹ پر کیا کھوج   رہے ہیں. گوگل کی کوکیز میک  آئی ڈی اور آئی پی اڈرس کے مرکب  سے یہ پتہ لگالیا جاسکتا  ہے کہ  صارف کون ہے. بار بار ایک ہی مرکب آنے سے اس بات کا بھی  پتہ چل جاتا ہے کہ عام طور پر یہ  شخص انٹرنیٹ پر کس چیز کی کھوج کرتا رہتا ہے۔ اسی طرح، اگر آپ Gmail ID کے ساتھ لاگ ان ہوتے ہیں تو، آپ کی آئی ڈی سے سرچ کی گئی سبھی باتوں کا گوگل کو پتہ چل جاتا ہے۔

3. تصویر کے ساتھ تفصیلات بھی جاتی  ہیں
ہم گوگل کے فوٹیج  ایپ میں یا کلاؤڈ میں یہ سوچ کر فیملی فوٹو   اپ لوڈ کردیتے  ہیں. کہ یہ محفوظ ہیں، کسی سے شئیر نہیں ہوتی، لیکن یہ  گوگل  کے پاس  محفوظ ہوجاتی ہیں. نہ صرف فوٹوبلکہ  فوْٹو کی پوری  تفصیل بھی  گوگل کے پاس چلی جاتی ہے. جیسے آپ نے فوٹو کو  کتنا  ترمیم کیا ہے، کسے  ٹیگ کیا  ہے، کس شہر میں کھینچا ہے، کس وقت پر  لیا  ہے،  فوٹو کی لوکیشن کیا ہے، موبائل ڈیوائس  کا سیریل نمبر کیا ہے.

4. دوسرے  ایپ بھی مانگتے ہیں اجازت :
ہم آئے دن  اسمارٹ فونز کوتبدیل کرتے ہیں، اس لئے اپنے رابطہ کی فہرست  ( کونٹیکٹ لسٹ)  کو گوگل سے سینک کر کے رکھتے ہیں تاکہ موبائل نمبرس  ہمیشہ ای میل اکائونٹ  پر محفوظ  رہے۔ اس طرح  یہ سبھی نمبر گوگل کے پاس پہنچ جاتے ہیں۔ اسی طرح  جب ہم گوگل پلے اسٹور سے کوئی ایپ ڈائون لوڈ کرتے ہیں تب وہ فوٹو، رابطہ کی فہرست، مائکروفون، وڈیو کی رسائی طلب کرتا ہے حالانکہ متعلقہ ایپ کے کام میں اس کی ضرورت نہیں ہوتی۔ مگر ہمارے  ہاں کہتے ہی   ہمارے فون میں موجود سبھی تفصیلات ایپ بنانے والی کمپنی کے پاس بھی چلی جاتی ہے۔

5. گوگل جانتا ہے کہ آپ پیدل چل رہے ہیں یا ٹرین پر سفر کررہے ہیں:
اگر آپ اپنے فون سے سم نکال بھی دیں تب بھی وائی فائی یا ہاٹ اسپاٹ سے فون کنیکٹ کرتے ہی گوگل آپ کی ٹریکنگ شروع کردیتا ہے، ایسے میں اگر ہم الگ الگ جگہوں پر جاتے ہیں تو گوگل ہماری حرکت کی رفتار سے اس بات کا پتہ لگا سکتا ہے کہ ہم پیدل چل رہے ہیں یا کار میں ہیں یا ٹرین پر سفر کررہے ہیں۔ یہیں نہیں آپ کے وائی فائی  کی طاقت، بلو ٹوتھ کنکشن کی جانکاری، فون کی بیٹری کتنی چارج ہے، فون چارجنگ پر لگا ہے یا نہیں، اس طرح کی دیگر جانکاریاں بھی گوگل کو مل جاتی ہیں۔

6. ہم کہاں جانے والے ہیں وہ بھی گوگل جانتا ہے۔
آپ نے اکثر دیکھا ہوگا کہ آپ کی فلائٹ بُک ہوئی اور آپ کے فون کے کلینڈر میں  سفر کا ریماینڈر آنے لگتا ہے، دراصل گوگل روبوٹک الگورتھم پر کام کرتا ہے۔ ہمارے پاس جوای  میل آتے ہیں، اُس میں بھی کوڈنگ ہوتی ہے۔اب جب ہمارے ٹریول ایجنٹ ہمیں ٹکٹ ای میل کرتے ہیں تو گوگل کی الگورتھم ای میل کے الفاظ سے اس بات کا پتہ لگالیتا ہے  کہ یہ سفر کرنے کا ٹکٹ ہے. اس کے لئے، وہ میل میں PNR سے متعلق لفظ، سفرکہاں سے کہاں کا ہے ، شہر کا نام، ٹراویل کمپنی کا نام  جیسے الفاظ آتے ہی میل کو ٹریک کرلیتا ہے  اس کے بعد، یہ معلومات فون کیلنڈر پر چلی جاتی  ہے، جہاں سے ہمیں سفر کی نوٹی فیکیشن آنے لگتے ہیں ۔اس سے بھی  پتہ چلتا ہے کہ گوگل کی پہنچ   ہمارے ای میلز کے مواد تک  ہے.

