مدرسہ کا طالب علم ہجومی دہشت گردی کا شکار ،6 لوگوں نے دہلی میں پیٹ پیٹ کر قتل کردیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 6th September 2018, 11:40 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،6؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی)  ہجومی تشدد اور دہشت گردی کے واقعات مسلسلے بڑھتے جارہے ہیں اور قومی راجدھانی دہلی بھی انتہاءپسندوں اور دہشت گردوں سے محفوظ نہیں رہ گئی ہے ۔ شمال مغربی دہلی کے مکند پور میں ایک نابالغ لڑکے کا پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا گیا اور اس پر الزام عائد کیا گیا کہ وہ گھر میں سامان چرانے کے مقصد سے داخل ہوا تھا۔ حالانکہ مہلوک کے گھر والوں کا کہنا ہے کہ وہ ایسا لڑکا نہیں تھا اور کسی خاص مقصد کے تحت اسے موب لنچنگ کا شکار بنایا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق مہلوک کی عمر 16 سال تھی اور وہ تقریباً 15 دن قبل ہی بہار سے دہلی آیا تھا۔ وہ بہار کے کھگڑیا ضلع میں اپنی ماں کے ساتھ رہتا تھا اور مدرسہ کا طالب علم تھا۔ وہ دہلی اپنے رشتہ داروں سے ملنے آیا ہوا تھا اور اپنے بڑے بھائی کے ساتھ مکند پور میں ٹھہرا ہوا تھا جس کا نام محمد شاہد ہے۔ شاہد پلمبر کا کام کرتا ہے جب کہ اس کے والد نوئیڈا میں مزدوری کرتے ہیں۔محمد شاہد کا کہنا ہے کہ اس کے بھائی کی لاش منگل کی صبح گھر کے پیچھے والی گلی میں پڑی ہوئی ملی۔ اس کے جسم پر چوٹ کے کئی نشانات تھے۔ لڑکے کے گھر والوں کا دعویٰ ہے کہ وہ چور نہیں تھا اور کچھ ہی دن پہلے بہار سے دہلی اپنے رشتہ داروں سے ملنے کے لیے آنے والا لڑکا آخر چوری کیوں کرے گا۔ مہلوک کے گھر والوں کو شبہ ہے کہ قصداً اسے بے رحمی کے ساتھ پیٹا گیا ہے اور اس پٹائی کی وجہ چوری نہیں کچھ اورہے۔نابالغ لڑکے کے قتل کی خبر ملنے کے بعد پولس نے تحقیقات شروع کر دی ہے اور اس سلسلے میں تین لوگوں کو گرفتار بھی کیا گیا ہے۔ پولس افسر کے مطابق اس سلسلے میں بھلسوا ڈیری تھانہ میں معاملہ درج کیا گیا ہے اور ملزمین کی پہچان نند کشور، راج کشور، تریوینی، دیش راج، سنت لال اور سوہن لال کی شکل میں ہوئی۔ ان ملزمین میں سے تین لوگ فی الحال پولس کی گرفت میں نہیں آ سکے ہیں۔پولس ڈپٹی کمشنر اسلم خان کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں غیر ارادتاً قتل کا کیس درج کر لیا گیا ہے اور تحقیقات جاری ہے۔ ملزمین نے پوچھ تاچھ کے دوران بتایا کہ واقعہ صبح تقریباً ساڑھے تین بجے کا ہے جب انھوں نے مہلوک کو گھر میں گھستے ہوئے دیکھا اور پھر گھر میں موجود لوگوں نے اس کی بے تحاشہ پٹائی شروع کر دی۔ ذرائع کے مطابق یہ پٹائی اس وقت تک جاری رہی جب تک کہ نابالغ لڑکے کی جان نہیں چلی گئی۔ گھر والوں نے پولس کو صبح ساڑھے چھ بجے فون کر انھیں اطلاع دی۔ پولس اس بات کی جانچ کر رہی ہے کہ آخر پٹائی کے تین گھنٹے بعد فون کیوں کیا گیا۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار بوٹ حادثہ: زندہ بچنے والوں نے کیا حیرت انگیز انکشاف قریب سے گذرنے والی بوٹوں سے لوگ فوٹوز کھینچتے رہے، مدد نہیں کی؛ حادثے کی وجوہات پر ایک نظر

کاروار ساحل سمندر میں پانچ کیلو میٹر کی دوری پر واقع جزیرہ کورم گڑھ پر سالانہ ہندو مذہبی تہوار منانے کے لئے زائرین کو لے جانے والی ایک کشتی ڈوبنے کا جو حادثہ پیش آیا ہے اس کے تعلق سے کچھ حقائق اور کچھ متضاد باتیں سامنے آرہی ہیں۔ سب سے چونکا دینے والی بات یہ ہے کہ کشتی جب  اُلٹ ...

ای وی ایم تنازعہ: کپل سبل نے کہا 'ذاتی حیثیت سے گیا تھا لندن، کانگریس کا کوئی لینا دینا نہیں'۔

  کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل نے بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی)کےلیڈر اوروزیرقانون روی شنکر پرساد کےان الزامات کو منگل کو پوری طرح سے بے بنیاد بتاکہ لندن میں الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم )سے متعلق پریس کانفرنس کا اہتمام کانگریس نے کیاتھا اورواضح کیاکہ وہ اس میں ذاتی حیثیت ...

مدارس کو اگربند نہیں کیا گیا توآئی ایس آئی ایس حامی ہوجائیں گے مسلم بچے، وسیم رضوی نے وزیراعظم کو خط لکھ کرکیا مطالبہ

اپنے متنازعہ بیانات  کے سبب اکثرسرخیوں میں رہنے والے اترپردیش شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی نے وزیراعظم نریندرمودی کوخط لکھ کربنیادی سطح تک کے سبھی مدارس کوبند کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

اپنے کسی بھی ممبر اسمبلی کو لوک سبھا انتخابات میں نہیں اتارے گی عام آدمی پارٹی

عام آدمی پارٹی آئندہ لوک سبھا انتخابات میں اپنے موجودہ  ممبراسمبلی اور وزرا کو ٹکٹ نہیں دے گی۔ عآپ کے سینئر لیڈر گوپال رائے نے منگل کو یہ جانکاری دی ہے۔ عام آدمی پارٹی کی دہلی یونٹ کے صدر رائے نے ساتھ ہی کہا کہ انتخابات کی اطلاع جاری ہونے سے کافی پہلےہی دہلی م پنجاب اور ہریانہ ...

الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں پر چندرابابوکوشبہات

الکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایمس)کے استعمال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اے پی کے وزیراعلی و تلگودیشم پارٹی کے قومی صدر این چندرابابونائیڈو نے کہا کہ ان مشینوں میں الٹ پھیر کے کئی ثبوت پائے گئے ہیں