بارش کے متاثرین کی بھرپور مدد کرنے شیوکمار کا مطالبہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 18th August 2018, 10:05 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،18؍اگست(ایس او نیوز) ریاستی وزیر برائے آبی وسائل ومیڈیکل ایجوکیشن ڈی کے شیوکمار نے کہا ہے کہ ریاست کے کورگ ، ملناڈ اور پڑوسی ریاست کیرلا میں مسلسل بارش کے سبب سیلاب کی جو صورتحال پیدا ہوئی ہے اس سے متاثرہ خاندانوں کی مدد کے لئے ریاستی عوام کو فراخدلی سے قدم بڑھانا چاہئے۔

اپنی رہائش گاہ پر ایک اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ کورگ اور منگلور کے علاوہ کئی علاقوں میں لوگوں نے اپنے تمام اسباب گنوا لئے ہیں ، ان لوگوں کے پاس کھانے پینے کی قلت پیدا ہوگئی ہے، فوری طور پر ان لوگوں کو بنیادی سہولت فراہم کرنے کے لئے ضروری قدم اٹھانے ہوں گے۔ وزیر موصوف نے کہاکہ بنگلور رورل اور رام نگرم ضلع کے علاوہ ہباگوڈی، پینیا ،نلمنگلا ، بڑدی اور ہاروہلی کے انڈسٹریل ایریا میں کام کرنے والے صنعت کاروں سے زیادہ مدد طلب کی جائے گی۔

انہوں نے کہاکہ ریڈی میڈ کارخانوں میں بغیر فروخت رہ چکے کپڑے بطور عطیہ دینے کی گزارش صنعت کاروں سے کی گئی ہے۔ ان سے کہاگیا ہے کہ امداد ی اشیاء رام نگرم کے ڈپٹی کمشنر تک پہنچا دی جائیں۔ انہوں نے کہاکہ محکمۂ آب پاشی کے انجینئروں سے کہا گیا ہے کہ حکم کے سبھی کنٹراکٹروں سے گز ارش کی جائے کہ متاثرہ لوگوں کی مدد کے لئے بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔ اس موقع پر ڈی کے شیوکمار نے بتایاکہ بارش کی زیادتی اور پڑوسی ریاست کیرلا سے بارش کا پانی بہا دئے جانے کی وجہ سے ریاست کے بعض آبی ذخائر میں درڑایں پڑ گئی ہیں۔

انہوں نے بتایاکہ کاویری طاس میں آنے والے کرشنا راجہ ساگر، کبنی اور ہیماوتی آبی ذخائر میں واضح دراڑ دیکھی گئی ہے۔اس کے علاوہ تنگا بھدرا ڈیم میں بھی دراڈ کی اطلاع ملی ہے۔ بارش کا پانی کم ہوتے ہی ان کی مرمت کا کام جنگی پیمانے پر شروع کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ جن آبی ذخائر زیادہ پانی جمع ہے وہاں باہر بہاؤ بڑھا کر آبی ذخائر کو بچانے افسروں کو ہدایت دی گئی ہے۔

انہوں نے کہاکہ اس بار ریاست کے آبی ذخائر میں جتنا پانی جمع ہوا ہے وہ اپنے آپ میں ایک ریکارڈ ہے، ماضی میں اس قدر زیادہ مقدار میں پانی جمع ہونے کا کوئی ریکارڈ محکمے کے پاس موجود نہیں ہے۔ مہادائی آبی تنازعے کے متعلق ٹریبونل کے قطعی فیصلے کے بارے میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے ڈی کے شیوکمار نے بتایا کہ ریاستی حکومت نے اس سلسلے میں ٹریبونل کی طرف سے جاری کئے گئے فیصلے کا جائزہ لیا ہے اور ماہرین قانون سے بھی گزارش کی ہے کہ اس فیصلے کا تفصیلی جائزہ لے کر حکومت کے سامنے اپنی رائے پیش کریں۔

بیشتر ماہرین نے فیصلے کا جائزہ لینے کے بعد یہی رائے دی ہے کہ ٹریبونل کے فیصلے کا عدالت میں چیلنج کیا جائے ۔ وزیر موصوف نے کہاکہ اس سلسلے میں آنے والے دنوں میں بھی ریاستی حکومت کی طرف سے جلد بازی میں کام نہیں لیا جائے گا بلکہ تمام سے مشوروں کے بعد مہادائی مسئلے سے متاثرہ کسانوں کو راحت پہنچائی جاسکے ایسا قدم اٹھایا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

ملپے سے گم شدہ ماہی گیر کشتی معاملہ میں نیا موڑ: نیوی کے افسران نے مانا کہ جنگی جہاز سے ہواتھا کشتی کا تصادم

مہاراشٹرا میں سندھو درگ کے قریب سمندر میں ماہی گیری کے دوران مچھیروں سمیت لاپتہ ہونے والی کشتی ’سوورنا تریبھوجا‘ کے تعلق سے اب ایک نیا موڑ سامنے آیا ہے اور تحقیقاتی افسران کو یقین ہوگیا ہے کہ اس ماہی گیر کشتی کی ٹکر بحریہ کے ایک جنگی جہاز’آئی این ایس کوچی‘ سے ہوئی اور ماہی ...

