کسان ریلی کے پیش نظر ممبئی میں سخت سیکورٹی انتظام کا بندوبست

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th March 2018, 8:28 PM | ملکی خبریں |

ممبئی،12؍ مارچ (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)ممبئی پولیس ناسک سے چھ دن میں 180کلو میٹر کی دوری طے کر کے یہاں آزاد میدان میں جمع ہوئے کسانوں ریلی کے پیش نظر قانون و نظام کو برقرار رکھنے کے لئے کوئی کمی نہیں چھوڑ رہی ہے کسان یہاں اپنے تمام مطالبات کو پورا کرانے اور حکومت پر دباؤ بنانے کے لئے جمع ہوئے ہیں۔مہاراشٹر کے 35,000 سے زیادہ کسانوں نے گزشتہ منگل کوشروع ہونے والی اس ریلی میں حصہ لیا، جو آج صبح آزاد میدان پہنچے۔

پولیس کے جوائنٹ کمشنر (جرائم)دیوین بھارتی نے کہاکہ قریبی اضلاع سے کچھ کسانوں کے ریلی میں شامل ہونے کا امکان ہے۔پولیس اہلکار مستعد ہیں اور قانون اور نظام کو برقرار رکھنے کے قابل ہیں۔بھارتی نے کہاکہ ریلی ملک کی مالیاتی دارالحکومت تک پُرامن پہنچی ہے۔انہوں نے کہا کہ پولیس پُرامن طریقے سے ہی مظاہرین کو تتربتر کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔دیگر افسر نے بتایا کہ بڑی تعداد میں مظاہرین کے شہر میں جمع ہونے کے پیش نظر پولیس نے قریبی نظر بنا رکھی ہے تاکہ کوئی ممکنہ سماج دشمن عناصر صورتحال کا فائدہ نہ اٹھا سکے۔انہوں نے بتایا کسانوں کے کل شہر میں داخل ہوتے ہی تمام راستوں پر بڑی تعداد میں سیکورٹی فورس تعینات کر دی گئی۔

آل انڈیا کسان سبھا (اے آئی کے ایس )کے اشوک دھاولے نے کہا کہ کسانوں نے پہلے صبح اپنی منزل تک پہنچنے کا فیصلہ کیا تھا لیکن وہ صبح ہی یہاں پہنچ گئے تاکہ بورڈ کے امتحان کے دوران ٹریفک متاثرنہ ہو۔آل انڈیا کسان سبھا نے ہی اس ریلی کا اہتمام کیا ہے۔اے آئی کے ایس کے رکن اور سی پی ایم کے رکن اسمبلی جیوا پاڈو گاوت نے کہاکہ ہم قرض معافی سمیت تمام مطالبات کے مکمل ہونے کی امید رکھتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہم ریاستی حکومت کے ہماری مانگیں پوری نہ کرنے تک شہر چھوڑیں گے اور اسمبلی کا گھیراؤ کریں گے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

جامعہ فیض ناصرمیں گزشتہ روز علماء کی زیر نگرانی طلباء وطالبات کا تعلیمی جائزہ

جامعہ فیض ناصر حضرت شیخ الاسلام کا لونی مملانا روڈ مظفر نگرمیں گزشتہ روز علماء کی زیر نگرانی طلباء وطالبات کا تعلیمی جائزہ لیا گیا واضح ہو کہ جامعہ فیض ناصر اپنے علاقہ کا وہ ادارہ ہے جو اکابر کی رہنمائی میں مسلسل ترقی کی راہ پر گامزن ہے موقع بموقع اکابرین علماء جامعہ میں قدم ...

ضلع شمالی کینرا میں جے ڈی ایس کا وجود نہیں ہے۔ آئندہ لوک سبھا میں کانگریس کا ہی امیدوار ہوگا۔ دیشپانڈے کا بیان

ریوینیو اور ضلع انچارج وزیر آر وی دیشپانڈے نے کہا ہے کہ ضلع شمالی کینرا میں جنتا دل ایس کا کوئی وجود نہیں ہے، بلکہ کانگریس پارٹی ضلع میں پوری طرح مستحکم ہے۔ اس لئے آئندہ لوک سبھا انتخاب میںیہاں سے کانگریس کا امیدوار ہی میدان میں اتارا جائے گا۔

جمعیۃعلماء مہاراشٹر کی مجلس عاملہ کی میٹنگ ؛ صوبائی سطح پر ممبر سازی کالیا گیا جائزہ؛ 2لاکھ ممبران بنانے کا نشانہ

جمعیۃعلماء ہند کے نئے ٹرم کی ممبر سازی پورے ملک میں جوش و خروش سے جاری ہے، اور اس کے لئے ماہ اکتوبر کے اختتام کو آخری حد مقرر کیا گیا ہے،جمعیۃعلماء مہاراشٹر کے کارکنان بھی پوری دلجمعی کے ساتھ ممبر سازی مہم میں لگے ہوئے ہیں ۔

شیوراج حکومت جادو دکھاکر جیتیں گے عوام کا دل

مدھیہ پردیش میں بی جے پی کو مسلسل چوتھی بار اقتدار میں واپسی کے لئے شیوراج حکومت اب جادوگروں کا سہارا لینے کی تیاری میں ہے۔’’ میجک اسپیل‘‘ کے اس یونیک قدم سے شیوراج حکومت عوام کے دل جیتنے کی کوشش کرتی نظر آ سکتی ہے۔ پی بی جے پی کے ترجمان رجنیش اگروال نے اس کی تصدیق کی ہے۔رجنیش ...