جنسی تشدد کے خلاف قانون نافذ نہ ہونا شرمناک: سی پی ایم کی سینئر لیڈر برندا کرات

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th October 2018, 9:10 PM | ملکی خبریں |

حیدرآباد،10؍ اکتوبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)مارکسی کمیونسٹ پارٹی (سی پی ایم) کی سینئر لیڈر برندا کرات نے بدھ کو کہا کہ یہ انتہائی شرمناک ہے کہ ملک کے زیادہ تراداروں میں کام کی جگہ پر جنسی حملے کے ساتھ نمٹنے والے قانون نافذ نہیں کئے گئے۔ملک میں زور پکڑ رہے ’می ٹو‘مہم کے درمیان کرات نے یہ تبصرہ کیا ہے۔جنسی بدسلوکی کے واقعات کو لے کر کئی خواتین سوشل میڈیا پر شیئر کر رہی ہیں۔کرات نے کہا کہ خاتون کی غیر رضامندی کا مطلب ہے کہ جنسی نوعیت والا کسی بھی طرح کا کام جنسی تشدد کے دائرے میں آئے گا۔ایسے مردوں کو سزا ملنی چاہیے۔یہ شرمناک ہے کہ زیادہ تر کام کی جگہوں پر اس سلسلے میں بنایا گیا قانون نافذ نہیں ہے۔پارٹی سیاستدانوں کی رکن اور آل انڈیا ڈیموکریٹک خواتین تنظیم کی سرپرست نے کہا کہ مردوں کو رضامندی کا مطلب سکھاناہوگا ۔ کرات نے کہا کہ خواتین خاموش رہنے اور خود ہی کو مورد الزام سمجھے جانے کی ثقافت کو اب توڑ رہی ہیں جو ان حکمراں مردوں کی ڈھال بنتا تھا۔

ایک نظر اس پر بھی

گجرات کیس:مودی اور امت شاہ کو بہار میں انتخابی مہم نہیں کرنے دیں گے: کانگریس 

گجرات معاملے کو لے کر بہار کی سیاسی فضا گرمائی ہوئی ہے۔ جہاں ایک طرف بی جے پی، کانگریس پر بہار کے لوگوں کے خلاف ہوئے تشدد کے لئے ذمہ دار بتا رہی ہے، وہیں اب کانگریس نے اپنے تیور تیکھے کر دیئے ہیں۔

گنگاصفائی بھی جملہ نکلا،آلودگی بڑھنے کی رپورٹ پرکانگریس کاحملہ

کانگریس نے گزشتہ چار سال کے دوران گنگا میں آلودگی بڑھنے کی خبرکے سلسلے میں بھارتیہ جنتا پارٹی پر طنز کرتے ہوئے جمعرات کو کہا ہے کہ 2014کے عام انتخابات میں صاف شفاف گنگا کے وعدے کے ساتھ اقتدار میں آئی مودی حکومت کا ’نمامی گنگا‘پروگرام بھی جملہ ثابت ہوا ہے۔