رشوت معاملہ:اے آئی اے ڈی ایم کے کے سابق رہنما دناکرن کے خلاف الزامات طے

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th December 2018, 1:30 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی،04؍ دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) دہلی کی ایک عدالت نے انادرمک کے سابق لیڈر ٹی ٹی وی دناکرن کو دو پتی والا انتخابی نشان حاصل کرنے کی وجہ سے الیکشن کمیشن کے حکام کو مبینہ رشوت دینے کے معاملے میں منگل کو مجرمانہ سازش کے الزامات طے کئے گئے۔دناکرن خصوصی جج ارون بھارددھاج کی عدالت میں پیش ہوئے اور خود کو بے قصور بتایا۔عدالت نے ان کے خلاف مقدمہ چلانے کی منظوری دے دی۔عدالت نے دناکرن کے خلاف تعزیرات ہند کی دفعہ 120 بی (مجرمانہ سازش)، 201 (ثبوت کو تباہ کرنے) اور اینٹی کرپشن قانون کے تحت الزام طے کئے گئے۔عدالت نے گواہوں کے بیان درج کرنے کے ساتھ معاملے کی سماعت 17 دسمبر سے شروع کرنے کا حکم دیا۔اس سے پہلے عدالت نے 17 نومبر کو ان کے خلاف الزامات طے کرنے کا حکم دیا تھا۔ دناکرن نے اپنی پارٹی تشکیل کی تھی۔انہیں اپریل 2017 میں گرفتار کیا گیا تھا اور بعد میں ضمانت دے دی گئی تھی۔ مبینہ بچولیے سکیش چندرشیکھر کے خلاف تعزیرات ہند کی دفعات کے تحت مجرمانہ سازش، ثبوتوں کو تباہ کرنے اور اینٹی کرپشن قانون کے تحت سماعت شروع کی گئی تھی۔دناکرن کے ساتھی ٹی پی ملک ارجن اور بی کمار نام کے ایک شخص کے خلاف بھی ان الزامات پر سماعت شروع کی گئی۔دہلی پولیس کی کرائم برانچ نے 2017 میں ایک چارج شیٹ داخل کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ چندر شیکھر نے دناکرن اور دیگر کے ساتھ ششی کلا کی قیادت والے انادرمک کے گروہ کے لئے دو پتی والا انتخابی نشان حاصل کرنے کے لیے حکام کو رشوت دینے کی سازش رچی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

وزیراعظم مودی نے کابینہ سمیت سونپا صدرجمہوریہ کو استعفیٰ، 30 مئی کو دوبارہ حلف لینےکا امکان

لوک سبھا الیکشن کے نتائج کے بعد جمعہ کی شام نریندرمودی نے وزیراعظم عہدہ سے استعفیٰ دے دیا۔ ان کے ساتھ  ہی سبھی وزرا نے بھی صدرجمہوریہ کواپنا استعفیٰ سونپا۔ صدر جمہوریہ نےاستعفیٰ منظورکرتےہوئےسبھی سے نئی حکومت کی تشکیل تک کام کاج سنبھالنےکی اپیل کی، جسے وزیراعظم نےقبول ...

نوجوت سنگھ سدھوکی مشکلوں میں اضافہ، امریندر سنگھ نے کابینہ سے باہرکرنے کے لئے راہل گاندھی سے کیا مطالبہ

لوک سبھا الیکشن میں زبردست شکست کا سامنا کرنے والی کانگریس میں اب اندرونی انتشار کھل کرباہرآنے لگی ہے۔ پہلےسے الزام جھیل رہے نوجوت سنگھ سدھو کی مشکلوں میں اضافہ ہونےلگا ہے۔ اب نوجوت سنگھ کوکابینہ سےہٹانےکی قواعد نے زورپکڑلیا ہے۔

اعظم گڑھ میں ہارنے کے بعد نروہوا نے اکھلیش یادو پر کسا طنز، لکھا، آئے تو مودی ہی

بھوجپوری سپر اسٹار نروہوا (دنیش لال یادو) نے لوک سبھا انتخابات کے دوران سیاست میں ڈبیو کیا تھا،وہ بی جے پی کے ٹکٹ پر یوپی کی ہائی پروفائل سیٹ اعظم گڑھ سے انتخابی میدان میں اترے تھے لیکن اترپردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو کے سامنے نروہا ٹک نہیں پائے۔

مسلمانوں کے خلاف اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کی بھاری اکثریت کے ساتھ جیت

مسلمانوں کے خلاف ہمیشہ اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کو اس مرتبہ لوک سبھا انتخابات میں بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ اترکنڑا لوک سبھا حلقے کے بی جے پی اُمیدوار اننت کمار ہیگڈے جنہوں نے کہا تھا کہ جب تک اسلام رہے گا دہشت گردی رہے گی،اسی طرح انہوں نے  دستور کی ...

ایچ کے پاٹل نے راہل گاندھی کو بھیجا استعفیٰ

ریاست میں کانگریس کے تشہیری مہم کمیٹی کے صدر ایچ کے پاٹل نے لوک سبھا انتخابات میں ریاست میں پارٹی کی شکست کی اخلاقی ذمہ داری لیتے ہوئے اپنے عہدے سے استعفی دینے کی پیشکش کی ہے۔