یوم صحافت کے حوالے سے پتر کرتا سنگھا بھٹکل کی جانب سے طلبہ کے لئے مضمون نویسی مقابلہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th July 2017, 1:13 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 17؍جولائی (ایس او نیوز) صحافیوں کی تنظیم "پترکرتا سنگھا "بھٹکل کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق یوم صحافت کے حوالے سے پترکرتا سنگھا اور سدھارتھ ایجو کیشن ٹرسٹ کے اشتراک سے طلبہ کے لئے ایک مضمون نویسی مقابلہ منعقد کیا جارہا ہے۔

بتایا گیاہے کہ 29جولائی کوکلاوتی رامناتھ شانبھاگ ہال میں یوم صحافت منایا جائے گا جس میں پترکرتا سنگھا کی جانب سے" بھٹ کلنکا" ایوارڈ بھی تفویض کیا جائے گا۔اس پروگرام کے ایک حصے کے طور پر 22جولائی کو تعلقہ سطح پرکالج طلبہ کے لئے تحریری مقابلہ بھی ہوگا۔سدھارتھ پی یو کالج میں صبح 11بجے سے 12تک منعقد ہونے والایہ مقابلہ کنڑا زبان میں ہوگا اور اس کا موضوع "ہم آہنگی، بھائی چارگی اور امن کے قیام میں اخبار ات اور صحافیوں کا کردار"ہوگا۔ اس میں پی یو سی اور ڈگری کالجوں کی تمام فیکلٹیز میں زیر تعلیم طلبہ حصہ لے سکیں گے۔مضمون کے لئے یہ شرط ہے کہ وہ چار صفحات سے زیادہ نہیں ہونا چاہیے۔

تحریری مقابلے میں اول دوم اورسوم مقام پانے والوں کے علاوہ دو شرکاء کو کنسولیشن کے طورپر29جولائی کو منعقد ہونے والے پروگرام کے دوران نقد انعامات سے نوازا جائے گا۔

مزید معلومات کے لئے پتر کرتا سنگھا کے صدر وشنو دیواڈیگا 9341440214اورجنرل سکریٹری موہن نائک 9980431987سے رابطہ قائم کیا جاسکتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کمٹہ بلاک کانگریس دفتر کا ضلعی صدر بھیمنانائک کے ہاتھوں افتتاح

مورور کے قریب اُڈپی ہوٹل سےمتصل کمٹہ بلاک کانگریس کے دفتر کا ضلع کانگریس کمیٹی صدر بھیمنا نائک نے افتتاح کرنے کے بعد خطاب کرتے ہوئے کہاکہ عوام کی سہولت کے لئے دفتر کا افتتاح کیاگیا ہے عوام اپنی شکایات اور مسائل کو یہاں پیش کرکے حل حاصل کرسکتےہیں۔ عوامی مسائل کے سلسلے میں ہی اس ...

بھٹکل کے اتی کرم داروں کو اراضی دستاویزات میں تاخیر کرنے پرراما موگیر برہم؛ ہزاروں آتی کرم داروں کی طرف سے احتجاج کا انتباہ

بیرونی ملک سے ضلع کو آئے تبتی(ٹبیٹین)عوام کو رہائش کے لئے ضلعی انتطامیہ نے مواقع فراہم کیا ہے۔ ضلع میں ہی پیدا ہوکر پرورش پانے والوں کو زمینی دستاویز(حق پترا) دینے کے لئے افسران ہی اہم وجہ سبب ہونے کا تعلقہ اتی کرم دارر ہوراٹ سمیتی کے صدر راما موگیر نے سخت برہمی  کااظہارکیا۔

بھٹکل اسمبلی حلقے میں کھیلا جارہا ہے ایک نیا سیاسی کھیل! کون بنے گا کانگریسی اُمیدوار ؟

یہ کوئی ہنسی مذاق کی بات ہرگز نہیں ہے۔بھٹکل کی موجودہ جو صورتحال ہے اس میں ایک بڑا سیاسی گیم دکھائی دے رہاہے۔ کیونکہ 2018کے اسمبلی انتخابات کی تیاریوں میں لگی ہوئی سیاسی پارٹیاں اپنا امیدوار کون ہوگا اس پر توجہ دینے کے ساتھ ساتھ مخالف پارٹیوں سے کون امیدوار بننے پر ان کی جیت کے ...