غریب طلباء کے بعد اب آئندہ تعلیمی سال سے عام زمرے کے طلبہ کیلئے بھی دیئے جائینگے مفت لیپ ٹاپ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th January 2018, 12:30 PM | ریاستی خبریں |

ٹمکور،9 ؍جنوری(ایس او نیوز)درج فہرست ذات اور قبائلوں کے طلبہ کے لئے حکومت کی طرف سے دئے جارہے مفت لیپ ٹاپ کی سہولت آئندہ تعلیمی سال سے عام زمرے کے طلبہ کے لئے بھی فراہم کی جائے گی۔یہ بات ریاستی وزیر برائے قانون ٹی بی جئے چندرا نے کہی، انہوں نے یہاں ٹمکور ضلع انتظامیہ، ڈپارٹمنٹ آف کلجویٹ ایجوکیشن اور محکمہ تکنیکی تعلیم کے مشترکہ زیر اہتمام شہر کے ڈاکٹر گبی ویرنا کلا کشیترا میں منعقدہ سال2016-17 کے خصوصی منصوبے اور گریجنوں کے منصوبے کے تحت درج فہرست ذات اور درج فہرست قبائلوں کے طلبہ میں مفت لیپ ٹاپ تقسیم کرنے کے بعد  خطاب کررہے تھے ۔ 

اپنے خطاب میں انہوں نے  کہا  کہ دنیا بھر میں انفارمیشن ٹکنالوجی کے شعبے میں ریاست کو  اول مقام حاصل ہے، یہاں کے غریب طلبہ میں بھی انفارمیشن ٹکنالوجی کی تعلیم کو عام کرنے کے مقصد سے ریاستی حکومت نے ملک بھر میں پہلی مرتبہ درج فہرست ذات اور درج فہرست قبائلوں کے بچے جو پی یو سی سال دوم اور ڈپلومہ کی تعلیم حاصل کررہے   ہیں، انہیں مفت لیپ ٹاپ فراہم کررہی ہے، یہ سہولت آئندہ تعلیمی سال سے عام زمرے کے طلبہ کو بھی اہم کی جائے گی، جس کیلئے فی الحال 225 کروڑ روپئے مختص کئے گئے ہیں، وزیر موصوف نے بتایا کہ ضلع میں19 سرکاری فرسٹ گریڈ کالج اور 2 سرکاری پالی ٹکنیک کالجوں کے1676 طلبہ میں مفت لیپ ٹاپ تقسیم کئے جارہے ہیں۔اس سے درج فہرست ذات اور قبائلوں کے طلبہ کو عام زمرے کے طلبہ کے ساتھ مقابلہ کرنے میں اور معیاری تعلیم حاصل کرنے میں مدد ملے گی، انہوں نے بتایا کہ پچھلے 4 سالوں سے ریاستی حکومت نے درج فہرست ذات اور قبائلوں کی ترقی کے لئے اب تک86 ہزار کروڑ روپئے خرچ کئے ہیں۔

جلسہ کی صدارت  کرتے ہوئے ٹمکور شہری اسمبلی حلقہ کے رکن ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا کہ ریاستی حکومت نے طلبہ کی سہولت کے لئے اریوڈ، ودیا سری جیسے اہم منصوبوں کو جاری کیا ہے، آئندہ دنوں میں ڈیجیٹل کلاس بھی شروع کئے جائیں گے، جس سے طلبہ کو نصابی تعلیم کے ساتھ کمپیوٹر کی تعلیم بھی دی جاسکتی ہے۔اس موقع پر اڈیشنل ڈائرکٹر ملیشورپا، رمیش بابو، سی انیتا اور دیگر موجودتھے۔

ایک نظر اس پر بھی

وقف بورڈ انتخابات: دولت سے نہیں اصول وضوابط کے تحت ہوں گے:ضمیراحمدخان

ریاستی وقف بورڈ کے انتخابات جلد کروانے کا کوئی امکان نظر نہیں آتا ۔ پچھلے ڈھائی سال سے اڈمنسٹریٹر کے ذریعہ بورڈ چلایا جارہا ہے ۔وقف قانون کے تحت اتنی دیر تک بورڈ کیلئے اڈمنسٹریٹر مقرر کرنے کی گنجائش ہی نہیں۔

باگلکوٹ شکر کارخانے میں دھماکہ؛ چھ ہلاک؛ کئی زخمی

  کرناٹک کے باگلكوٹ ضلع کے مدھول میں نراني شوگر لمیٹڈ میں بوائلر میں  دھماکہ   ہونے کے نتیجے  میں 6 افراد کی جان چلی گئی، جبکہ نو سالہ بچہ سمیت  آٹھ  لوگ شدید زخمی ہو گئے۔ شکر کا یہ  کارخانہ  نرانی  یونٹ کا حصہ ہے اوریہ  نراني بھائیوں اورسابق بی جے پی وزیر مرگیش  نراني اور ...

کاروار: کائیگا پلانٹ توسیعی منصوبہ۔ عوامی احتجاج کے درمیان افسران نے منعقد کیا عوامی اجلاس

کائیگا جوہری توانائی اسٹیشن میں مزید دو یونٹس کا اضافہ کرنے کے منصوبے پر عوامی رائے جاننے کے لئے سرکاری افسران نے کائیگا ٹاؤن شپ میں اجلاس منعقد کیا جبکہ ٹاؤن شپ سے باہر موجودہ اور سابق اراکین اسمبلی کی قیادت میں سیکڑوں افراد نے توسیعی منصوبے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔

بنگلورومیٹرو برڈج میں خرابی کا نائب وزیراعلیٰ پرمیشور نے معائنہ کیا

شہر کے ایم جی روڈ پر ٹرینٹی سرکل کے قریب ایم جی روڈ بیپنا ہلی میٹرو روٹ کے پلر نمبر 155کے قریب ایک بیم میں دراڑ کا آج نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور نے معائنہ کیا اور کہاکہ اس سلسلے میں مرمت کا کام جاری ہے۔