ای ڈی نے کارتی چدمبرم، دوسرے کے خلاف درج کیا پی ایم ایل اے معاملہ

Source: S.O. News Service | Published on 19th May 2017, 9:08 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،19مئی(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ(ای ڈی) نے سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کے بیٹے کارتی چدمبرم اور دیگر کے خلاف سی بی آئی کی حالیہ ایف کا نوٹس لیتے ہوئے منی لانڈرنگ کا معاملہ درج کیا ہے۔حکام نے کہا کہ ای ڈی نے کارتی، آئی این ایکس میڈیا اور اس کے ڈائریکٹرز پیٹر اور نادرانی مکھرجی سمیت سی بی آئی کی شکایت میں نامزد ملزمان کے خلاف ایک نافذ کرنے والا معاملہ انفارمیشن رپورٹ(ای سی آئی آر)درج کیاجو پولیس ایف آئی آر کے برابر ہے۔انہوں نے بتایا کہ منی لانڈرنگ کی روک تھام قانون(پی ایم ا یل اے) کی دفعات کے تحت ای سی آئی آر درج کیا ہے۔حکام نے بتایا کہ ای ڈی اس معاملے میں کئے گئے جرائم سے ملے فائدہ متعلق الزام کی جانچ کرے گا اور مختلف ملزمان کی جائیداد بھی ضبط کی جا سکتی ہے۔ای ڈی نے آئی این ایکس میڈیا کے مبینہ غیر قانونی ادائیگی کی معلومات مہیا کرائی تھی جس کی بنیاد پر سی بی آئی نے ایف آئی آر درج کی تھی۔سی بی آئی نے کر جانچ کو ناکام کرنے کے لئے اندرانی اور پیٹر مکھرجی کی ملکیت ایک کمپنی سے مبینہ طور پر دولت حاصل کرنے کے معاملے میں سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم کے بیٹے کارتی چدمبرم کے چار شہروں میں رہائش گاہ اور دفاتر پر منگل کو چھاپے مارے تھے۔پی چدمبرم اورکارتی نے ان الزامات کو مسترد کیا ہے۔سی بی آئی نے مجرمانہ سازش، دھوکہ دہی، رشوت حاصل کرنے، سرکاری ملازمین کو متاثر کرنے اور مجرمانہ سازش کے الزامات میں ایف آئی آر درج کی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

آر ٹی آئی کا انکشاف، تو پھر کس کام کے ہیں آدھا رکارڈ، 210 سرکاری ویب سائٹس نے آدھارکارڈ سے منسلک معلومات عام کی

آدھار کارڈجاری کرنے والی تنظیم بھارتی مخصوص شناخت اتھارٹی نے کہا ہے کہ مرکز اور ریاستی حکومت کی 200 سے زیادہ ویب سائٹس نے کچھ آدھار کارڈ سے فائدہ اٹھانے والوں کے نام اور پتے جیسی خاص معلومات عام کردی ۔