ووٹرفہرست میں ناموں کی جانچ کے لئے ایک اورموقع ریاست کے تمام 224؍اسمبلی حلقوں کی عبوری ووٹرفہرست جاری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th December 2017, 12:13 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،4/دسمبر (ایس او نیوز) ووٹرفہرست میں اپنے ناموں کی جانچ اوراس میں کسی بھی طرح کی کوئی خامی کو درست کرنے کے لئے ریاستی انتخابی کمیشن نے ایک اور موقع فراہم کیا ہے۔ریاستی چیف الیکٹرول افسر سنجئے کمار نے آج اپنے دفتر میں اخباری کانفرنس کے دوران اس بات کی جانکاری دیتے ہوئے بتایا کہ ریاست کے تمام 224؍ اسمبلی حلقوں کی عبوری ووٹر فہرست کو کمیشن کے ویب سائٹ ceokarnataka.kar.nic.in پرجاری کردیاگیا ہے۔ اس کے ذریعہ کسی ووٹر کے نام میں کسی بھی طرح کی کوئی غلطی نظر آئے تو فوری دوبارہ عرضی داخل کرکے اپنے ناموں کو درست کرواسکتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ عبوری ووٹر فہرست اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز نے سیاسی پارٹیوں کو جاری کئے ہیں۔ خصوصی جانچ مہم دسمبر سے 21؍دسمبرتک چلے گی جو گرام سبھا ،منسپالٹی ٹاؤن و سٹی منسپالٹی اور پنچایت دفاتر میں جاری رہے گی۔ مقامی افراد یہاں اپنے ناموں کی جانچ کرواسکتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ دسمبر3؍دسمبر تا17؍تک بوتھ سطح پر خصوصی آندولن اور عرضیاں قبول کی جائیں گی۔ انہوں نے بتایا کہ 29؍دسمبر تک ووٹر فہرست میں ناموں کے اندراج ایک سے زائد نام ہوتو انہیں خارج کرنے اور دیگر تفصیلات میں غلطیوں کو درستگی کا موقع دیاگیا ہے۔ الیکٹرول افسر نے بتایا کہ دسمبر14؍سے 29؍تک ووٹران کے مکانوں تک پہنچ کر ملازمین ووٹر فہرست میں ناموں کے اندراج اورغلطیوں کو درست کرنے کے متعلق جانچ کریں گے۔ 15؍فروری 2018کو قطعی ووٹر فہرست جاری کردی جائے گی۔ انہوں نے تمام سیاسی پارٹیوں سے گزارش کی ہے کہ بوتھ سطح پر اپنے ایجنٹوں کو مقرر کرکے ان کے ذریعہ ووٹرفہرست میں خامیوں کو دورکرنے کے لئے تعاون کریں۔ ناموں کے اندراج اور درستگی کے لئے فارم 6؍کا استعمال کرنا ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ مذکورہ فارم متعلقہ تمام بلدی اداروں میں دستیاب ہیں۔ اس کے علاوہ کمیشن کے ویب سائٹ سے بھی ڈاؤن لوڈ کئے جاسکتے ہیں۔ مسٹر سنجئے کمار نے بتایا کہ 2013 کے اسمبلی انتخابات کے دوران ریاست میں جملہ4؍کروڑ 18؍لاکھ 38؍ہزار 541ووٹران موجود تھے لیکن اب تک کی عبوری فہرست کے مطابق ریاست میں جملہ4؍کروڑ 90؍لاکھ 6؍ہزار 901 ووٹران موجود ہیں۔ اس میں 2؍کروڑ 41؍ لاکھ 34؍ہزار 905 خواتین اور2؍کروڑ 48؍لاکھ 67؍ ہزار756 مرد ہیں۔ ان کے علاوہ 4340 جنسی اقلیت کے ووٹر بھی شامل ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ 5؍برسوں کے دوران ریاست میں 72؍لاکھ نئے ووٹران فہرست میں شامل کئے گئے ہیں۔ انتخابی کمیشن نے بتایا کہ بنگلور شہر میں جملہ85؍لاکھ88؍ہزار 762 ووٹر موجود ہیں۔ ان میں 45؍لاکھ2؍ہزار 576خواتین،40؍لاکھ84؍ہزار802 مرد اور1384جنسی اقلیت کے ووٹر شامل ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ 18؍اور19؍سال کی عمر کے 7؍لاکھ 69؍ہزار472نوجوان لڑکوں اور لڑکیوں نے اپنے ناموں کا اندراج کرایا ہے۔ انہوں نے کہاکہ اگلے اسمبلی انتخابات سے قبل قطعی ووٹر فہرست جاری کرنے کے لئے انتخابی کمیشن نے تمام تیاریاں مکمل کرلی ہیں۔ اخباری کانفرنس میں اسسٹنٹ الیکٹرول افسر وی۔ راگھویندرا اور سینئر افسر رمیش بھی موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس چھتیس گڑھ میں طویل عرصے کے بعد اقتدار میں لوٹے گی: ویرپا موئلی 

سینئر کانگریس لیڈر ویرپا موئلی کہا کہ چھتیس گڑھ میں 15 سال بعد ان کی پارٹی اقتدار مخالف لہر پر سوار ہوکر اقتدار میں لوٹے گی۔ انہوں نے یہ بھی دعوی کیا کہ کانگریس ریاست کے نکسل متاثرہ علاقوں میں 18 سیٹوں میں اپنی سیٹیں12 سے بڑھا کر 15 کرے گی۔سابق مرکزی وزیر نے یہاں کہاکہ چھتیس گڑھ میں ...

گوا میں بیرونی مچھلیوں کی درآمد پر لگی پابندی سے کاروار، ملپے میں مچھلیاں سستی تو منگلورو میں ہوگئیں مہنگی !

جب سے گوا کی حکومت نے فارمولین کے مسئلے پر بیرونی ریاستوں سے مچھلیوں کی درآمد پر پابندی رکھی ہے اور کچھ قانونی شرائط لاگو کی ہیں، تب سے ساحلی کرناٹکا کے شہروں میں اس کا کچھ ملا جلا اثر دکھائی دے رہا ہے۔

بیلگاوی میں احتجاج کے دوران کسان سورنا سودھا میں گھس گئے، وزیر اعلیٰ کی مداخلت کے بعد گرفتار شدہ افراد کی رہائی ، 20؍نومبر کو بنگلورو میں میٹنگ

شمالی کرناٹک کے بیلگاوی ضلع میں  گناہ اگانے والے کسانوں نے احتجاج کیا اور سوورنا سودھا کے احاطہ میں گنا سے لدی لاریوں کو زبردستی گھسا کر حکومت کے خلاف نعرے لگائے ۔ پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے 10؍ کسان لیڈروں کو گرفتار کر لیا ہے اور ان کےخلاف ایف آئی آر درج کردیا ۔

سنجے دت کے ہاتھوں19نومبرکواڈاپٹ فٹنس کا افتتاح، بنگلورو کا بین الاقوامی معیار پر مشتمل سب سے بڑا فٹنس سنٹر عوام کے لئے دستیاب

شہر کے فریزر ٹاؤن میں صحت اور فٹنس کو عام کرنے کے لئے عالمی معیار کی سہولتوں سے لیس ہندوستان کی سب سے بڑی اور خوبصورت جم اڈاپٹ فٹنس کا افتتاح 19نومبر کی شام منعقد کیا گیا ہے۔