ڈی ایس پی گنپتی معاملہ میں میں بے قصور ہوں، استعفیٰ نہیں دوں گا: جارج

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th September 2017, 11:54 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 12؍ستمبر (ایس او نیوز؍عبدالحلیم منصور) ریاستی وزیر برائے ترقیات بنگلور کے جے جارج نے کہا کہ ڈی وائی ایس پی گنپتی کی خود کشی کے معاملے میں وہ بے قصور ہیں ان سے کوئی غلطی نہیں ہوئی ہے۔اسی لئے ان کے استعفیٰ دینے کا سوال ہی نہیں اٹھتا۔ سپریم کورٹ کی طرف سے اس معاملہ کی سی بی آئی جانچ کے احکامات کے پیش نظر ان کے استعفیٰ کیلئے بی جے پی کے مطالبے کو مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے جارج نے کہاکہ عدالت عظمیٰ نے معاملہ کی سی بی آئی جانچ کے احکامات ضرور دئے ہیں ، لیکن اپنے حکم میں کہیں بھی یہ نہیں کہاکہ جارج قصور وار ہیں۔اسی لئے عدالت کی طرف سے جانچ مکمل کرنے تین ماہ کا عرصہ دیاگیا ہے، یہ جانچ مکمل ہونے تک بی جے پی کے رہنما انتظار کریں۔ اگر جانچ میں پایا گیا کہ میں خاطی ہوں تو بی جے پی کو مطالبہ کرنے کی کوئی ضرورت نہیں میں خود مستعفی ہوجاؤں گا۔ جارج نے کہاکہ سیاسی بدنیتی کے سبب بی جے پی قائدین ان پر کیچڑ اچھالنے میں لگے ہوئے ہیں ۔ گنپتی معاملہ میں سی بی آئی کی جانچ کے بعد بھی یہی بات سامنے آئے گی کہ وہ بے قصور ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اس سے پہلے بھی آئی اے ایس آفیسر ڈی کے روی کی خود کشی کے معاملہ میں ان پر بی جے پی نے کیچڑ اچھالاتھا ، سی بی آئی جانچ نے حقیقت سامنے لالی۔ انہوں نے کہاکہ وہ بی جے پی کے بعض لیڈروں کی طرح برہماچاری کی زندگی نہیں گزارتے ان کے پیچھے بھی خاندان ہے ، بیوی بچے ہیں اور ذمہ داریاں ہیں ۔ بی جے پی لیڈروں کو اس کا احساس ہونا چاہئے۔ تحقیقات کا انتظار کریں، سچائی جو بھی ہے سامنے آئے گی۔ انہیں یقین ہے کہ بی جے پی کے لوگ جو کچھ کہتے ہیں وہ سچ نہیں ہے۔ بی جے پی لیڈروں سے انہوں نے گذارش کی کہ غیر ضروری طور پر انہیں بدنام نہ کیا جائے۔ اگر کوئی ذاتی دشمنی ہے تو کھل کر بتادیں ۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے دیڑھ دو سال سے ریاستی بی جے پی لیڈران بہت خاموش تھے، جیسے ہی امیت شا نے کرناٹک کا دورہ کیا ، ان لیڈروں کو یاد آگیا کہ انتشار پھیلانا ان کا اور ان کی پارٹی کا بنیادی مقصد ہے، اب یہ لوگ اپنے کام میں لگے ہوئے ہیں۔
 

ایک نظر اس پر بھی

سائبر سیکورٹی کے نظام کو مستحکم کرنا ضروری 

دہشت گرداانہ حملوں اور سماج دشمن سرگرمیوں پر نظر رکھنے کے لئے جدید ترین ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے سائبر سیکورٹی قائم کی جارہی ہے جو کہ اس شعبے میں ہندوستان کی ایک اہم پیش رفت ہے۔

کیا شیرورمٹھ کے سوامی کی موت کثرت شراب نوشی اور ناجائز تعلقات کے نتیجے میں ہوئی ؟معاملہ کی تحقیقات اور جانچ کیلئے 7ٹیمیں تشکیل 

اُڈپی شرورمٹھ کے سوامی لکشمی ورتیرتھ سوامی جی کی مشتبہ حالات میں ہوئی موت پر انہیں قتل کیے جانے کاشبہ ظاہر کیاگیاتھا جس کے نتیجہ میں اڈپی ضلع ایس پی نے اس معاملہ کی ہر زاویہ سے جانچ کے لیے پولیس کی 7ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں ۔ شرور علاقہ میں یہ افواہیں بھی اڑائی جارہی ہیں کہ سوامی ...