داتی مہاراج ریپ کیس: تحقیقات میں خراب رویہ پر کورٹ کی سی بی آئی کو پھٹکار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 24th January 2019, 12:57 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،24جنوری(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا) داتی مہاراج کے خلاف عصمت دری معاملے کی تحقیقات کر رہی مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کو دہلی کی ساکت عدالت نے سخت پھٹکار لگائی ہے۔داتی مہارج کیس کی اب تک کی تحقیقات میں خراب رویہ اپنانے کے لئے کورٹ نے سی بی آئی کو پھٹکار لگائی ہے۔آپ کو بتا دیں کہ داتی مہاراج پر ان کے ہی آشرم کی ایک عورت سے عصمت دری جیسے سنگین الزام لگائے ہیں۔اس معاملے میں ایف آئی آر درج ہوئے ایک سال سے زیادہ کا وقت گزر چکا ہے، لیکن ابھی تک داتی مہاراج کی گرفتاری تک نہیں ہوئی ہے۔دہلی کی ساکت کورٹ نے پوچھا کہ ہائی کورٹ کے حکم کے باوجود 3 ماہ کے اندر سی بی آئی نے اپنی تفتیش مکمل کرکے عدالت میں اسٹیٹس رپورٹ کیوں نہیں دی۔سی بی آئی بدھ کو بھی کورٹ سے اس معاملے میں وقت کا مطالبہ کر رہی تھی، لیکن کورٹ نے اس سے صاف انکار کر دیا۔کورٹ اس بات پر بھی ناراض تھا کہ گزشتہ سال 3 اکتوبر کو ہائی کورٹ نے سی بی آئی جانچ کا حکم دیا تھا، جس میں3 ماہ کے اندر تفتیش مکمل کرنے کی بات کہی گئی تھی۔یہ میعاد 3 جنوری کو ختم بھی ہو گئی، لیکن ابھی تک سی بی آئی کی جانب سے معاملے میں داتی مہاراج کی کسٹوڈیل انٹیرووگیشن تک کورٹ میں کوئی عرضی نہیں آئی ہے۔اس سے پہلے معاملے میں داتی مہارج پہلی بار ساکت کورٹ کے سامنے پیش ہوئے اور عدالت نے ایک لاکھ روپے کے مچلکے پر داتی مہاراج کو ضمانت دے دی۔دہلی کی ساکیت کورٹ نے داتی کے ساتھ ساتھ ان کے تین بھائیوں کو بھی ضمانت دے دی ہے۔اس معاملے میں دہلی پولیس پہلے ہی اپنی چارج شیٹ ساکیت کورٹ میں داخل کر چکی ہے۔ چارج شیٹ پر ساکیت کورٹ کی جانب سے نوٹس بھی لیا جا چکا ہے۔داتی مہارج کو عدالت میں پیش ہونے کے لئے سمن جاری کیا گیا تھا۔داتی مہارج کو کورٹ سے ملی ضمانت کی ایک بڑی وجہ یہی ہے کہ جانچ ایجنسی چاہے وہ دہلی پولیس رہی ہو یا پھر کوئی اپنی پختہ تحقیقات کر کے داتی مہارج کے خلاف ٹھوس ثبوت کورٹ کے سامنے پیش نہیں کر سکی ہے۔اس معاملے میں متاثرہ نے دہلی ہائی کورٹ میں عرضی داخل کرکے کہا تھا کہ دہلی پولیس معاملے کو کمزور کرنے کی کوشش کر رہی ہے اور داتی مہاراج کو بچایا جا رہا ہے، جس کے بعد سی بی آئی کو معاملے کی تحقیقات سونپ دی گئی تھی۔اس معاملے کی اگلی سماعت اب ساکیت کورٹ میں8 فروری کو کی جائے گی۔مانا جا رہا ہے کہ کورٹ کی اس پھٹکار کے بعد اب سی بی آئی اس معاملے میں سنجیدہ رویہ اپنے گی اور جلد سے جلد چارج شیٹ داخل کرے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

سیلاب اور بارش سے کیرالہ، کرناٹک، مہاراشٹر وغیرہ بے حال، اَب دہلی پر منڈلایا خطرہ

ہریانہ کے ہتھنی كنڈ بیراج سے گزشتہ 40 برسوں میں سب سے زیادہ آٹھ لاکھ سے زیادہ کیوسک پانی جمنا میں چھوڑے جانے کے بعد دہلی اور ہریانہ میں دریاکے کنارے کے آس پاس کے علاقوں میں سیلاب کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے اور اگلے 24 گھنٹے انتہائی سنگین بتائے جا رہے ہیں۔