ہارکے باوجود بی جے پی کی عقل ٹھکانے نہیں لگی: کمار سوامی

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 7th November 2018, 11:19 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو۔7؍نومبر(ایس او نیوز) وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے ضمنی انتخابات میں حکمران اتحاد کی کامیابی پر ریاستی عوام کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان انتخابات میں ہار کے باوجود بی جے پی کی عقل ٹھکانے نہیں لگی ہے، ریاست کی مخلوط حکومت کو گرانے کے لئے بی جے پی کی طرف سے ہونے والی تازہ کوشش کی مذمت کرتے ہوئے کمار سوامی نے کہاکہ بعض کانگریس اور جے ڈی ایس اراکین اسمبلی کو لالچ دینے اور انہیں وزارت کے ساتھ کروڑوں کی رقم دینے کے وعدے ایک بار پھر کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مخلوط حکومت کے متعلق ضمنی انتخابات میں ریاست کے عوام نے اپنا فرمان جاری کیا ہے اور کانگریس جے ڈی ایس اتحاد پر اپنی منظوری کی مہر ثبت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجز شیموگہ چار حلقوں میں جو جیت حکمران اتحاد نے درج کی ہے اس سے آنے والے دنوں میں یہ اتحاد اور بھی مضبوط ہوکر کام کرے گا، بہت جلد کانگریس اور جے ڈی ایس کے قائدین مل کر پارلیمانی انتخابات کے لئے سیٹوں کی تقسیم کے فارمولے کو قطعیت دیں گے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ ان انتخابات کے نتائج نے عوام کے تئیں حکومت کی ذمہ داریوں کو اور بھی بڑھادیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نے کہاکہ آنے والے دنوں میں بھی ریاست کے سیاسی منظر نامے سے بی جے پی کے وجود کو کم کرنے کے لئے جے ڈی ایس جو بھی قربانی دینی پڑے اس کے لئے تیار ہے۔ انہوں نے کہاکہ ریاستی حکومت کی طرف سے آنے والے دنوں میں ریاستی عوام کی فلاح وبہبود کے لئے تیار کی گئی اسکیموں کو موثر طریقے سے لاگو کیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس تشہیری کمیٹی کے نئے صدر ایچ کے پاٹل نے عہدہ کا جائزہ لے لیا ملک کواچھے دن کا وعدہ کرکے اقتدار پرآئی بی جے پی کے لیڈروں نے ملک کوبے روزگاروں کا مرکز بنا دیاہے:وینو گوپال

سابق ریاستی وزیر ایچ کے پاٹل نے آج کرناٹک پردیش کانگریس تشہیری کمیٹی کے صدر کی حیثیت سے عہدہ کاجائزہ لے لیا ۔

بی جے پی کوابھیشک منوسنگھوی نے کہا ، کرناٹک میں کھلواڑہوتاتوقانونی منصوبہ تیارتھا

کرناٹک کے تازہ سیاسی واقعات کے پس منظر میں کانگریس کے سینئر لیڈر ابھیشیک منو سنگھوی نے جمعرات کو کہا کہ اگر بی جے پی ریاست کی مخلوط حکومت کو غیر مستحکم کرنے کے لیے اپنے ’آپریشن لوٹس‘پر آگے بڑھتی تو اس کومنہ توڑجواب دینے کے لیے کانگریس نے منصوبہ تیار کر رکھا تھا۔