سی وی سی کی سفارش پر چھٹی پر گئے تھے سی بی آئی کے سینئر افسر:ارون جیٹلی

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 9th January 2019, 12:07 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی:8/جنوری (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)  وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے منگل کو کہا کہ سی بی آئی کے دو سینئر افسران کو چھٹی پر بھیجنے کا حکومت کا فیصلہ مرکزی ویجلنس کمیشن (سی وی سی)کی سفارش پر لیا گیا تھا۔سپریم کورٹ کی طرف سے سی بی آئی ڈائریکٹر آلوک ورما کو عہدے پر بحال کرنے کا فیصلہ سنائے جانے کے بعد پارلیمانی احاطے میں نامہ نگاروں سے جیٹلی نے کہا کہ حکومت عدالت کے احکامات کی تعمیل کرے گی۔ورما اور سی بی آئی کے اسپیشل ڈائریکٹر راکیش استھانہ کو چھٹی پر بھیجے جانے کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت نے یہ فیصلہ سی بی آئی کی خودمختاری کو بچائے رکھنے کے لئے کیا،حکومت نے سی بی آئی کے دو سینئر افسران کو چھٹی پر بھیجنے کی کارروائی سی وی سی کی سفارش پر کی گئی تھی ۔جیٹلی نے کہا کہ سی بی آئی کی غیر جانبدارانہ اور امتیاز سے صاف طریقہ کار کے وسیع مفاد کو دیکھتے ہوئے عدالت نے واضح طور پر سی بی آئی ڈائریکٹر کو ملی سیکورٹی کو مضبوط کیا ہے۔وہیں عدالت نے احتساب کے نظام کا راستہ بھی نکالا ہے،عدالت کی ہدایات کو ضرور یقینی بنایا جائے گا۔ورما کے حقوق واپس لے لینے کے مرکز کو فیصلے کو درکنار کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے ورما کی بحالی کر دی لیکن ان پر لگے بدعنوانی کے الزامات کی سی وی سی کی انکوائری ختم ہونے تک انہیں کوئی بھی بڑا پالیسی فیصلہ لینے سے روک دیا۔سپریم کورٹ نے کہا کہ ورما کے خلاف کسی بھی فیصلے کو بااختیار کمیٹی کی طرف سے لیا جاسکتا ہے جو سی بی آئی ڈائریکٹر کا انتخاب کرتا ہے۔واضح رہے کہ ورما کو 23اکتوبرکو مرکزی حکومت کے فیصلے کے بعدچھٹی پربھیج دیا گیا تھا اوروہ 31جنوری کو ریٹائرمنٹ بھی ہونے والے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی