مرنے والا ایک بار مرتا ہے لیکن قیدی بار بار مرتا اور جیتا ہے: جیل سے رہائی کے بعد بنگلور کے معروف عالم دین مولانا سید انظر شاہ قاسمی کا خطاب؛ مولانا ارشد مدنی کو قرار دیا نبی کا سچا وارث

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 3rd December 2017, 8:28 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

بنگلور، 03ڈسمبر (محمد فرقان/موصولہ رپورٹ) رو ئے زمین پر سب سے زیادہ حالات، آزمائش، امتحانات انبیا ء علیہ السلام پر آتے ہیں اور ہر پیغمبر پر حالات آئے ہیں، کسی نبی کو قوم نے گالیاں دی، کسی رسول کو قوم نے قتل کیا، کسی پیغمبر کو جیل میں ڈالا گیا  لیکن حالات کے آنے سے ان کا مقام، مرتبہ، رتبہ کم نہیں ہوا، لوگوں نے ان سے تعلق ختم نہیں کیا۔ ان باتوں کا اظہار  جمیعت علماء کرناٹک کے زیر اہتمام عید گاہ بلال میں سیرت نبوی کی روشنی میں قومی یکجہتی کے عنوان پر منعقد ایک عظیم الشان کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شاہ ملت حضرت مولانا سید انظرشاہ قاسمی نے جیل میں گزارے اپنے پونے دو سال کی مختصر روداد بیان کرتے ہوئے کیا۔

شاہ ملت نے سامعین کو مخاطب کرتے ہوئے فرمایا کہ میں آج یہی پیغام دینا چاہتا ہوں کہ ہماری کامیابی اور ناکامی حالات کے بدلنے کے اندر نہیں ہے۔ مولانا نے کہا کہ  اچھے ہوں تو سب سلام کرتے ہیں، خیریت پوچھتے ہیں، رشتہ داری بتاتے ہیں۔ لیکن جب کوئی حالات آجائے تو اپنا سایہ بھی دشمن بن جاتا ہے۔ مولانا نے فرمایا کہ یہ اسلام کی تعلیم نہیں، رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم پر کیسے کیسے حالات آئے، کیاصحابہ نے انکا ساتھ نہیں دیا؟

مولانا نے فرمایا کہ سال میں ایک مرتبہ بارہ ربیع الاول کو جلوس نکال لینے سے، جلسہ منعقد کروانے سے، پرجوش تقریر کرلینے سے کوئی نبی کا سچا عاشق نہیں بن جاتا۔ جب تک ہم صحابہ رضی اللہ عنہ کے طریقہ پر نہیں چلیں گے ہم سچے عاشق نہیں بن سکتے۔ اور علماء تو نبی کے وارث ہیں لیکن ہم نے دیکھا کہ جب جیل کے حالات آئے تو مسلم قوم اور ملت کا کیا رویہ تھا۔ مولانا انظر شاہ قاسمی نے مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اللہ ہماری زندگی کا کچھ حصہ ہمارے استاذ مولانا ارشد مدنی صاحب کو نصیب کرے انہوں نے اس وقت ساتھ دیا جب اپنے بھی پرائے ہوگئے۔

مولانا نے فرمایا کہ میں دیکھ کر آیا ہوں جیل کے حالات کہ کس طرح جیل میں بند بے قصور قیدی کی زندگی گزرتی ہے۔شاہ ملت نے فرمایا کہ مرنے والا ایک بار مرتا ہے لیکن قیدی بار بار مرتا اور جیتا ہے.۔مولانا نے فرمایا کہ مجھے معلوم ہے قیدی کے گھر والوں پر، رشتہ داروں پر، چاہنے والوں پر کیا گزرتی۔ مولانا شاہ نے کہا کہ  کتنے لوگ ہیں جنہوں نے فون سے ہمارے نمبرات نکال دئے، ہمارا نام تک لینے سے ڈر نے لگے، اور پوچھنے پر یہ بھی کہا کہ  ہم انکو جانتے بھی نہیں۔ لیکن اس بزرگی کے باوجود مولانا ارشد صاحب مدنی نے ہمارا ساتھ دیا۔ مولانا نے فرمایا کہ میں نے تہاڑ جیل کو اپنی آنکھوں سے دیکھا ہے، اگر مولانا مدنی ساتھ نہیں دیتے، وکیل فراہم نہیں کرتے تو کتنے لوگوں کے گھروں کا چولہا بجھ چکا ہوتا۔

