ائمہ مساجد کوجلد تحفہ دیں گے امانت اللہ خان، وقف بورڈ کے اماموں کی تنخواہ دوگنا کرنے کا فیصلہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th September 2018, 12:01 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،10؍ ستمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)عام آدمی پارٹی کا چہرہ اوراوکھلا کے ممبراسمبلی امانت اللہ خان دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین کا دوبارہ چارج سنبھالتے ہی ایکشن موڈ میں آگئے ہیں۔ ایک طرف مبینہ بدعنوان افسران پر کارروائی کا سلسلہ جاری ہے تو دوسری طرف ائمہ کو بھی تحفہ دینے کی تیاری ہے۔

اطلاعات کے مطابق امانت اللہ خان نے عہدہ سنبھالنے کے بعد گزشتہ روزہوئی میٹنگ میں یہ فیصلہ کیا ہے کہ وقف بورڈ کے ماتحت جومساجد ہیں، ان کے ائمہ کرام کی تنخواہوں کودوگنا کیاجائے گا۔ روزنامہ 'خبریں' کے مطابق بورڈ کی میٹنگ میں یہ فیصلہ کیا جاچکا ہے، جس کا محض سرکاری اعلان ہونا باقی ہے۔

وقف بورڈ کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ خاکہ تیار کرلیا گیا تھا، میٹنگ میں فیصلہ لئے جانے کے بعد اب فائل محکمہ ریوینیوکے پاس بھیج دی گئی ہے۔ وہاں سے منظوری ملنے کے بعد یہ نافذ ہوجائے گا۔ اس لئے جب تک فائل دہلی حکومت کے محکمہ ریوینیو کے پاس سے واپس نہیں آجاتی ہے، جب تک باضابطہ طور پربیان جاری نہیں کیا جاسکتا۔ وہیں آل انڈیا امام فاونڈیشن کے چیئرمین مولانا محمد عارف قاسمی نے بھی بتایا کہ ہاں وقف بورڈ کی میٹنگ میں فیصلہ ہوچکا ہے، بس کاغذی کارروائی باقی ہے، جلد ہی ائمہ مساجد کی تنخواہیں دوگنی ہوجائیں گی۔

اس سے قبل امانت اللہ خان نے چارج سنبھالنے کے بعد کہا کہ دہلی کے سبھی مساجد کے ائمہ کو وقف بورڈ سے تنخواہ دی جائے گی۔ کرائے داری کو بڑھائیں گے۔زمینوں پر قبضوں کوہٹائیں گے۔ اسے محفوظ کریں گے اوراوقاف کی جائیداد پراسکول بنائیں گے۔

واضح رہے کہ دہلی وقف بورڈ کی جانب سے تقریباً دو ہزارائمہ کو تنخواہیں دی جاتی ہیں۔ ابھی تک امام کو 10 ہزا رروپئے اورموذن کو 9 ہزارروپئے کی تنخواہ دی جاتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

الیکشن کمیشن کا حلف نامہ - گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات قانون کے مطابق، کمزور پڑ رہی کانگریس 

گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات کو لے کر کانگریس کی درخواست پر الیکشن کمیشن نے حلف نامہ داخل کیا ہے الیکشن کمیشن نے دو سیٹوں پر الگ الگ انتخابات کرانے کے اپنے فیصلے کو برقرار رکھا۔

بی ایس این ایل کی حالت خراب؛ ملازمین کو جون کی تنخواہ دینے کے لیے نہیں ہیں رقم

رکاری ٹیلی کام کمپنی بی ایس این ایل نے حکومت کو ایک خط  بھیجا ہے، جس میں کمپنی نے آپریشنز جاری رکھنے میں تقریبا نااہلی ظاہر کی ہے۔کمپنی نے کہا ہے کہ رقم میں  کمی کے سبب کمپنی کے ملازمین کو  جون ماہ کی تنخواہ  تقریبا 850 کروڑ روپے  دے پانا مشکل ہے۔کمپنی پر ابھی قریب 13 ہزار کروڑ ...