درگا پوجا کمیٹیوں کو فنڈز دینے کا معاملہ: عدالت کا مداخلت سے انکار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th October 2018, 9:13 PM | ملکی خبریں |

کولکاتہ ،10؍ اکتوبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) کلکتہ ہائی کورٹ نے مغربی بنگال میں 28 ہزار درگا پوجا کمیٹیوں کو 10۔10 ہزار روپے دینے کے ریاستی حکومت کے فیصلے میں مداخلت سے انکار کر دیا۔عدالت کی طرف سے درگا پوجا کمیٹیوں کو فنڈز دینے کے مغربی بنگال حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی مفاد عامہ کی عرضی کو ڈسٹریشن کئے جانے کے ساتھ ہی فنڈز تقسیم پر لگی عارضی روک ختم ہو گئی ہے۔چیف جسٹس دیباشیش کر گپتا اور جسٹس سمپا حکومت کی بینچ نے کہا کہ ریاستی حکومت کے اخراجات کے سلسلے میں فیصلے لینے کے لئے مقننہ مناسب اسٹیج ہے۔یہ بتاتے ہوئے کہ درگا پوجا کمیٹیوں کو فنڈز دینے کے مغربی بنگال حکومت کے فیصلے پر اس سطح پر عدالت مداخلت نہیں کرنا چاہتی ہے، بنچ نے کہا کہ آگے موقع آنے پر عدالت اس میں مداخلت کر سکتی ہے۔اٹارنی کشور دتہ نے بینچ کے سامنے دلیل دی تھی کہ اس پیسے کا استعمال ٹریفک سیفٹی مہم کے تحت پولیس کی مدد کے لئے کیا جانا ہے اور اس کا استعمال مذہبی کام میں نہیں ہو رہا۔عرضی دائر کرنے والے نے ریاست کی درگا پوجا کمیٹیوں کو 28 کروڑ روپے دینے کے ریاستی حکومت کے فیصلے کو چیلنج دیتے ہوئے دعوی کیا تھا کہ یہ صرف درگا پوجا کمیٹیوں کو عطیہ ہے اور اس کا کوئی عوامی رسائی نہیں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

گجرات کیس:مودی اور امت شاہ کو بہار میں انتخابی مہم نہیں کرنے دیں گے: کانگریس 

گجرات معاملے کو لے کر بہار کی سیاسی فضا گرمائی ہوئی ہے۔ جہاں ایک طرف بی جے پی، کانگریس پر بہار کے لوگوں کے خلاف ہوئے تشدد کے لئے ذمہ دار بتا رہی ہے، وہیں اب کانگریس نے اپنے تیور تیکھے کر دیئے ہیں۔

گنگاصفائی بھی جملہ نکلا،آلودگی بڑھنے کی رپورٹ پرکانگریس کاحملہ

کانگریس نے گزشتہ چار سال کے دوران گنگا میں آلودگی بڑھنے کی خبرکے سلسلے میں بھارتیہ جنتا پارٹی پر طنز کرتے ہوئے جمعرات کو کہا ہے کہ 2014کے عام انتخابات میں صاف شفاف گنگا کے وعدے کے ساتھ اقتدار میں آئی مودی حکومت کا ’نمامی گنگا‘پروگرام بھی جملہ ثابت ہوا ہے۔