لوک سبھا میں مفرور اقتصادی جرائم بل پیش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th March 2018, 11:19 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی12مارچ (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا ) حکومت نے آج لوک سبھا میں مفرور اقتصادی جرائم بل 2018 پیش کیا جس میں اقتصادی جرائم سے متعلق سزا کی کارروائی شروع ہونے کا امکان یا ان کے تحت اقدامات کے زیر التواء رہنے کے دوران ملزمان کے ملک چھوڑ کر چلے جانے کا مسئلہ حل نکالنے کا خاکہ تیار کیا گیا ہے۔ وزیر شیو پرتاپ شکلا نے آج لوک سبھا میں بل پیش کیا۔ بل میں مفرور اقتصادی مجرم اعلان ہونے پر خصوصی عدالت کی طرف سے اس شخص کی بھارت میں یا بھارت کے باہر کوئی جائیداد جو مجرم کی ملکیت ہے یا نہیں اور جو اس کی گمنام پراپرٹی ہے ، اس پر قبضہ کرنے کا حکم دینے کا قانون ہے۔ بل میں تجویز ہے کہ ایک سو کروڑ روپے یا اس سے زیادہ کی رقم کے ایسے جرم کرنے کے بعد جو شخص فرار ہے یا ہندوستان میں سزا سے بچنے یا اس کا سامنا کرنے کے لئے بھارت واپس آنے سے انکار کرتا ہے، اس کے اثاثوں اور جرائم سے حاصل وسائل کا قرق کیا جاسکتا ہے ۔اس میں کسی مفرور اقتصادی مجرم کا کوئی دعوی کرنے یا دفاع نہیں کرنے کی بھی تجویز بھی شامل ہے ۔بل کے مقاصدمیں کہاگیاہے کہ ایسے کئی معاملے سامنے آئے ہیں جس میں لوگ اقتصادی جرم کی سزایاکارروائی وائی شروع ہونے کے امکان میں یا کبھی کبھی اقدامات کے زیر التواء رہنے کے دوران بھارتی عدالتوں کے دائرہ اختیار سے نقل مکانی کر گئے ہیں۔ غور طلب ہے کہ یہ بل وجے مالیا، نیرومودی اور میہول چوکسی جیسے کاروباریوں کے ذ ریعہ بینکوں کا اربوں روپے کا قرض نہیں لوٹانے اور ملک سے باہر چلے جانے کے پس منظر میں لایا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

مالیگاؤں ۲۰۰۸ ء بم دھماکہ معاملہ،زخمیوں کا علاج کرنے والے ڈاکٹروں کی گواہی کا سلسلہ جاری، ڈاکٹر سعید فیضی نے گواہی بھتہ پبلک ویلفئر فنڈ میں عطیہ کردیا

مالیگاؤں ۲۰۰۸ ء بم دھماکہ معاملے میں خصوصی این آئی اے عدالت میں بم دھماکوں میں زخمی ہونے والوں کا علاج کرنے والے ڈاکٹروں کی گواہی بددستور جاری ہے جس کے دوران آج مالیگاؤں کے مشہور و سینئر ڈاکٹر سعید فیضی کی گواہی عمل میں آئی

دواؤں کا معیار اور نوجوانوں کو روزگار انتہائی اہم مسئلہ: پروفیسر عبداللطیف، آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس (اسٹوڈنٹس وِنگ) کی تشکیل

آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس کی ایک میٹنگ آج ابن سینا اکیڈمی، دودھ پور، علی گڑھ میں منعقد ہوئی، جس کی صدارت پروفیسر عبداللطیف (قومی نائب صدر، آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس، اکیڈمک وِنگ) نے کی۔ جبکہ نظامت کے فرائض ڈاکٹر سنبل رحمن (قومی صدر، آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس، خواتین ...

سکھ فسادات: میرے خلاف نہ کوئی ایف آئی آر اور نہ ہی چارج شیٹ، کمل ناتھ نے کہا،بی جے پی جھوٹ پھیلارہی ہے

مدھیہ پردیش کے وزیراعلیٰ کمل ناتھ نے 1984 کے سکھ فسادات پر اٹھ رہے سوالوں پر جواب دیاہے۔کمل ناتھ نے کہاہے کہ 1984 کے سکھ فسادات میں ان کے خلاف کوئی بھی ایف آئی آر یا چارج شیٹ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ اب اس مسئلے کواٹھانے کے پیچھے صرف سیاست ہے۔انہوں نے کہاکہ جس وقت میں کانگریس کا جنرل ...

بریلی: ایک ساتھ 58 ہندو، مسلم اور سکھ لڑکیوں کی شادی

اجتماعی شادیوں کے بارے میں تو آپ بہت سن لیں گے لیکن یوپی کے بریلی میں ایک منفرد شادی دیکھنے کوملی ہے۔بریلی میں منعقد ایک پروگرام میں ایک ساتھ ہندو، مسلم اور سکھ کمیونٹی کی غریب لڑکیوں کی شادی کرائی گئی۔ایک ساتھ جب گھوڑی پر بیٹھ کر 58 دولہا نکلے تو ہر کوئی اس منفرد بارات کو ...

1984-1993-2002فسادات: اقلیتوں کو نشانہ بنانے میں سیاسی رہنماؤں اور پولیس کی ملی بھگت تھی : ہائی کورٹ

دہلی ہائی کورٹ نے 1984سکھ مخالف فسادات معاملے کے فیصلے میں دوسرے فسادات کولے کر بھی بے حد سخت تبصرہ کیاہے ۔ جسٹس ایس مرلی دھر اور جسٹس ونود کوئل کی بنچ نے پیر کو سجن کمار کو فسادات پھیلانے اور سازش رچنے کا مجرم قرار دیتے ہوئے عمر قید کی سزا سنائی ۔ کورٹ نے کہا کہ سال 1984 میں نومبر کے ...