اکھنڈسرینواس مورتی کو کانگریس ٹکٹ کیلئے ضمیر احمد کی حکمت عملی، جے ڈی ایس کے باغی رکن اسمبلی سے شیوکمار کی ملاقات

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th January 2018, 12:11 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،9؍جنوری(ایس او نیوز) ریاست کرناٹک میں اسمبلی انتخابات کے لئے صرف چار ماہ باقی رہ گئے ہیں۔ اس لئے ریاست بھر میں لیڈروں نے سرگرمیاں تیز کردی ہیں۔ جے ڈی ایس کے سات باغی اراکین اسمبلی کانگریس میں باقاعدہ شامل ہونے کیلئے تمام تیاریاں تقریباً مکمل کرلئے ہیں۔ بی زیڈ ضمیر احمد خان اور چلوارائے سوامی جے ڈی ایس کے باغی اراکین اسمبلی کی قیادت کررہے ہیں۔ آئندہ ہونے والے اسمبلی انتخابات ان باغی اراکین اسمبلی کو ان کے موجودہ اسمبلی حلقوں سے کانگریس ٹکٹ تقریباً طے ہے۔ ذرائع کے مطابق کئی مرتبہ ان اراکین اسمبلی سے کانگریس صدر راہل گاندھی سے راست بات چیت ہوچکی ہے۔ بنگلور میں پلکیشی نگر اسمبلی حلقہ ریزروحلقہ ہے ، جے ڈی ایس کے باغی رکن اسمبلی اکھنڈ سرینواس مورتی اس حلقے کی نمائندگی کررہے ہیں۔ آئندہ اسمبلی انتخابات میں اس حلقے سے کانگریس کی ٹکٹ پر چناؤ لڑنے شہر کے مےئر سمپت راج کی نظر پلکیشی نگر پر تھی۔ ریاستی وزیر برائے توانائی وکے پی سی سی تشہیری کمیٹی کے صدر ڈی کے شیوکمار مےئر کے گاڈفادر ہیں۔ اس حلقے سے اگر سمپت راج کو ٹکٹ دیاجاتاتو اکھنڈ سرینواس مورتی کو کانگریس ٹکٹ سے محروم ہوناپڑتا۔ اس صورتحال کو محسوس کرتے ہوئے بی زیڈ ضمیر احمد خان اپنے ساتھی کی ٹکٹ محفوظ کرنے کے مقصدسے ایک حکمت عملی کے تحت ڈی کے شیوکمار کو آج صبح اکھنڈ سرینواس مورتی کی رہائش گاہ لے جاکر ان سے ملاقات کروائی، جہاں پر تمام لیڈروں کے لئے ناشتہ کا بھی انتظام کیاگیاتھا۔ اس موقع پر مورتی نے شیوکمار اور ضمیر احمدخان کو تہنیت پیش کی۔ اس موقع پر ان لیڈروں نے ریاست کی سیاسی صورتحال پرکافی دیر تک تبادلہ خیال بھی کیا۔ حال ہی میں ریاستی وزیراعلیٰ سدارامیا کے ساتھ دہلی میں جے ڈی ایس کے باغی اراکین اسمبلی نے راہل گاندھی اور دیگر سینئر لیڈروں سے ملاقات کی تھی۔ اس موقع پر کانگریس ہائی کمان نے انہیں پارٹی میں شامل کرنے گرین سگنل دیدیاہے۔ کہاجارہاہے کہ جے ڈی ایس کے مزید دواراکین اسمبلی عنقریب پارٹی چھوڑکر کانگریس میں شامل ہوجائیں گے ۔ اگلے ماہ راہل گاندھی شہر بنگلور آرہے ہیں، اس موقع پر جے ڈی ایس کے باغی اراکین اسمبلی کانگریس میں شامل ہونے کا امکان ہے اس سلسلہ میں پارٹی میں صلاح مشورہ جاری ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

وقف بورڈ انتخابات: دولت سے نہیں اصول وضوابط کے تحت ہوں گے:ضمیراحمدخان

ریاستی وقف بورڈ کے انتخابات جلد کروانے کا کوئی امکان نظر نہیں آتا ۔ پچھلے ڈھائی سال سے اڈمنسٹریٹر کے ذریعہ بورڈ چلایا جارہا ہے ۔وقف قانون کے تحت اتنی دیر تک بورڈ کیلئے اڈمنسٹریٹر مقرر کرنے کی گنجائش ہی نہیں۔

باگلکوٹ شکر کارخانے میں دھماکہ؛ چھ ہلاک؛ کئی زخمی

  کرناٹک کے باگلكوٹ ضلع کے مدھول میں نراني شوگر لمیٹڈ میں بوائلر میں  دھماکہ   ہونے کے نتیجے  میں 6 افراد کی جان چلی گئی، جبکہ نو سالہ بچہ سمیت  آٹھ  لوگ شدید زخمی ہو گئے۔ شکر کا یہ  کارخانہ  نرانی  یونٹ کا حصہ ہے اوریہ  نراني بھائیوں اورسابق بی جے پی وزیر مرگیش  نراني اور ...

کاروار: کائیگا پلانٹ توسیعی منصوبہ۔ عوامی احتجاج کے درمیان افسران نے منعقد کیا عوامی اجلاس

کائیگا جوہری توانائی اسٹیشن میں مزید دو یونٹس کا اضافہ کرنے کے منصوبے پر عوامی رائے جاننے کے لئے سرکاری افسران نے کائیگا ٹاؤن شپ میں اجلاس منعقد کیا جبکہ ٹاؤن شپ سے باہر موجودہ اور سابق اراکین اسمبلی کی قیادت میں سیکڑوں افراد نے توسیعی منصوبے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔

بنگلورومیٹرو برڈج میں خرابی کا نائب وزیراعلیٰ پرمیشور نے معائنہ کیا

شہر کے ایم جی روڈ پر ٹرینٹی سرکل کے قریب ایم جی روڈ بیپنا ہلی میٹرو روٹ کے پلر نمبر 155کے قریب ایک بیم میں دراڑ کا آج نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور نے معائنہ کیا اور کہاکہ اس سلسلے میں مرمت کا کام جاری ہے۔