مولانا شاہ قاسمی نے فرمایا کہ ہمارے جیسے کیس کے اندر ملزم کی سزا پانچ ۔ دس سال سے لیکر پھانسی تک ہوتی ہے اور وکیل لاکھوں کے پیسے مانگتے ہے لیکن جمعیت علماء بالخصوص مولانا ارشد مدنی ہمارے جیسے ہزاروں قیدیوں کی کیس کی پیروی کررہے ہیں۔مولانا نے مزید فرمایا کہ انہی کی جدوجہد کی وجہ سے ہمارا کیس خطرناک موڑ پر پہنچنے کے باوجود آج میں باعزت رہائی پاکرآپکے سامنے موجود ہوں۔مولانا نے فرمایا کہ لاکھوں جیل میں بند بے قصور لوگ اور انکے رشتہ داروں کی دعائیں مولانا مدنی کے ساتھ ہیں۔

مولانا نے فرمایا کہ ملک میں بہت ساری تنظیمیں ہیں جو کسی نہ کسی مسئلہ میں مدد کرتی ہیں لیکن جب کسی کو گرفتار کیا جاتا ہے تب جمیعت کے علاوہ کوئی جماعت یا تنظیم آگے نہیں آتی۔مولانا نے فرمایا کہ میری نظر میں اگر کوئی نبی کا سچا وارث ہے تو وہ مولانا ارشد مدنی ہیں کیونکہ یہ ایک ہی فرد ہے جو ہر مسئلہ پر سینہ تان کر سب سے آگے کھڑا ہوتا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ شاہ ملت کے بیان کے دوران متعدد مرتبہ اللہ اکبر کی صدائیں بلند ہوئیں۔

ایک نظر اس پر بھی

مہادائی ٹریبونل کے فیصلے کا چیلنج کرنے ریاستی حکومت تیار

ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ڈی کے شیوکمار نے کہاکہ شمالی کرناٹک کے بعض اضلاع کو پینے کے پانی کی فراہمی کا واحد ذریعہ مہادائی کے پانی کی تقسیم کے سلسلے میں حال ہی میں ٹریبونل نے جو فیصلہ صادر کیا ہے ریاستی حکومت اس کا سپریم کورٹ میں چیلنج کرے گی۔

جشن یوم آزادی کے موقع پر مدرسہ صفہ میں مولانا سید انظر شاہ قاسمی نے لہرایا ترنگا

یوم آزادی کے موقع پر مدرسہ صفہ، بیٹاداسنپورا مین روڈ، بنگلور میں پرچم کشائی کی تقریب منعقد کی گئی۔ جس میں مہمان خصوصی کی حیثیت مدرسہ ہذا کے سرپرست اعلیٰ شاہ ملت حضرت مولانا سید انظر شاہ قاسمی دامت برکاتہم نے شرکت کی۔

بتیامیں شرپسندوں کے ذریعہ مسجدومدرسہ پر حملہ قابل مذمت:مولانااسرارالحق قاسمی

ممبرپارلیمنٹ مولانا اسرارالحق قاسمی نے یوم آزادی کے موقع پر چمپار ن کے بتیاکی ہاتھی خانہ مسجد ومدرسہ پرشرپسندوں کے ذریعہ کئے گئے حملے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے ملزمین کے خلاف سخت کارروائی کامطالبہ کیاہے۔انہوں نے کہاکہ آج کے دن جبکہ پورا ملک آزادی کا جشن منارہاہے اور ہر ...

