نجی اسپتالوں کے متعلق بل پر ایوان کمیٹی رپورٹ پیش 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th November 2017, 11:51 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،14؍نومبر(ایس اونیوز؍عبدالحلیم منصور) نجی اسپتالوں پر لگام کسنے کے سلسلے میں مجوزہ بل کا جائزہ لینے کیلئے قائم مشترکہ ایوان کمیٹی نے آج ایوان میں اپنی رپورٹ پیش کردی، تاہم کمیٹی نے اس بل کے متعلق اپنی کوئی سفارش پیش نہیں کی۔ اس قانون کے مطابق لاپرواہی کے مرتکب ڈاکٹروں کو سزائے قید دی جائے یا نہیں اس بارے میں بھی رپورٹ میں کوئی تذکرہ نہیں کیاگیا ہے۔ جس کے نتیجہ میں اس بل پر بحث کے بعد ہی اس کے خطوط وضع کرنے کا فیصلہ کیا جاسکتا ہے۔اس مشترکہ ایوان کمیٹی کے چیرمین کے این راجنا نے آج اسمبلی میں اپنی رپورٹ پیش کرتے ہوئے بتایاکہ اس بل کے بعض امور پر کمیٹی نے اپنی سفارشات ضرور پیش کی ہیں لیکن سزائے قید کے متعلق کوئی رائے پیش نہیں کی گئی۔ حکومت نے اس سے پہلے جو بنیادی بل پیش کیا تھا اس میں ڈاکٹروں کو سزائے قید کی تجویز کی گئی تھی۔ لیکن کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں اس امر کا جائزہ نہیں لیا ہے۔ حکومت کی طرف سے جو ترمیمی بل لائی گئی ہے اس کی بنیاد پر ڈاکٹر ہڑتال پر ہیں اور مطالبہ کررہے ہیں کہ اس میں سزائے قید کے ضابطہ کو خارج کیا جائے۔ اسمبلی میں یہ بل کب پیش ہوگی اور اس پر بحث کب ہوگی تاریخ ابھی طے نہیں ہوئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اننت کمار ہیگڈے بیت الخلاء کی بدبو کی مانند

قومی شاعر کوئمپو کے خلاف دئے جانے والا مرکزی وزیر اننت کمار ہیگڈے کا بیان انتہائی مذموم ہے۔ اب وہ معاف کئے جانے کے بھی قابل نہیں رہے۔ یہ باتیں کانگریس کے ریاستی نگراں کا روینوگوپال نے کہیں ۔

جماعت اسلامی ہند کی’’حق وانصاف ‘‘ سہ روزہ کانفرنس

جماعت اسلامی ہند بنگلورو سٹی کے صدر وسہ روزہ کانفرنس کے کنوینر ڈاکٹربلگامی محمد سعد،سکریٹری شیخ ہارون اور بورڈآف اسلامک ایجوکیشن (بی آئی ای ) کے سکریٹری ریاض احمد نے مشترکہ اخباری کانفرنس کے دوران بتایا کہ جماعت اسلامی ہند بنگلورو میٹرو کے زیر اہتمام19؍تا 21؍جنوری سہ روزہ ...

کیا آنگن واڑی کارکن تمہارے گھر کے کتے سے بھی گئے گزرے ہیں؟ بنگلورو میں مرکزی وزیر اننت کمار کے دفتر کے سامنے احتجاج

نریندر مودی کی زیر قیادت مرکزی بی جے پی حکومت بیٹی بچاؤ،بیٹی پڑھاؤ کا نعرہ لگاتی ہے۔ ان دونوں منصوبوں کو حقیقی طور پر عملی شکل دینے والے آنگن واڑی،آشا اور مڈ ڈے میل کے کارکن ہیں۔اس کے باوجود ان کارکنوں کو نظرانداز کیا جارہاہے۔