منگلورو کی ڈاکٹر سلمہ سُہاناباوقار امریکی ایوارڈ کے لئے منتخب

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th January 2019, 1:23 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

منگلورو 10جنوری (ایس او نیوز) منگلورو سے تعلق رکھنے والی ڈاکٹر سلمہ سُہانا جو اس وقت داونگیرے کی SSIMS and RC کالج میں سوپر اسپیشالیٹی کا کورس کررہی ہیں، انہیں امریکہ کی اکیڈیمی آف نیورولوجی نے اپنے باوقار ایوارڈ کے لئے چن لیا ہے۔ واضح رہے کہ انٹرنیشنل اسکالرشپ کے اس ایوارڈ کے لئے کے دنیا بھر سے 30ماہرین کو چنا گیا ہے جس میں ڈاکٹر سلمہ بھی شامل ہیں۔

ڈاکٹر سلمہ سہانا نے فادر مولر میڈیکل کالج سے ایم بی بی ایس کیا ہے اور اس دوران کالج کی بہترین میڈیکل اسٹوڈنٹ کی حیثیت سے انہیں گولڈ میڈل سے نوازا جاچکا ہے۔جبکہ راجیو گاندھی یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسس کی طرف سے وہ  دو گولڈ میڈل بھی حاصل کرچکی ہیں۔بعد میں ڈاکٹر سلمہ نے کیمپے گوڈا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسس بنگلورو سے جنر ل میڈیسن میں ایم ڈی کی ڈگری حاصل کی ۔

امریکہ کی اکیڈیمی آف نیورولوجی نے ڈاکٹر سلمہ کو ان کے ’سیریبرل وینس تھرمبوسس‘ کے موضوع پر تحقیقی مطالعے کے اعتراف میں اس ایوارڈ کے لئے منتخب کیا ہے جو کہ فلاڈیلفیا میں منعقد ہونے والے گلوبل کنونشن آف نیرولوجسٹس میں انہیں پیش کیا جائے گا۔

ڈاکٹر سلمہ سہانا نیو منگلورو پورٹ ٹرسٹ کے ریٹائرڈ ڈپٹی ڈائریکٹر خالد تنّیر باوی کی دختر ہیں او ر ان کے شوہر ڈاکٹر شکیل سعودی عربیہ کی قصیم یونیورسٹی میں اسسٹنٹ پروفیسر آف ڈینٹل سائنسس کی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ڈاکٹر سلمہ کے سسر موسیٰ کنہی نیر مولے ریٹائرڈ جج ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

ہندو لیڈر سورج نائک سونی نے اننت کمار ہیگڈے کو کہا،مودی حکومت کا داغدار وزیر؛ اُس کی مخالفت میں کام کرنے کے لئے نوجوانوں کی ٹیم تیار

ضلع شمالی کینرا میں ایک نوجوان ہندو لیڈر کے طور پر اپنی پہچان رکھنے والے کمٹہ کے سورج نائک سونی نے اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ’’ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں چل رہی مرکزی حکومت میں اننت کمار ہیگڈے کی حیثیت ایک داغداروزیر کی ہے۔ اور ایسا لگتا ہے کہ انہیں ...

منگلورو میں تیز رفتار بس کی ٹکر سے ایک پولیس کانسٹیبل ہلاک

گورپور علاقے میں ایک تیز رفتار پرائیویٹ ایکسپریس بس کی ٹکر سے ایک پولیس کانسٹیبل ہلاک ہوگیا ہے جس کی شناخت دیوی نگر کے رہنے والے مہیش لمانی کے طور پر کی گئی ہے۔مہیش فی الحال شہر کے آئی جی دفتر میں فرائض انجام دے رہاتھا۔

گنگولی توحید انگلش میڈیم اسکول میں والدین و سرپرستوں کے ساتھ انتظامیہ کی نشست  کا انعقاد

اسکول کے تعلیمی اصول وضوابط، سالانہ امتحانات کی تیاری جیسے اہم تعلیمی سرگرمیوں سے والدین و سرپرستوں کو واقف کرانے کے لئے 16مارچ برو ز سنیچر  ٹھیک 30-10بجے اسکول کے وسیع ہال میں ایک اہم نشست کا انعقاد کیاگیا ۔

بھٹکل کے بیلکے نوج علاقے میں غیر قانونی شراب ضبط

تعلقہ کے بیلکے گرام  پنچایت حدود کے نوج دیہات کے گنجی گیری فاریسٹ علاقے میں چھپا کر رکھی ہوئی 122لیٹر دیسی  کچی شراب  اور 2لیٹر دیسی  شراب بھٹکل ایکسائز افسران نے بدھ کی دوپہر ضبط کرلینے کا واقعہ پیش آیا ہے۔

انڈونیشیا میں سیلاب اور تودے سے مرنے والوں کی تعداد 89 ہوئی

  انڈونیشیا کے مشرقی علاقے پاپوا میں سیلاب اور مٹی کے تودے گرنے سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 89 ہو گئی ہے اور لاپتہ 74 لوگوں کی تلاش کے لئے ریسکیو آپریشن چلایا جا رہا ہے۔ راحت رسانی مہم میں مصروف حکام نے منگل کو یہاں یہ اطلاع دی۔

کرناٹک میں نوٹیفکیشن کے پہلے دن 6؍امیداروں کی نامزدگیاں داخل 

ریاست میں لوک سبھا الیکشن کے پہلے مرحلہ میں 14؍سیٹوں پر 18؍اپریل کو ہونے والے الیکشن کے لئے پرچہ نامزدگی کرنے کا آغاز ہوگیا ۔ پہلے دن چار حلقوں میں6؍ امیدواروں کی جانب سے 11؍ مزدگیاں داخل کئیں۔ یہ اطلاع ریاستی الیکشن افسر سنجیو کمار نے دی۔

بھٹکل کے ایک اُردو اسکول کے کمپائونڈ میں خون کے دھبے اور کھڑکی کے ٹوٹے گلاس پائے جانے کے بعد زبردست ہاتھاپائی ہونے کا شبہ

یہاں مدینہ کالونی ، محی الدین اسٹریٹ  میں واقع  اُردو ہائیر پرائمری اسکول  کی دیوار اور صحن پرجابجا  خون کے دھبے سمیت ایک کھڑکی کا شیشہ ٹوٹا ہوا پائے جانے  کے بعد شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ یہاں رات کو زبردست ہاتھاپائی یا ماردھاڑ کی واردات رونما ہوئی ہے۔ واقعے کے بعد  اسکول کے ...

اسد الدین اویسی نے حیدرآباد پارلیمانی سیٹ سے پرچہ نامزدگی کیا داخل

لنگانہ میں لوک سبھا انتخابات کے اعلامیہ کی اجرائی کے بعد سب سے پہلے صدر مجلس و رکن پارلیمنٹ حیدرآباد بیرسٹر اسدالدین اویسی نے آج حیدرآباد لوک سبھا  سیٹ سے مجلس کے امیدوار کی حیثیت سے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا ہے۔

انڈونیشیا میں سیلاب سے 77 لوگوں کی موت، 4000 سے زیادہ لوگوں کو بچانے کی کوشش

انڈونیشیا کے مشرقی علاقہ کے پاپوا صوبے میں سیلاب اور مٹی کے تودے گرنے کے واقعات میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 77 ہو گئی ہے۔ ان حادثوں میں 116 زخمی بھی ہوئے ہیں۔  وہیں تقریبا 4000 لوگوں کو بچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