نجی اسپتالوں کے متعلق بل پر ایوان کمیٹی رپورٹ پیش 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th November 2017, 11:51 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،14؍نومبر(ایس اونیوز؍عبدالحلیم منصور) نجی اسپتالوں پر لگام کسنے کے سلسلے میں مجوزہ بل کا جائزہ لینے کیلئے قائم مشترکہ ایوان کمیٹی نے آج ایوان میں اپنی رپورٹ پیش کردی، تاہم کمیٹی نے اس بل کے متعلق اپنی کوئی سفارش پیش نہیں کی۔ اس قانون کے مطابق لاپرواہی کے مرتکب ڈاکٹروں کو سزائے قید دی جائے یا نہیں اس بارے میں بھی رپورٹ میں کوئی تذکرہ نہیں کیاگیا ہے۔ جس کے نتیجہ میں اس بل پر بحث کے بعد ہی اس کے خطوط وضع کرنے کا فیصلہ کیا جاسکتا ہے۔اس مشترکہ ایوان کمیٹی کے چیرمین کے این راجنا نے آج اسمبلی میں اپنی رپورٹ پیش کرتے ہوئے بتایاکہ اس بل کے بعض امور پر کمیٹی نے اپنی سفارشات ضرور پیش کی ہیں لیکن سزائے قید کے متعلق کوئی رائے پیش نہیں کی گئی۔ حکومت نے اس سے پہلے جو بنیادی بل پیش کیا تھا اس میں ڈاکٹروں کو سزائے قید کی تجویز کی گئی تھی۔ لیکن کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں اس امر کا جائزہ نہیں لیا ہے۔ حکومت کی طرف سے جو ترمیمی بل لائی گئی ہے اس کی بنیاد پر ڈاکٹر ہڑتال پر ہیں اور مطالبہ کررہے ہیں کہ اس میں سزائے قید کے ضابطہ کو خارج کیا جائے۔ اسمبلی میں یہ بل کب پیش ہوگی اور اس پر بحث کب ہوگی تاریخ ابھی طے نہیں ہوئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو:آر ایس ایس پرچارک تربیتی کیمپ میں امیت شاہ کی شرکت۔ سرخ دہشت گردی ، رام مندر، سبریملا اور انتخابات پر ہوئی خاص بات چیت

ملک کی مختلف ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کی مصروفیت کے باوجود بی جے پی کے صدر امیت شاہ نے منگلورو میں آر ایس ایس ’ پرچارکوں‘ کے لئے منعقدہ 6 روزہ تربیتی کیمپ کے اختتام سے ایک دن پہلے ’سنگھ نکیتن‘ میں پہنچ نے کے لئے وقت نکالااور تربیتی کیمپ کے شرکاء سے خطاب کیا۔

مشاعروں کو با مقصد بنا کر نفرت کے ماحول کو پیار اور محبت میں بدلا جاسکتا ہے : سید شفیع اللہ

مشاعرے اردو زبان اور ادب کی تہذیب کے ساتھ ساتھ امن اور اتحاد کو فروغ دینے کا ذریعہ بھی ہیں۔ ملک اور سماج کے موجودہ حالات کو بہتر بنانے کیلئے زیادہ سے زیادہ مشاعروں کا انعقاد کیا جائے۔ بنگلورو میں بزم شاہین کے کل ہند مشاعرے میں ان خیالات کا اظہار کیا گیا۔

ٹیپوجینتی منسوخ کرنے کی کوئی تجویز نہیں ہے جواہر لال نہروکی جنم دن تقریب سے وزیراعلیٰ کااظہار خیال

کسانوں کی طرف سے حاصل کردہ زرعی قرضہ معاف کئے جانے کے سلسلہ میں شکوک وشبہات کا شکار نہ ہوں۔ قرضہ وصولی کیلئے کسانو ں کوغیر ضروری طور پر اذیت دی گئی تو بینک منیجرکو بھی گرفتار کیا جاسکتا ہے ۔