کرناٹک اسمبلی انتخابات: ناراض دعویداروں کو منالیا جائے گا: ڈاکٹر جی پرمیشور

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th April 2018, 1:11 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 16؍اپریل(ایس او نیوز)کانگریس امیدواروں کے اعلان کے بعد بعض حلقوں میں ٹکٹ کے دعویداروں کی ناراضی کے متعلق کے پی سی سی صدر ڈاکٹر جی پرمیشور نے کہا کہ ناراض لیڈروں سے بات چیت کرکے انہیں مطمئن کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ آج اپنی رہائش گاہ پر اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ڈاکٹر پرمیشور نے کہاکہ ہر کانگریسی کا یہی مقصد ہے کہ پارٹی کو ریاست میں دوبارہ اقتدار پر لایا جائے۔اس کے لئے پارٹی نے تمام امکانات کا جائزہ لینے کے بعد ہی ٹکٹ کا اعلان کیا ہے۔ ٹکٹ ہر دعویدار کو دینا کسی پارٹی کے بس کی بات نہیں ، جو لوگ ٹکٹ سے محروم ہوئے ہیں ان کی ناراضی بھی فطری ہے، ان تمام کو طلب کرکے بات چیت کی جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ ہر انتخاب میں تمام حلقوں سے متعدد دعویدار ٹکٹ کے لئے کھڑے ہوجاتے ہیں ، ان تمام کو موقع نہیں دیا جاسکتا۔ جن لوگوں کو ٹکٹ نہیں ملا ہے ، پارٹی انہیں متبادل مواقع ضرور فراہم کرے گی۔ انہوں نے ان خبروں کومسترد کردیا کہ پارٹی کے ٹکٹوں کے اعلان کے بعد بڑے پیمانے پر بغاوت چھڑ گئی ہے، ٹکٹ سے محروم امیدواروں کی ناراضی کو فطری قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ آنے والے دو چار دنوں میں یہ ماحول اپنے آپ ٹھیک ہوجائے گا۔ چھ اسمبلی حلقوں کے لئے امیدواروں کا اعلان نہ کئے جانے کے بارے میں ڈاکٹر پرمیشور نے کہا کہ تکنیکی وجوہات کے سبب یہ اعلان نہیں کیاجاسکا۔ایک دو دن میں یہ اعلان بھی کردیا جائے گا۔ شہر کے شانتی نگر اسمبلی حلقے سے این اے حارث کو ٹکٹ دئے جانے کی ڈاکٹر پرمیشور نے تصدیق کی اور کہاکہ ان کا نام بھی قطعی فہرست میں آجائے گا۔ صدر کانگریس راہل گاندھی کے دوبارہ کرناٹک دورے کے متعلق ڈاکٹر پرمیشور نے کہاکہ جن آشیرواد یاترا کے پہلے مرحلے کو راہل گاندھی نے بڑی کامیابی کے ساتھ مکمل کیا ہے، انتخابی سرگرمیاں تیز ہونے کے بعد 26؍ اپریل سے راہل گاندھی دوبارہ ریاست کا دورہ شروع کریں گے۔ اس روز وہ کورگ اور شمالی کینرا اضلاع کا دورہ کریں گے اس کے بعد 3اور 4مئی کو ریاست آئیں گے اور پھر انتخابی مہم کے آخری مرحلے میں 8,9 اور 10 مئی کو ریاست میں مقیم رہیں گے، 10مئی کو بلگاوی میں ایک بہت بڑے جلسۂ عام سے خطاب کرکے ریاست کی انتخابی مہم کوختم کریں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

کیا میسورو میں سدارامیا کے خلاف جنتا دل (ایس )نے بی جے پی کے ساتھ ہاتھ ملایا ہے ؟

ایسا لگتا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی اور جنتا دل(ایس)نے میسورو میں صرف چامنڈیشوری سیٹ کے تعلق سے ہی نہیں بلکہ میسورو ضلع کی تمام اسمبلیوں سیٹوں پر وزیراعلیٰ سدارامیا کے خلاف آپس میں گٹھ جوڑ کرلیا ہے۔

کرناٹک انتخابات:بی جے پی نے سات امیدواروں کی چوتھی فہرست جاری کی

کرناٹک انتخابات کے سلسلہ میں بی جے پی کی سنٹرل کمیٹی نے سات امیدواروں کی چوتھی فہرست جاری کی ہے ۔جی آر پراوین پاٹل کو بھدراوتی حلقہ،جگدیش کو یشونت پورحلقہ،للیش ریڈی کو بی ٹی ایم لے آوٹ حلقہ،شریمتی ایچ لیلاوتی کو رامانگرم حلقہ،شریمتی نندنی گوڑا کو کنکاپور حلقہ،ایچ کے سریش کو ...

مواخذہ مسئلہ: کانگریس کو دستورپر سوال اٹھانے کا کوئی اخلاقی حق نہیں :اننت کمار

پارلیمانی امور کے وزیرو بی جے پی کے سینئر لیڈر اننت کمار نے آج کہا ہے کہ کانگریس جس نے ملک میں ایمرجنسی نافذ کی تھی،کو ملک کی دستوری اتھارٹی اورجمہوریت پر سوال اٹھانے کا کوئی اخلاقی حق حاصل نہیں ہے ۔

کرناٹک میں بی جے پی کا الیکشن کمیشن پرجانبداری برتنے کا الزام 

بی جے پی نے انگور کھٹے کی مانند اب یہ الزام لگارہی ہے کہ الیکشن کمیشن ریاست میں کانگریس کی جیت کے لئے کام کررہا ہے۔ کرناٹک میں بی جے پی امور کے انچارج مرلی دھر راؤ نے آج ایک اخباری کانفرنس میں الزام لگایا کہ ریاستی الیکشن کمیشن کانگریس کی ایماء پر متحرک ہے،

امبریش کے معاملے پر تبصرے سے سدرامیا کا انکار

منڈیا اسمبلی حلقے سے کانگریس امیدوار کے طور پر میدان میں اترنے میں سابق وزیر اور اس حلقے کے موجودہ رکن اسمبلی امبریش کے تذبذب پر تبصرہ کرنے سے وزیراعلیٰ سدرامیا نے انکار کردیا ہے۔

کرناٹک لوک آیوکتہ وشواناتھ شٹی خدمات سے رجوع

کرناٹک لوک آیوکتہ وشواناتھ شٹی جن پر 7؍مارچ کو ان کے چیمبر میں حملہ آور کی جانب سے چاقو سے حملہ کرتے ہوئے زخمی کردیا گیا تھا، اسپتال میں علاج کے بعد آج خدمات سے رجوع ہوگئے ۔جستس شٹی کے سینہ ، ہاتھ اور گردن پر چاقو سے حملہ کیا گیا تھا ۔