وینکیانائیڈونے واجپئی کوآزادہندوستان کاسب سے بڑالیڈربتاکرخراج عقیدت پیش کیا

نائب صدر ایم وینکیا نائیڈونے سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کے انتقال پر گہرے غم کا اظہار کرتے ہوئے ان کے انتقال کوملک کے لیے ناقابل تلافی نقصان بتایا ہے۔نائیڈو نے اپنے تعزیتی پیغام میں کہاکہ یہ خبرانتہائی افسوسناک ہے کہ اٹل جی نہیں رہے۔میں آج صبح ہی ان کی صحت کی معلومات لینے ...

ڈاکٹر ستیہ پال سنگھ نے شکرتال گھاٹ پر بہاؤ میں تیزی لانے پر تبادلہ خیال کی خاطر میٹنگ کی 

آبی وسائل، دریا کی ترقی اور گنگا کے احیاء کے وزیر مملکت ڈاکٹر ستیہ پال سنگھ نے آج شکرتال گھاٹ پر پانی کے بہاؤ میں تیزی لانے کے معاملے پر ایک میٹنگ کی صدارت کرتیہوئے اترپردیش اور اتراکھنڈ کے آبپاشی کے محکموں کے عہدیداروں کو ہدایت دی ہے کہ وہ دریائے گنگا کی معاون ندی سلونی میں ...

جامعہ رحمانی مونگیر: جنگ آزادی کے موضوع پر سیمینار اختتام پذیر، علماء ودانشور کا آزادی کی193 سالہ جدوجہد اور دستورکی معنویت پر اظہارِخیال

جامعہ رحمانی مونگیر میں یوم آزادی کی تقریب بحسن وخوبی اختتام پذیر ہوگئی، صبح آٹھ بجے پرچم کشائی کی گئی، اور بعد نماز ظہر تین بجے یوم آزادی کی جدوجہد پر سیمینار شروع ہؤا، جس کی دوسری نشست بعد نماز مغرب منعقد کی گئی، اس سیمینار میں جامعہ رحمانی کے تین اساتذہ مولانا رضاء الرحمان ...

ملک کے22ریلوے اسٹیشنوں پر یوم آزادی سے ڈجیٹل اسکرینز کام کرتے رہیں گے، ریلوے کی وراثت کے بارے میں کیوآر کوڈ پرمبنی پوسٹر بھی ان اسٹیشنوں پر چسپاں کیے گئے ہیں 

ریلوے اسٹیشنوں پر کیو آر کوڈ استعمال کرتے ہوئے ڈجیٹل میوزیم قائم کئے جانے کے وزیراعظم جناب نریندر مودی کے خواب کے پیش نظر ریلوے کی وزارت نے 15 اگست 2018 کو یوم آزادی کے موقع پر ملک کے 22 ریلوے اسٹیشنوں پر ڈجیٹل اسکرینز شروع کردئے ہیں ۔یہ ڈجیٹل اسکرینز عوام الناس میں ہندوستان کی ...

لال قلعہ کی فصیل سے وعدوں کی پھلجھڑیاں 2019 کے الیکشن کی تیاری ہیں ؟ طلاق بل پرمسلم خواتین جھانسے میں آنے والی نہیں ہیں:ڈاکٹرمنظورعالم 

لال قلعہ کی فصیل سے وزیر اعظم نریندر مودی کا یہ پانچواں خطاب بھی گذشتہ چار خطابات کی طرح حقائق کے خلاف اورچناوی جملوں پر مشتمل تھا ، انہوں نے یوم جمہوریہ جیسی تقریب کے موقع پر بھی عوام کے ساتھ جھوٹ بولنے اور ناکامیوں کوکامیابی شمار کرانے میں کوئی عار محسوس نہیں کی ۔انہوں نے ...