تجارتی گھرانوں کے قرضہ جات معاف کرنے میں فراخدلی،کسانوں کے قرضہ جات معاف کرنے سے ملک ڈوب جائے گا: رمیش کمار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th June 2017, 11:28 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،16؍جون(ایس او نیوز) ریاستی وزیر صحت رمیش کمار نے مرکزی حکومت کی طرف سے بڑے بڑے کارپوریٹ گھرانوں کے قرضہ جات معاف کئے جانے کا معاملہ اٹھایا اور اسمبلی میں کہاکہ مرکزی حکومت نے انتہائی فراخدلی سے بڑے بڑے کارپوریٹ گھرانوں کے قرضہ جات معاف کردئے ، لیکن غریب کسانوں کے قرضہ جات معاف کرنے کا سوال اٹھایا گیا تو ایسا تاثر دینے کی کوشش کررہی ہے کہ ان کسانوں کے قرضہ جات معاف کردئے گئے تو ملک ڈوب جائے گا۔ آج اسمبلی میں مختلف محکموں کی مانگوں پر بحث کے دوران کمار سوامی کی تقریر میں مداخلت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کسانوں کے قرضہ جات کی معافی کا مسئلہ ریاست میں موضوع بحث بنا ہوا ہے، ہر کوئی اس پر بول رہا ہے، ریاست کے کوآپریٹیو اداروں سے صرف 20 فیصد کسانوں نے قرضہ حاصل کیا ہے،80 فیصد قرضے قومی بینکوں سے حاصل کئے گئے ہیں۔ کوآپریٹیو بینکوں کے قرضوں کو اگر معاف کیا گیا تو کسانوں کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ مرکزی حکومت اگر ان کسانوں کے قرضہ جات معاف کردے تو کافی لوگوں کو فائدہ ہوگا۔ کارپوریٹ طبقے پر اپنی شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے رمیش کمار نے کہاکہ ایک دور تھاکہ جب اس ملک پر انگریزوں کی ایسٹ انڈیا کمپنی راج کررہی تھی، آج یہ دور ہے کہ مختلف کمپنیاں ملک پر راج کررہی ہیں۔ملک کا وزیر اعظم بھی وہی بنتا ہے، جسے یہ کمپنیاں چاہتی ہیں۔ اخبارات اور ٹی وی چینلس یہی کمپنیاں چلارہی ہیں۔پھر سچائی لوگوں تک کیوں کر پہنچے گی۔ ملک کے ہر ایک معاملے میں انہی کمپنیوں کی پالیسی مرتب ہورہی ہے۔ یہ لوگ چاہے جتنا بھی بڑا قرضہ کرلیں آسانی سے بچ نکلتے ہیں، کسان اگر قرضہ حاصل کرکے ادا نہ کرے تو اس کیلئے ایسے حالات پیدا کئے جاتے ہیں کہ وہ مجبوراً پھونسی لے لیتا ہے۔ خود کشی کرنے کے بعد بھی اس کسان کے ورثاء کو راحت نہیں ملتی ، ان کے اثاثے ضبط کرلئے جاتے ہیں ، جبکہ ہزاروں کروڑ روپے لوٹ کر ملک سے فرار لوگ عیش وآرام کی زندگی بسر کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت اگر واقعی کسانوں کی ہمدرد ہے تو فوراً تجارتی بینکوں سے کسانوں کے قرضہ جات معاف کرے۔

ایک نظر اس پر بھی

اسمبلی میں وزیراعلیٰ کا وداعی خطاب، پانچ سالہ کارکردگی کااحاطہ اقتدا ر پر دوبارہ ہم ہی لوٹ آئیں گے، اس میں شک وشبہ نہ کریں: سدارامیا

ریاست کرناٹک میں 14ویں اسمبلی کے آخری سیشن کے آخری دن وزیراعلیٰ سدارامیا اپنی وداعی تقریر کرتے ہوئے کہاکہ پچھلے 5سالوں کے دوران ان کی حکومت کئی عوام دوست پروگراموں کو جاری کرکے ریاست میں ایک اچھا اور شفاف انتظامیہ فراہم کیا اور دعویٰ کیا کہ دوبارہ ہم ہی اقتدار پر لوٹ آئیں گے ...

بنگلور کے ہندو شمشان میں دفن کی گئی مسلم کی نعش کو 21 دن بعد نکالا گیا؛ نمازجنازہ کے بعد کی گئی مسلم قبرستان میں دوبارہ تدفین

شمشان میں دفن کی گئی لاش کو 21 دن بعد باہر نکال کر اُس کوغسل دینے اور نماز جنازہ ادا کرکے  مسلم قبرستان میں دوبارہ دفن کرنے کی واردت  بنگلور میں پیش آئی ہے۔ اس تعلق سے سماجی کارکن صابو لال قریشی کی کوششوں کی ہر کوئی سراہنا کررہا ہے جنہوں نے سرکاری اجازت نامہ کے ساتھ شمشان سے لاش ...

ہوناور میں پریش میستا کے گھر پہنچے امیت شاہ نے دیا سی بی آئی سے تحقیقات کروانے کا بھروسہ؛ عوامی پروگرام میں شرکت کے بغیر ہی واپسی پر ضلع کے عوام کو ہوئی مایوسی

یہاں دسمبر کے مہینے میں ہوئے فرقہ وارانہ فساد کے پس منظر میں پریش میستا نامی نوجوان کی لاش مشکوک حالت میں تالاب سے برآمد ہوئی تھی۔ بی جے پی اس سے سیاسی فائدہ اٹھانے کی مسلسل کوشش کررہی ہے اس لیے پارٹی کے چھوٹے بڑے لیڈر وں کا وقفے وقفے سے پریش  میستا کے گھر جانا ایک معمول بن گیا ...

منگلورو کے کسبا بینگرے میں گروہی تصادم :پولس سمیت 10زخمی ،سواریوں کو نقصان؛ حالات پر قابو پانے لاٹھی چارج کے بعد پولس نے کی ہوائی فائرنگ

ملپے میں بی جے پی کی طرف سے منعقدہ قومی ماہی گیر سماویش ختم ہونے کے بعد بس کے ذریعے لوٹنے والوں اور مقامی لوگوں کے درمیان ’’گروہی تصادم ‘‘ہونے کا واقعہ منگل کی رات کسبا بینگرے میں پیش آیا، جس پر قابو پانے کے  لئے پولس کو پہلے لاٹھی چارج، پھر ہوا میں فائرنگ کرنی پڑی۔ اب حالات ...