7. ہماری پسند اور ناپسندکا بھی گوگل کو پتہ ہے :
 ہم Google کے ذریعے جو بھی سرچ کرتے ہیں، گوگل اپنی الگورتھم کی مدد سے اُن جانکاریوں کو ٹرینڈ بناکر کمپنیوں کو اشتہارات کے لئے  معلومات  فروخت کردیتا ہے مثال کے طور پر اگر ہم سرچ کرتے ہیں  بنگلورین ہوٹل اِن دہلی ، فوری طور پر متعلقہ ہوٹل والوں کو پیغام چلا جاتا ہے کہ  کسی نے بنگلورین ہوٹل کو سرچ کیا ہے اور وہ کس شہر سے یہ سرچ کررہا  ہے۔ گوگل اب دہلی میں واقع بنگلورین ہوٹلوں کے تعلق سے جوبھی معلومات ہوں گی وہ اُس صارف کو اسکرین پر دکھادے گا، اس طرح  سرچ کے ذریعے ایسے کروڑوں صارفین کی پسند۔ ناپسند کے تعلق سے گوگل کو بھی پتہ لگ جائے گا ۔

8 ایسے کریں اپنی تفصیلات ڈیلیٹ:
اگر ہمیں لگتا ہے کہ ہماری جانکاریاں گوگل کے پاس جاچکی ہیں اور ہم اُنہیں ڈیلیٹ کرنا چاہتے ہیں تو ہم ہمارے کونٹیکٹ کے My activity پیج پر جاکر گوگل کے الگ الگ پروڈکٹس میں ہماری جو جانکاریاں محفوظ ہیں، وہ ڈیلیٹ کرسکتے ہیں اور اگر ہم چاہتے ہیں تو یہیں سے گوگل اکاونٹ کو بھی ڈیلیٹ کیا جاسکتا ہے۔

9 گوگل خاموشی کے ساتھ دیکھ رہا ہے آپ کا مستقبل:
ان سب تفصیلات کو یکجا کرکے گوگل صارف کا  پلان بتا سکتا ہے، سرچ ہسٹری کے ٹرینڈ سے اس بات کا بھی  پتہ چل سکتا ہے کہ آپ کس چیز کی تیاری میں ہیں۔



 

ایک نظر اس پر بھی

بھارت۔ تائیوان ایس ایم ای ترقیاتی فورم تائیپی میں شروع 

vایم ایس ایم ای کے سکریٹری ڈاکٹر ارون کمار پانڈا 13 سے 17 نومبر 2018 تک چلنے والے بھارت 150 تائیوان ایس ایم ای ترقیاتی فورم کے اجلاس میں بھارتی وفد کی قیادت کررہے ہیں۔ فورم میں کل اپنے افتتاحی کلمات میں ڈاکٹر پانڈا نے کہا کہ بھارت میں ایم ایس ایم ای کی پوزیشن کلیدی اہمیت کی حامل ہے

شمالی کوریا کا میزائل پروگرام جاری ہے، رپورٹ

ایک امریکی ریسرچ آرگنائزیشن نے کہا ہے کہ اس نے شمالی کوریا کے میزائلوں سے متعلق ایسے 13 مقامات کا پتا لگایا ہے جن کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔ یہ اس بات کی تازہ ترین علامت ہے کہ شمالی کوریا کو اس کے جوہری ہتھیاروں سے دستبردار کرانے کی امریکی کوشش تعطل کا شکار ہو گئی ہے۔

غیر ملکی طلبہ کی امریکہ میں دلچسپی کیوں گھٹ رہی ہے؟

غیر ملکی طالب علموں کی آمد سے امریکی معیشت کو ہر سال42 ارب ڈالر کا فائدہ ہوتا ہے اور روزگار کی منڈی میں ساڑھے چار لاکھ ملازمتیں پیدا ہوتی ہیں۔ غیر ملکی طالب علم امریکی معیشت کے لئے بے بڑی اہمیت رکھتے ہیں۔

ہندوستان ڈیجیٹل فروغ اورترقی کے دورسے گذررہاہے ، سنگاپورمیں جاری فنٹیک فیسٹول میں وزیراعظم کاخطاب

وزیراعظم نے سنگاپورمیں جاری فنٹیک فیسٹول میں خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ یہ ہندوستان پر چھاجانے والے مالیاتی انقلاب اور ہندوستان کے 1.3 ارب عوام کی زندگی میں بہتر تبدیلیوں کا اعتراف ہے۔ہندوستان اور سنگاپور ہندوستانی اور آسیان ملکوں کے چھوٹے اور اوسط درجے کے کاروباری اداروں کوایک ...

