کرس گیل نے چھکے مارنے کا اپنا ہی ریکارڈ توڑ دیا

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th December 2017, 12:48 PM | اسپورٹس |

ڈھاکہ ،13؍دسمبر (ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)رنگپور کی نمائندگی کرتے ہوئے بنگلہ دیش پریمیئر لیگ کے فائنل میں کرس گیل نے 18 چھکے مارے۔ انھوں نے 69 گیندوں میں 146 رنز سکور کیے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔38 سالہ کر س گیل نے 2013 میں انڈین پریمیئر لیگ میں بنایا ہوا اپنا ہی 17 چھکوں کا ریکارڈ توڑا ہے۔کرس نے بنگلہ دیش پریمیئر لیگ کے فائنل میں چار چوکے بھی مارے۔ اس کے ساتھ ہی وہ ٹی ٹوئنٹی میچ میں سب سے زیادہ سکور کرنے والے بیٹسمین بن گئے ہیں۔ اور اس کے علاوہ وہ پہلے بیٹسمین ہیں جنھوں نے ٹی ٹوئنٹی میں 11 ہزار رن مکمل کیے ہیں۔رنگپور نے فائنل میچ میں ڈھاکہ ڈائنامائٹ کے خلاف ایک وکٹ کے نقصان پر 206 رنز سکور کیے۔ان کا ساتھ نیوزی لینڈ کے سابق کپتان برینڈن میککلم نے دیا جنھوں نے 43 گیندوں میں 51 رنز بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔بنگلہ دیش پریمیئر لیگ کے اس سیزن میں کرس گیل نے 11 میچوں میں 485 رنز سکور کیے اور وہ سرفہرست ہیں۔ ان کی اوسط تقریباً 54 ہے جب سٹرائک ریٹ 176 ہے۔146 ناٹ آؤٹ ٹی ٹوئنٹی میں دسواں بڑا سکور ہے۔ ان کا سب سے زیادہ سکور رائل چیلنجرز کی نمائندگی کرتے ہوئے 175 ناٹ آؤٹ ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

انگلینڈ نے آسٹریلیا کے خلاف تیسرے ون ڈے میں 481 رنز بناکر عالمی ریکارڈ بنادیا

آسٹریلیا کے خلاف سیریز کے تیسرے ون ڈے انٹرنیشنل میں انگلینڈ نے 6 وکٹ پر481 رنز بنا کر کئی ریکارڈز پاش پاش کردیے، یہ ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ میں بڑے مجموعے کا نیا ریکارڈ شمار ہوگا، اس سے قبل پاکستان کے خلاف 3 وکٹ پر 444 رنز کا عالمی ریکارڈ بھی انگلینڈ کے قبضے میں ہی تھا تاہم انگلش ...

پہلی بار فٹ بال کپ کیلئے قرۃ العین بلوچ کی آواز میں گانا ریلیز

روس میں جاری 21 ویں فٹ بال ورلڈ کپ کا فیفا کی جانب سے جاری کردہ آفیشل گانا ’لو اٹ اپ‘ یوں تو کپ شروع ہونے سے ایک ماہ قبل ہی جاری کردیا گیا تھا۔تاہم اب ملٹی نیشنل مشروب کمپنی ’کوکو کولا‘ نے بھی پہلی بار پاکستان میں فٹ بال ورلڈ کپ کا خصوصی اینتھم سانگ جاری کردیا۔

بال ٹیمپرنگ کے الزام پر سری لنکن ٹیم بھڑک اٹھی

ویسٹ انڈیز سے دوسرے ٹیسٹ میں بال ٹیمپرنگ کے الزام پر سری لنکن ٹیم بھڑک اٹھی۔ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز کے دوسرے ٹیسٹ میں بال ٹیمپرنگ کاالزام عائد ہونے پر سری لنکن ٹیم نہ صرف غصے سے بھڑک اٹھی بلکہ اس نے میدان میں بھی اترنے سے انکار کردیا تھا۔