فرانس کی خلیجی بحران کے حل کے لیے کویتی مساعی کی تائید

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th July 2017, 12:28 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

پیرس،16جولائی(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)فرانس نے خلیجی ملکوں کے درمیان پائے جانے والے سفارتی تنازع کے حل کے لیے کویت کی ثالثی کی مساعی کی مکمل تائید اورحمایت کرتے ہوئے فریقین پر بات چیت کے ذریعے تنازعات کے حل پر زور دیا ہے۔العربیہ کے مطابق فرانسیسی وزیرخارجہ جو ایف لوڈریان نے ہفتے کو اپنے دورہ سعودی عرب کے دوران سعودی ہم منصب عادل الجبیر سے ملاقات کے بعد ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔ انہوں نے دہشت گردی کے خلاف سعودی عرب کی خدمات کی تعریف کی۔ جون ایف لوڈریان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ اور انتہا پسندانہ نظریات کے خاتمے کے لیے سعودی عرب کی خدمات کو ہمیشہ قدر کی نگاہ سے دیکھا جائے گا۔جدہ میں نیوز کانفرنس سے خطاب میں فرانسیسی وزیرخارجہ نے کہا کہ ہم کویت کی ثالثی کی بھرپور تائید اور حمایت کرتے ہیں۔ ہم ایک معاون کا کردار ادا کرنا چاہتے ہیں۔ توقع ہے کہ کویت کی ثالثی کی مساعی خلیجی ملکوں کیدرمیان جاری سفارتی تنازع کے حل کا موثر ذریعہ ثابت ہوں گی۔انہوں نے خلیجی ملکوں پر مسائل کے حل کے لیے بات چیت پر زور دیا۔ لوڈریان کا کہنا تھا کہ فرانس تنازع میں شامل تمام ممالک سے بات چیت اور حالات کو پرسکون رکھنے کا خواہاں ہے۔ پیرس خلیجی ملکوں کے مابین بات چیت کی بحالی کے لیے ایک سہولت کارکاکردار ادا کرتے ہوئے کویتی مساعی کی تائید اور حمایت کرتا ہے۔فرانسیسی وزیرخارجہ نے کہا کہ ان کا ملک خلیجی ریاستوں کے درمیان بامقصد بات چیت کی بحالی کے لیے کشیدگی کم کرنے اور بات چیت کا ماحول پیدا کرنے کاخواہاں ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

شیخ خلیفہ ایکسلینس ایوارڈ 2018 ۔ تُمبے گروپ کو ملے 4 ایوارڈز

دبئی میں قائم جنوبی کینرا کے معروف کاروباری تُمبے گروپ کو’شیخ خلیفہ ایکسلینس ایوارڈ 2018‘کے تحت جملہ 4ایوارڈز سے نوازا گیا ۔ اس طرح ایک ہی سال میں چار ایوارڈ پانے کا اعزاز اس ایوارڈ کی تاریخ میں پہلی بار تُمبے گروپ کو حاصل ہوا ہے۔

یمن : حوثیوں کے لیے کام کرنے والے ایرانی جاسوس عرب اتحاد کے نشانے پر

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے تعز شہر کے مشرقی حصّے میں جاسوسی کے ایک مرکز کو نشانہ بنایا۔ اس مرکز میں ایرانی ماہرین بھی موجود ہوتے ہیں جو باغی حوثی ملیشیا کے لیے کام کرتے ہیں۔

شاہ سلمان اور صدر السیسی کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ

سعودی عرب کے فرمانروا خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود اور مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے درمیان ٹیلیفون پر رابطہ ہوا ہے۔ اس موقع پر شاہ سلمان نے مصر کی سلامتی اور استحکام کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