بی ایم ٹی سی کے لئے الیکٹر ک بسوں کی خریدی میں بے قاعدگی کا الزام مسترد

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th October 2018, 12:41 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،11؍اکتوبر(ایس او نیوز) شہر کے ٹرانسپورٹ نظام کو مستحکم کرنے کے لئے درکار الیکٹرک بسوں کی خریداری میں بی ایم ٹی سی افسروں کی مبینہ دھاندلی کے متعلق ریاستی وزیر ڈی سی تمنا کے انکشاف پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کے ایس آر ٹی سی افسر اور ملازمین فیڈریشن نے مطالبہ کیا ہے کہ ان بسوں کی خریداری کے معاملے میں مبینہ بے قاعدگیوں کی لوک آیوکتہ کے ذریعے جانچ کرائی جائے ، اگر جانچ میں ثابت ہوا کہ وزیر موصوف کا بیان بے بنیاد ہے تو وزیر موصوف کو اس کے لئے معذرت خواہی کرنی چاہئے۔ان ملازمین نے افسروں کی بھرپور تائید کرتے ہوئے کہاکہ افسر کے ایس آر ٹی سی انتہائی دیانتداری سے کام کررہے ہیں ، ایک ذمہ دار عہدے پر رہتے ہوئے وزیر ٹرانسپورٹ نے غیر ذمہ دارانہ بیان دیا ہے۔ وزیر موصوف نے اپنے بیان کے ذریعے افسروں کی کردار کشی کی ہے، ملازمین فیڈریشن کی سکریٹری ایچ وی اننت سبا راؤ نے وزیر کے بیانات پر شدید نکتہ چینی کرتے ہوئے کہاکہ اس سلسلے میں وہ ڈی سی تمنا کو مکتوب روانہ کرچکے ہیں اور ان سے کہا ہے کہ الیکٹر بسوں کی خریداری میں اگر بے قاعدگی کا ثبوت موجود ہے تو اس کی بنیاد پر تحقیقات لوک آیوکتہ کے سپرد کی جائے، اور جب تک کہ تحقیقاتی مکمل نہ ہوجائیں اس وقت تک کسی بھی افسر کا تبادلہ نہ کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ سابقہ سدرامیا حکومت نے 80بسوں کی خریداری کے لئے ٹنڈر کو قطعیت دی تھی، جس کمپنی نے ٹنڈر حاصل کیا تھا اس نے 80 بسیں تیار کردی ہیں۔ اگر ان بسوں کی خریداری سے اگر ٹرانسپورٹ کارپوریشن کو نقصان پہنچا ہے تو اس کے لئے ذمہ دار افراد کے خلاف کارروائی کی جائے اس سے کسی کو کوئی اعتراض نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ وزیر موصوف کا یہ الزام کہ ان بسوں کی خریدی کے معاملے میں بی ایم ٹی سی افسروں نے شاید رشوت لی ہوگی درست نہیں۔ یہ بھی الزام لگایا گیا ہے کہ محکمۂ ٹرانسپورٹ کے افسروں کے تبادلوں میں کرپشن ہوا ہے۔ اننت سبھاراؤ نے اس الزام کو بھی بے بنیاد قرار دیا اور کہاکہ ٹرانسپورٹ افسروں کے تبادلے سرکاری ضوابط کے مطابق ہی کئے جاتے ہیں ، اب تک کسی وزیر ٹرانسپورٹ نے اس معاملے میں کوئی مداخلت نہیں کی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

امبیڈنٹ گھوٹالہ پر پردہ ڈالنے کی منظم سازش گھپلہ باز وجئے تا تا کو بچانے میں سینئر پولیس افسرملوث :ویدیکے

امبیڈنٹ چٹ فنڈ کمپنی کے گھوٹالہ معاملہ پر پردہ ڈالنے کی منظم کوشش ہورہی ہے ۔ حکومت کرپٹ سیاستدانوں کو بچانے کیلئے امبیڈنٹ سے دھوکہ کھائے متاثرین کے ساتھ ناانصافی کررہی ہے۔

ریاست کرناٹک میں پلاسٹک پر پابندی سے تمام اقتصادی شعبہ جات متاثر

یاست کرناٹک اور خاص طور پر بنگلور شہر میں پلاسٹک پر پابندی کے اقدام کو حکام اور افسران کی طرف سے پوری شدت کے ساتھ نافذ کیا جا رہا ہے اور اس کی وجہ سے پلاسٹک کا کاروبار کرنے والے افراد خاص طورپر بہت ہی زیادہ متاثر ہو رہے ہیں۔

بی جے پی سیاسی فائدہ کی خاطر ایوان میں غیر ضروری معاملے نہ اٹھائے :ضمیر احمد خان وقف بورڈ میں دھاندلیوں کاجائزہ لینے حکومت نے کوئی کمیٹی تشکیل نہیں دی۔مانپاڑی کمیٹی غیر قانونی

ریاستی وزیر برائے امور اقلیت ، اوقاف اور حج بی زیڈ ضمیر احمد خان نے آج ریاستی قانون ساز کونسل میں کہا کہ بشمول شمالی کرناٹک ریاست کی ترقی اور مسائل پر بحث و مباحثہ کے لئے بیلگاوی اسمبلی سیشن منعقد کیا گیا ہے ۔