سنگاپور کے وزیراعظم لی سین لونگ سے وزیراعظم نریندر مودی کی ملاقات

وزیر اعظم نریندر مودی نے بدھ کو سنگاپور کے وزیراعظم لی سین لونگ سے ملاقات کی۔ دونوں رہنماؤں نے مالیاتی ٹیکنالوجی میں تال میل اور علاقائی اقتصادی اتحاد سمیت کئی مسائل پر بات چیت کی۔ مودی نے فنٹیس فیسٹیول سے خطاب کر کے بدھ کو دو روزہ سنگاپوردورہ کا آغاز کیا ۔یہ فیسٹیول مالیاتی ...

رقم خرچ کرکے چاند کی سیرکرنا اب ہوگیا ممکن؛ جاپان کا ارب پتی چاند کے چکر لگانے والا پہلا بزنس مین ہوگا

اب پیسہ دے کر کوئی بھی شخص چاند کا چکر لگا سکتا ہے، جی ہاں!  بی بی سی کی ایک رپورٹ پر بھروسہ کریں تو   42 سالہ جاپانی   "یوساکا مائیزاوا " اب پہلا شخص ہوگا جو اپنی رقم خرچ کرکے  چاند کی سیر کرے گا۔

رین سم ویئر وائرس ونڈوز ایکس پی کمپیوٹرز کو نشانہ بنا سکتا ہے

سائبر سیکیورٹی کے ماہرین نے انتباہ کیا ہے کہ دنیا بھر میں کمپیوٹر کا استعمال کرنے والے ہزاروں افرادحالیہ دنوں میں بڑے پیمانے پر وائرس کے حملے کے بعد بدستور خطرے میں ہیں۔ رین سم ویئر نامی اس وائرس کے حملے نے دنیا بھر کی حکومتوں اور کمپنیوں کو نشانہ بنایا ہے۔

نئے مسافر طیاروں میں نشستوں کا درمیانی فاصلہ دو انچ کم ہوگا

امریکن ایئر لائنز اپنے فلیٹ میں شامل کیے جانے والے نئے طیاروں کی اکانومی کلاس کی نشتوں کے درمیانی فاصلے کو مزید دو انچ کم کررہی ہے، جس کا مقصد طیارے میں سیٹوں کی تعداد بڑھانا ہے۔ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ امریکن ایئر لائنز کے لیے تیار کیے جانے والے بوئنگ 737 جیٹ طیاروں میں ...

گوڈیڈی نے نیا مارکیٹنگ مہم لانچ کیا

چھوٹے بزنس، آزاد وینچرز کے لئے وقف دنیا کے سب کلاؤڈ پلیٹ فارم، گوڈیڈی نے آج بھارت کے چھوٹی تجارتوں کو روایتی بازار کے حدود سے آگے بڑھ کر انٹرنیٹ پر کاروبار کرنے کے فوائد کے بارے میں تعلیم دینے کے لئے ایک نیا انٹیگریٹیڈ مارکیٹنگ مہم لانچ کیا۔ اس انٹیگریٹیڈ مہم میں پانچ علاقائی ...

اوپپونے نیاسیلفی ایکسپرٹ ایف 3 پلس لانچ کیا

مسلسل بہتر ہو رہے گلوبل اسمارٹ فون برانڈ، اوپپو نے نیا سیلفی ایکسپرٹ ایف 3 پلس لانچ کرکے 'گروپ سیلفی' ٹرینڈ متعارف کرایا۔ اس کی قیمت 30990 روپے ہے۔ ایف 3 پلس میں برانڈ کا پہلا ڈوئل فرنٹ سیلفی کیمرہ ہے، جس نے پہلے 120 ڈگری وائڈ اینگل گروپ سیلفی کیمرے لگا ہے۔ ایف 3 پلس کی پہلی فروخت 1 ...