کاروار بوٹ حادثہ: زندہ بچنے والوں نے کیا حیرت انگیز انکشاف قریب سے گذرنے والی بوٹوں سے لوگ فوٹوز کھینچتے رہے، مدد نہیں کی؛ حادثے کی وجوہات پر ایک نظر

کاروار ساحل سمندر میں پانچ کیلو میٹر کی دوری پر واقع جزیرہ کورم گڑھ پر سالانہ ہندو مذہبی تہوار منانے کے لئے زائرین کو لے جانے والی ایک کشتی ڈوبنے کا جو حادثہ پیش آیا ہے اس کے تعلق سے کچھ حقائق اور کچھ متضاد باتیں سامنے آرہی ہیں۔ سب سے چونکا دینے والی بات یہ ہے کہ کشتی جب  اُلٹ ...

گرفتاری کے خوف سے رکن اسمبلی جے این گنیش روپوش

بڈدی کے ایگل ٹن ریسارٹ میں ہوسپیٹ کے رکن اسمبلی آنند سنگھ پر حملہ کرنے والے رکن اسمبلی جے این ۔ گنیش کے خلاف بڑدی پولیس تھانہ میں ایف آئی آر داخل کرنے کی خبر کے بعد سے گنیش لاپتہ ہیں ۔

وسویشوریا یونیورسٹی رجسٹرار پر200کروڑ کے گھپلے کا الزام گورنر نے چھان بین کے لئے وظیفہ یاب جج کو مقرر کیا ۔ تعاون کرنے ملزم کو ہدایت

وسویشوریا ٹکنالوجیکل یونیورسٹی (وی ٹی یو) کے رجسٹرار اب مشکل میں پڑگئے ہیں۔ گورنر واجو بھائی روڈا بھائی والا نے جو یونیورسٹی کے چانسلر بھی ہیں،200کروڑ روپئے تک کے گھوٹالے کی چھان بین کا حکم دیا ہے۔

لنگایت طبقہ کے مذہبی رہنما شیوکمارسوامی کی آخری رسومات ادا، اسلامی تعلیمات اوراردو زبان سے بھی تھی واقفیت

یاست کرناٹک کی ایک عظیم شخصیت، لنگا یت طبقہ کے مذہبی رہنما، شیوکمارسوامی جی کی آج آخری رسومات انجام دی گئیں۔ بنگلورو کے قریب واقع ٹمکورشہرمیں شیوکمارسوامی جی کولنگایت رسومات کے مطابق دفنایا گیا۔ سدگنگا مٹھ میں آج اورکل لاکھوں کی تعداد میں لوگوں نے سوامی جی کا آخری ...

پُتور میں پیک آپ کار کی اومنی سے خطرناک ٹکر؛ ایک کی موت، دو شدید زخمی

ماروتی اومنی اور  پیک آپ کے درمیان ہوئی خطرناک ٹکر کے  نتیجے میں اومنی پر سوار ایک شخص کی موت واقع ہوگئی، جبکہ دوسرا شدید زخمی ہوگیا، حادثے میں پیک آپ کار ڈرائیور کو بھی چوٹیں آئی ہیں ۔ حادثہ منگل صبح مُکوے مسجد کے سامنے   پیش آیا۔

شیرور میں کار کی ٹکر سے بائک سوار کی موت

پڑوسی علاقہ شیرور نیشنل ہائی وے پر ایک کار کی ٹکر میں بائک سوار کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جس کی شناخت محمد راشد ابن محمد مشتاق (21) کی حیثیت سے کی گئی ہے جو شیرور  بخاری کالونی کا رہنے والا تھا۔

ہائی کمان کہے تو وزارت چھوڑ نے کیلئے بھی تیار : ڈی کے شیو کمار

ریاست میں سیاسی گہما گہمی کا فی تیز ہونے لگی ہے ۔ ایک طرف جہاں کانگریس اور جنتادل( سکیولر) اپنی مخلوط حکومت کو بچانے میں لگے ہیں وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے آپریشن کنول کے ذریعہ دیگر پارٹیوں کے اراکین اسمبلی کو خریدکر برسر اقتدار آنے کے حربے جاری رکھے ہیں۔