چکمگلورو میں کانگریس دفتر کے گھیراؤ کی کوشش : سی ٹی روی سمیت بی جے پی لیڈران کی گرفتاری اور رہائی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 12th January 2018, 6:31 PM | ریاستی خبریں |

 چکمنگلورو:12/ جنوری (ایس اؤنیوز)جمعہ کو بی جے پی کارکنان نےشہر کے ضلع کانگریس دفتر کے روبرو وزیراعلیٰ سدرامیا کے بیان کی مذمت کرتےہوئے احتجاج کیاجس  کے دوران کانگریس دفتر کا گھیراؤ کرنے کے لئے پہنچے رکن اسمبلی سی ٹی روی ، ودھان پریشد کے رکن ایم کے پرانیش سمیت کئی بی جے پی کارکنا ن کو پولس  نےگرفتارکیا،اور وہاں سے دوسری طرف لے جاکر  سبھوں کو رہا کردیا ۔

اس سے قبل رکن اسمبلی سی ٹی روی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سدرامیا کا بیان اوروزیر داخلہ کے بیان سے سماج میں خوف کا ماحول پیدا ہوگیا ہے، انہوں نے  سدرامیا کے  دہشت گردی والے بیان کی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردانہ طریقے سے بات کرنا ہی دہشت گردی ہے تو سدرامیا بھی ایک دہشت گرد ہونگے ، انہوں نے بتایا کہ  وزیر اعلیٰ کا بیان خوف پیدا کرنے والا ہے ، اُن کے بیان سے اُن کے اندر ایک طرح کا گھمنڈ نظر آتا ہے ، ہم نے کبھی گھمنڈ نہیں کیا اور نہی ہی ڈرا دھمکا کر بات  کی ہے۔

سی ٹی روی نے سوال کیا کہ کیا سچ کی حمایت میں جدوجہد کرنا  دہشت گردی ہے اگر ہے، تو پھر سچ کی حمایت کیسے کریں ؟  انہوں نے سدرامیاسے پوچھا کہ  سچ کو دہشت گردی کہنے کے لئے انہوں نے  آخر کونسی لغت کا مطالعہ کیا ہے  ،لغت میں دہشت گردی کے معنی کچھ اور ہیں۔ انہوں نے وزیرداخلہ  رام لنگا ریڈی اور قواعد کی بات کرنے والے سدرامیا سے لغت کا صحیح طور پر مطالعہ کرنے کی بات کہی۔ اس موقع پر بی جے پی لیڈران پریم کمار، سی ایچ لوکیش، ورسدی وینوگوپال، ریکھا ہلیپا گوڈا، دیورا ج شٹی وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کانگریس لیجسلیچر پارٹی میٹنگ میں سدرامیا پھر غالب، ہنگامہ خیزی کے اندیشوں کے برعکس میٹنگ میں کسی نے بھی زبان نہیں کھولی

حسب اعلان 22دسمبر کو ریاستی کابینہ میں توسیع کی تصدیق کرتے ہوئے آج سابق وزیراعلیٰ اور کانگریس لیجسلیچر پارٹی لیڈر سدرامیا نے تمام کانگریسی اراکین کو خاموش کردیا۔

مندروں کو دئے جانے والے فنڈز کو فرقہ وارنہ رنگ دینے بی جے پی کی مذموم کوشش، اسمبلی میں اسپیکر نے فرقہ پرست جماعت کی ایک نہ چلنے دی

وقفۂ سوالات میں بی جے پی رکن اسمبلی سی ٹی روی کی طرف سے سوالات تک خود کو محدود رکھنے کی بجائے ایک معاملے پر بحث شروع کرنے کی کوشش کو جب اسپیکر رمیش کمار نے روک دیا تو اس بات پر بی جے پی اراکین اور اسپیکر کے درمیان نوک جھونک شروع ہوگئی۔

ریاست کرناٹک میں 800 نئے سرویرس کا تقرر

وزیر مالگزاری آر وی دیش پانڈے نے آج ریاستی اسمبلی کو بتایاکہ ریاست بھر میں اراضی سروے کی ذمہ داری ادا کرنے کے لئے محکمے کی طرف سے 800نئے سرویرس کا تقرر کیا گیا ہے۔

پسماندہ طبقات کے سروے کی رپورٹ تیاری کے مراحل میں: پٹ رنگا شٹی

ریاستی وزیر برائے پسماندہ طبقات پٹ رنگا شٹی نے کہا ہے کہ سابقہ سدرامیا حکومت کی طرف سے درج فہرست طبقات کی ہمہ جہت ترقی کو یقینی بنانے کے مقصد سے جو سماجی ومعاشی سروے کروایا گیا تھا اس کے اعداد وشمار کو کمپیوٹرائز کرنے کا عمل جاری ہے۔