سعودی خواتین کو طلاق کی صورت میں بچوں کی فوری تحویل کا حق

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th March 2018, 12:15 PM | خلیجی خبریں |

ریاض 12مارچ (ایس او نیوز؍ آئی این ایس انڈیا ) سعودی عرب کے وزیر عدل اور سپریم جوڈیشیل کونسل کے صدر ولید الصمعانی نے مملکت کی تمام عدالتوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ طلاق یافتہ سعودی خواتین کو بچوں کی تحویل کا حق فوری طور پر دے دیں لیکن اس کی ایک شرط یہ ہے کہ ان کا اپنے سابق خاوند سے کوئی تنازع نہیں ہونا چاہیے۔اس حکم کے تحت اب سعودی ماؤں کو اپنے بچوں کی شہری خدمات اور مالی فوائد سے استفادے کا حق حاصل ہو جائے گا اور اس سلسلے میں انھیں کسی قانونی چارہ جوئی کی ضرورت بھی پیش نہیں آئے گی۔اگر طلاق یافتہ سعودی خاتون کے معاملے میں یہ بات ثابت ہو جاتی ہے کہ اس کا اپنے سابقہ خاوند سے کوئی تنازع نہیں ہے تو پھر وہ اپنے بچوں کی شہری خدمات، سفری دستاویزات، تعلیمی خدمات سمیت تمام امور از خود انجام دے سکے گی۔اس حکم کا مقصد یہ یقینی بنانا ہے کہ ایک بچے کو خاندان کے قانونی امور کا بوجھ نہ برداشت کرنا پڑے اور وہ کسی قانونی جنگ سے متاثر نہ ہو۔تاہم ایسی طلاق یافتہ ماں اپنے بچے یا بچوں کے ساتھ بیرون ملک سفر نہیں کرسکے گی اور اس صورت میں اس کو ایک جج سے قانونی اجازت نامہ حاصل کرنا ہوگا۔واضح رہے کہ سعودی وزیر عدل کا یہ اقدام بھی مملکت میں خواتین کے حقوق سیمتعلق ایشوز کے حل کے لیے کوششوں کا عکاس ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل جامعہ اسلامیہ وفد کی جدہ آمد پر افطاری پروگرام ؛ بھٹکل کے معروف نابینا حافظ انیس بڈو کو جماعت کی جانب سے عمرہ کا اعزاز

بھٹکل کمیونٹی جدہ کی جانب سے ممبران کے لئے ہوٹل ٹرائی ڈینٹ میں افطاری کا اہتمام کیا گیا۔ اور اس پروگرام میں جامعہ اسلامیہ کے وفد  مولانا انصار خطیب مدنی و مولانا ارشاد صدیقہ ندوی کا پُرتباک استقبال ہوا

دبئی میں شیرور اسوسی ایشن کے زیر اہتمام گیٹ دو گیدر؛مرحوم باشو بھائی کی خدمات کو خراج عقیدت

شیرور اسوسی ایشن کے زیر اہتمام البستان ریسیڈنس میں شیروریئن کا گیٹ ٹو گیدر منعقد کیا گیا۔ جس میں گرین ویلی اسکول شیرور کے بانی مرحوم جناب عبدالقادر عرف باشو بھائی کو ان کی بے لوث خدمات پر خراج عقیدت پیش کیا