شہریت (ترمیمی) بل2016کو مشترکہ پارلیمانی کمیٹی کی منظوری

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th January 2019, 12:40 PM | ملکی خبریں |

 

نئی دہلی،8؍جنوری (ایس او نیوز؍یواین آئی) شہریت (ترمیمی) بل2016پر قائم مشترکہ پارلیمانی کمیٹی نے اس بل کو کچھ ارکان کے اختلافی نوٹ کے ساتھ منظوری دے دی ۔بل میں شہریت قانون1955میں ترمیم کر کے پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان سے آکر غیر قانونی طور پر ملک میں قیام پذیر ہندو، سکھ، بودھ ، جین، پارسی اور عیسائی فرقہ کے لوگوں کو شہریت کے قابل ماننے کا انتظام کیا گیا ہے ۔لوک سبھا میں بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما راجندر اگروال کی صدارت والی کمیٹی کی رپورٹ آج پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں پیش کی گئی۔یہ بل19جولائی کو 2016میں لوک سبھا میں پیش کیا گیا تھا اور وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے اسے مشترکہ پارلیمانی کمیٹی میں بھیجنے کی تجویز پیش کی تھی۔ راجیہ سبھا نے اس تجویز کو12اگست2016میں منظوری دے دی۔ کمیٹی کو اسی سال سرمائی اجلاس ختم ہونے سے ایک دن پہلے اپنی رپورٹ دینی تھی لیکن اس کی مدت پانچ بار بڑھائی گئی اور آخر میں یہ طے کیا گیا کہ کمیٹی2018میں سرمائی اجلاس ختم ہونے سے ایک دن پہلے اپنی رپورٹ دے گی۔کمیٹی نے گزشتہ4جنوری کو اس بل کو منظوری دے دی۔کمیٹی میں اکثریت سے منظور اس بل کی مخالفت میں کچھ ارکان نے اختلافی نوٹ لکھے ہیں۔ بل کو سیشن کے آخری دن یعنی منگل کو لوک سبھا میں پیش کیا جا سکتا ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

راج ناتھ سنگھ نے اپوزیشن کے اتحادکونشانہ بنایا

مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج کہا کہ مودی حکومت کی مقبولیت سے خائف ہو کر اپوزیشن جماعتوں نے مہاگٹھ بندھن (عظیم اتحاد) بنایا ہے لیکن انہیں یقین ہے کہ عوامی حمایت بھارتیہ جنتا پارٹی کے حق میں ہی رہے گی۔

مایاوتی پر’غیر اخلاقی‘ تبصرہ کرنے والی بی جے پی ممبر اسمبلی سے خواتین کمیشن نے وضاحت طلب کی

بی ایس پی سربراہ مایاوتی کا موازنہ مبینہ طور پر ہجڑوں سے کرنے سے متعلق بیان کی مذمت کرتے ہوئے قومی خواتین کمیشن نے پیر کو بی جے پی ممبر اسمبلی سادھنا سنگھ کو نوٹس جاری کہا کہ وہ اپنی اس ’غیر اخلاقی، توہین اور غیر ذمہ دارانہ‘تبصرہ پر تسلی بخش وضاحت دیں۔

ملک نئے وزیراعظم کاانتظارکررہاہے،بی جے پی کے پاس کوئی اورہوتوبتائے،ہمارے پاس کئی چوائس ہیں:  اکھلیش یادو

سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے صدر اکھلیش یادو نے اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد کے رہنما کے بارے میں سوال پوچھ کربی جے پی پر طنز کرتے ہوئے پیر کو کہا کہ ملک کے عوام اگلے انتخابات کے بعد نیا وزیر اعظم چاہتی ہے.

مالیگاؤں2008 بم دھماکہ معاملہ؛ یو اے پی اے قانون کے اطلاق کے خلاف داخل اپیل پر 28؍ جنوری کو ہائی کورٹ میں سماعت متوقع

مالیگاؤں 2008ء بم دھماکہ معاملے کے کلیدی ملزم کرنل پروہیت و دیگر ملزمین کی جانب سے یو اے پی اے قانون کے اطلاق کے خلاف داخل اپیل پر 28؍ جنوری کو ہائی کورٹ میں سماعت ہوسکتی ہے ۔