وقف جائیداد کو تحفظ فراہم کرانے میں وقف افسر ناکام :انور خان کا الزام

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th January 2017, 2:21 PM | ریاستی خبریں |

چنتامنی:10 /جنوری(محمد اسلم/ایس او نیوز)وقف زمین اللہ کی مقدس امانت ہے اگر ایک بار کوئی واقف کسی ادارہ یا زمین کو اللہ کے نام وقف کرتا ہے تو وہ زمین اللہ کی ملکیت میں شمار کی جاتی ہے اسلئے ہمارا یہ ملی فریضہ ہے کہ ہم اس کی پوری ایمانداری اور دیانت داری کے ساتھ  حفاظت اور محافظت کریں ان خیالات کااظہار حضرت ٹیپو سلطان اسوسی ایشن کے تعلقہ صدر ایڈوکیٹ سی ایس انور خان نے آج ایک آخباری بیان جاری کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ تعلقہ کے نمکان پلی و مرغ ملہ وغیرہ دیہاتوں میں وقف کی کافی جائیداد ہے اس کا سروے کرانے میں مرغ ملہ درگاہ اڈمنسٹریٹر و چکبالاپور ضلع وقف افسر اور وقف انسپکٹر ناکام ہے ان کی لاپرائیوں کے نتیجے میں چنتامنی تعلقہ میں وقف کی جائیداد غیر وں کے قبضہ میں ہورہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ جنوبی ہندوستان میں مشہور و معروف درگاہ مانے جانے والی چنتامنی تعلقہ میں واقع مرغ ملہ جہاں 40سالوں سے وقف املاک کی وسیع و عریض زمین پر غیر قانونی طور پر قبضہ ہوگیا تھا جس پر کارروائی کرنے کیلئے کئی لوگوں نے کوشش کی تھی پھر چند دنوں کے بعد غیر قانونی طور پر قبضہ ہٹا کر کمپاؤنڈ کی تعمیر کیلئے سنگ بنیاد رکھی گئی وقف کے اعلیٰ افسروں نے کمپاؤنڈ کے تعمیر ی کام کیلئے ٹینڈر بھی طلب کئے بغیر ہی کام کی شروعات کردی ہے پچھلے چند دنوں سے کمپاؤنڈ کا تعمیری کام ضلع وقف افسر کی من مانی اور لاپروائی کے نتیجے میں ٹھپ پڑا ہوا ہے اس لئے وقف کے وزیر کو چاہئے کہ فوراََ مرغ ملہ درگاہ اڈمنسٹریٹر کا تبادلہ کیاجائے کسی بہترین شخص کو اڈمنسٹریٹر کے لئے منتخب کیا جائے کیونکہ درگاہ اڈمنسٹریٹر کی من مانی سے درگاہ کے کئی ترقیاتی کام ٹھپ پڑے ہوئے ہیں اور درگاہ اڈمنسٹریٹرکو درگاہ کے ترقی کا کچھ بھی علم نہیں ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

رندیپ سنگھ سرجے والا نے مودی حکومت پر کیا تیکھا وار، کہا ، مرکزی حکومت بلاری کے لٹیروں کو بچانے میں سرگرم

مرکز کی مودی حکومت نے کرناٹک میں دن دھاڑے خام لوہے کی لوٹ مچانے والے بلاری مافیا کو بچانے کے لئے سی بی آئی کا غلط استعمال کیا ہے، یہ الزام آج اے آئی سی سی کے ترجمان رندیپ سنگھ سرجے والا نے لگایا۔