چھتیس گڑھ میں ملازمین کی ہڑتال ختم

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 9th January 2019, 2:16 AM | ملکی خبریں |

رائے پور:8/جنوری (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)مرکزی حکومت کی کارکنوں مخالف پالیسیوں کی مخالفت میں ٹریڈ یونینوں کی دو روزہ ملک گیر ہڑتال کا چھتیس گڑھ میں ملا جلا اثر رہا۔سینٹر آف انڈین ٹریڈ یونینس (سیٹو) کی رکن دھرم راج مہاپاتر نے منگل کو یہاں بتایا کہ دو روزہ ہڑتال کے پہلے دن پوسٹ آفس، معروف بینک اور انشورنس کمپنیوں میں کام کاج متاثر ہوا۔ مہاپاتر نے بتایا کہ ریاست کے مختلف مقامات میں یونین کے ملازمین اور افسران ہڑتال میں شامل ہوئے۔ یونین فی مہینہ 18 ہزار روپے کم سے کم اجرت کا مطالبہ اور ضروری اشیاء کی قیمتوں میں اضافے کی مخالفت کر رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست میں اسٹیل، بجلی، بینکاری، انشورنس اور دیگر منظم شعبہ کے ساتھ ساتھ غیر منظم علاقوں کے ورکرز اور ملازم بھی ہڑتال میں شامل ہوئے۔ وہیں آنگن باڑی کارکن، رائس مل مزدور اور منڈی مزدوروں نے بھی ہڑتال کی حمایت کی ہے۔ مہاپاتر نے کہا کہ بدھ کو ہڑتال کے دوسرے دن زیادہ حمایت ملنے کا امکان ہے۔ ہڑتال کے پہلے دن ریاست میں اسکول اور کالج کھلے رہے اور گاڑیوں کی نقل و حرکت بھی جاری رہی۔

ایک نظر اس پر بھی

الیکشن کمیشن کا حلف نامہ - گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات قانون کے مطابق، کمزور پڑ رہی کانگریس 

گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات کو لے کر کانگریس کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے حلف نامہ داخل کیا ہے الیکشن کمیشن نے دو سیٹوں پر الگ الگ انتخابات کرانے کے اپنے فیصلے کو برقرار رکھا۔

بی ایس این ایل کی حالت خراب؛ ملازمین کو جون کی تنخواہ دینے کے لیے نہیں ہیں رقم

رکاری ٹیلی کام کمپنی بی ایس این ایل نے حکومت کو ایک خط  بھیجا ہے، جس میں کمپنی نے آپریشنز جاری رکھنے میں تقریبا نااہلی ظاہر کی ہے۔کمپنی نے کہا ہے کہ رقم میں  کمی کے سبب کمپنی کے ملازمین کو  جون ماہ کی تنخواہ  تقریبا 850 کروڑ روپے  دے پانا مشکل ہے۔کمپنی پر ابھی قریب 13 ہزار کروڑ ...