کرشنا طاس میں سیلاب کی صورتحال تشویشناک،کئی ذخائر سے پانی چھوڑا گیا، 60 افراد جزائر میں پھنس گئے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 22nd September 2017, 11:00 PM | ریاستی خبریں |

گلبرگی، 22ستمبر (ایس او نیوز؍عبدالحلیم منصور) کرناٹک کے کرشنا طاس میں سیلاب کی صورتحال تشویشناک ہوگئی ہے، کیونکہ باگل کوٹ ضلع کے المائٹی ریزروائر میں پانی کاشدید بہاؤ دیکھا جا رہا ہے ۔ ریزروائر کے نچلے علاقوں میں شدید پانی کے چھوڑنے کے سبب دریا کنارے واقع مواضعات میں سیلاب کا خطرہ بنا ہوا ہے ۔کرشنا بھاگیہ جل نگم لمیٹیڈ (کے بی جے این ایل) کے ذرائع نے بتایا کہ ریزروائر میں پانی کا بہاؤ 99,822 کیوزک رہا ہے ۔ حکام کی جانب سے 519.570 میٹر تک پانی کے ذخیرہ کو برقرار رکھا اور ریزروائر سے 167,00 کیوزک پانی چھوڑا گیا۔ اسی طرح المائٹی ریزروائر میں نچلے حصہ کے نارائن پور ڈیم میں بھی پانی کا شدید بہاؤ دیکھا گیا۔ حکام نے اس کے تمام 15 دروازے کھولتے ہوئے 117,914 کیوزک پانی چھوڑا۔ اس میں 127 ہزار کیوزک پانی کا بہاؤ دیکھا گیا۔ رائچور سے موصولہ اطلاع کے مطابق 15 خاندانوں کے 60 افراد کل شب سے لنگا سگور تعلقہ کے کادادل ہلی' ماگراہلی اور اومکار ہلی جزائر پھنسے ہوئے ہیں۔ ضلع انتظامیہ ان سے مسلسل ربط میں ہے اور بچاؤ کارروائیاں شروع کی گئی ہیں۔ محصور افراد آوارہ کتوں اور دیگر جانوروں سے اپنے بکروں کو خطرہ کے پیش نظر اپنے متعلقہ علاقوں کو واپس ہونا نہیں چاہتے ۔ محکمہ ریونیو کے حکام نے چوکسی کا انتباہ دیا اور دریا کی صورتحال پر انتظامیہ نظر بنائے ہوئے ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

بنگلور میں جے ڈی ایس کا شاندار اجلاس؛ مایاوتی کی شرکت؛ کہا مودی حکومت اب آخری سانس لے رہی ہے؛ کمارسوامی نے جاری کی 126 اُمیدواروں کی پہلی فہرست

شہر کے یلہنکا میں جنتادل (ایس) کا  شاندار جلسہ کمارا پرو یاترا کنونشن کے نام پر سنیچر شام کو منعقد ہوا ، جس میں ریاست کے مختلف گائوں اور دیہاتوں سے کثیر تعداد میں لوگوں نے   شرکت کی۔ اس موقع پر سابق وزیراعلیٰ  کماراسوامی نے  ریاست کرناٹک میں آئندہ دو  تین ماہ بعد ہونے والے ...

سدارامیا اور دیش پانڈے کے ہاتھوں ای وہیکلس کاآغاز فضائی و صوتی آلودگی پر قابو پانے بجلی سے چلنے والی سواریاں ناگزیر

ایوان سیاست ودھان سودھا کے اطراف ہمیشہ سیاسی ہماہمی اور قائدین کی گہما گہمی رہتی ہے۔ لیکن ہفتہ کے دن یہاں کا منظر کچھ بدلا ہوا تھا۔ ودھان سودھا کے سامنے آج نیلی رنگ کی کاروں، دوپہیہ گاڑیوں اور آٹو رکشاؤں کی قطاریں دیکھی گئیں ۔

عوامی سہولیات کیلئے بنگلورو میں ہیلی پیڈس کی تعمیر کا منصوبہ میڈیکل ایمر جنسی کیلئے بی بی ایم پی کا بڑا اقدام

بنگلورو بروہت مہانگر پالیکے( بی بی ایم پی) کا بجٹ23؍فروری کو پیش کیا جانے والا ہے۔ اس مرتبہ بجٹ میں عوام کی صحت پر زور دیا جائے گا۔ اس سلسلہ میں بنگلوروشہر کے محتلف مقامات پر8ہیلی پیڈس بنائے جائیں گے تاکہ ایر ایمبولینس کے ذریعہ شدید بیماروں اور حادثوں میں متاثرہ افراد کو کم سے کم ...

بی ای ایم ایل نے بوگیوں کی پہلی کھیپ بی ایم آر سی ایل کے حوالہ کردی مسافروں کے لئے جانے کی گنجائش دگناہوجائے گی۔ مضافاتی ریل کیلئے بوگیاں بی ای ایم ایل سے خریدنے کا تیقن

وزارت دفاع کے ماتحت چلنے والی ایک سرکاری کمپنی بی ای ایم ایل لمیٹڈ جو میٹرو کارس( بوگیاں) تیار کرنے والی ملک کی ایک بڑی کمپنی ہے ۔ اس کمپنی نے آج بنگلور و میٹرو ریل کا رپوریشن لمیٹڈ ( بی ایم آر سی ایل)کو پہلا کار یونٹ حوالہ کیا ۔