سابق ایم پی پرفل کمار مہیشوری کی موت

راجیہ سبھا کے سابق رکن، یونائٹیڈ نیوز آف انڈیا)(یو این آئی) کے چیرمین (ایمریٹس)اور نوبھارت اخبار گروپ کے چیف ایڈیٹر پر فل کمار مہیشوری کا یہاں انتقال ہوگیا۔

جیل میں بندہیرا گروپ کی ڈائریکٹر نوہیرانے فوٹو شاپ جعلسازی سے عوام کو دیا دھوکہ۔ گلف نیوز کا انکشاف

دبئی سے شائع ہونے والے کثیر الاشاعت انگریزی اخبار گلف نیوز نے ہیرا گولڈ کی ڈائرکٹر نوہیرا شیخ کی جعلسازی کا بھانڈہ پھوڑتے ہوئے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ    کس طرح اس نے فوٹو شاپ کا استعمال کرتے ہوئے بڑے بڑے ایوارڈ حاصل کرنے اور مشہور ومعروف شخصیات کے ساتھ اسٹیج پر جلوہ افروز ...

کہ اکبر نام لیتا ہے۔۔۔۔۔۔۔!ایم ودود ساجد

میری ایم جے اکبر سے کبھی ملاقات نہیں ہوئی۔میں جس وقت ویوز ٹائمز کا چیف ایڈیٹر تھا تو ان کے روزنامہ Asian Age کا دفتر جنوبی دہلی میں‘ہمارے دفتر کے قریب تھا۔ مجھے یاد ہے کہ جب وہ 2003/04 میں شاہی مہمان کے طورپرحج بیت اللہ سے واپس آئے تو انہوں نے مکہ کانفرنس کے تعلق سے ایک طویل مضمون تحریر ...

ملک کے موجودہ حالات اور دینی سرحدوں کی حفاظت ....... بقلم : محمد حارث اکرمی ندوی

   ملک کے موجودہ حالات ملت اسلامیہ ھندیہ کےلیے کچھ نئے حالات نہیں ہیں بلکہ اس سے بھی زیادہ صبر آزما حالات اس ملک اور خاص کر ملت اسلامیہ ھندیہ پر آچکے ہیں . افسوس اس بات پر ہے اتنے سنگین حالات کے باوجود ہم کچھ سبق حاصل نہیں کر رہے ہیں یہ سوچنے کی بات ہے. آج ہمارے سامنے اسلام کی بقا ...

پارلیمانی انتخابات سے قبل مسلم سیاسی جماعتوں کا وجود؛ کیا ان جماعتوں سے مسلمانوں کا بھلا ہوگا ؟

لوک سبھا انتخابات یا اسمبلی انتخابات قریب آتے ہی مسلم سیاسی پارٹیاں منظرعام  پرآجاتی ہیں، لیکن انتخابات کےعین وقت پروہ منظرعام سےغائب ہوجاتی ہیں یا پھران کا اپنا سیاسی مطلب حل ہوجاتا ہے۔ اورجو پارٹیاں الیکشن میں حصہ لیتی ہیں ایک دو پارٹیوں کو چھوڑکرکوئی بھی اپنے وجود کو ...

بھٹکل میں سواریوں کی  من چاہی پارکنگ پرمحکمہ پولس نے لگایا روک؛ سواریوں کو کیا جائے گا لاک؛ قانون کی خلاف ورزی پر جرمانہ لازمی

اترکنڑا ضلع میں بھٹکل جتنی تیز رفتاری سے ترقی کی طرف گامزن ہے اس کے ساتھ ساتھ کئی مسائل بھی جنم لے رہے ہیں، ان میں ایک طرف گنجان  ٹرافک  کا مسئلہ بڑھتا ہی جارہا ہے تو  دوسری طرف پارکنگ کی کہانی الگ ہے۔ اس دوران محکمہ پولس نے ٹرافک نظام میں بہتری لانے کے لئے  بیک وقت کئی محاذوں ...

غیر اعلان شدہ ایمرجنسی کا کالا سایہ .... ایڈیٹوریل :وارتا بھارتی ........... ترجمہ: ڈاکٹر محمد حنیف شباب

ہٹلرکے زمانے میں جرمنی کے جو دن تھے وہ بھارت میں لوٹ آئے ہیں۔ انسانی حقوق کے لئے جد وجہد کرنے والے، صحافیوں، شاعروں ادیبوں اور وکیلوں پر فاشسٹ حکومت کی ترچھی نظر پڑ گئی ہے۔ان لوگوں نے کسی کو بھی قتل نہیں کیا ہے۔کسی کی بھی جائداد نہیں لوٹی ہے۔ گائے کاگوشت کھانے کا الزام لگاکر بے ...